نیوز الرٹ
  • بریکنگ :- امریکی ایئرلائن نےپاکستانی نژادبرطانوی باکسرعامرخان پرپابندی لگادی
  • بریکنگ :- نیویارک: باکسرعامرخان اوران کےدوست کوفلائٹ سےآف لوڈکردیاگیا
  • بریکنگ :- عملےنےشکایت کی کہ میرےدوست کاماسک درست نہیں،عامرخان
  • بریکنگ :- ماسک بالکل ٹھیک تھااورکچھ غلط نہیں تھا،باکسرعامرخان
  • بریکنگ :- میرےساتھ پہلےایساکبھی نہیں ہوا،دلی دُکھ ہوا،باکسرعامرخان
  • بریکنگ :- عامرخان فلائٹ کےتربیتی کیمپ میں شریک ہونےکولوراڈواسپرنگزجارہےتھے
Coronavirus Updates

کاروبار کو رجسٹرڈ نہ کرانے والے ریٹیلر کیخلاف کارروائیوں کا آغاز

کاروبار کو رجسٹرڈ نہ کرانے والے ریٹیلر کیخلاف کارروائیوں کا آغاز

دنیا اخبار

ڈیڑھ سال آ گاہی مہم چلائی گئی ، آ ن لائن رجسٹریشن سے مداخلت ختم ہو گی :ایڈیشنل کمشنر ایف بی آر فیصل آباد قادر نواز

فیصل آباد(عبدالباسط سے )ایف بی آر کی جانب سے ٹیکس کولیکشن کو بہتر بنانے کے لئے ملک کے تیسرے بڑے کاروباری ریٹیلر سیکٹر کو رجسٹرڈ کرنے کے لئے ڈیڑھ سال آگاہی مہم چلانے کے بعد اپنے کاروبار کو رجسٹرڈ نہ کروانے والے ریٹیلر کے خلاف کارروائیاں شروع کر دی گئیں۔ ریٹیلر کو آن لائن رجسٹرڈ کروانے سے انسانی مداخلت بالکل ختم ہو جائے گی جس سے ایف بی آر میں موجود چند کالی بھیڑوں کی جانب سے کی جانے والی بے ضابطگیوں کا بھی خاتمہ کیا جاسکے گا۔ان خیالات کا اظہار ایڈیشنل کمشنر ایف بی آر فیصل آباد قادر نواز کی جانب سے دنیا نیوز کو دئیے گئے خصوصی انٹرویو کے دوران کیا گیا۔ایڈیشنل کمشنر ایف بی آر قادر نواز نے کہا کہ ریٹیلر کو آن لائن کرنے کا مقصد بروقت ڈاکومنٹیشن اور بر وقت سیلز سے متعلق ایف بی آر کو اطلاع پہنچنا ہے تاکہ بغیر کسی تاخیر کے ٹیکس کولیکشن کو بہتر بنایا جا سکے ۔ ریٹیلر سیکٹر کو رجسٹر ڈکرنے کے لئے ایف بی آر کی جانب سے مختص کیے گئے دائرہ کار کے مطابق ایئرکنڈیشنڈ مالز، تمام بڑے برانڈز، 1000 سکوائر فٹ پر مشتمل کاروباری مرکز، سالانہ 12 لاکھ سے زائد بجلی کا بل جمع کروانے والا ریٹیلر، شامل ہوگا جبکہ فرنیچر فروخت کرنے والے ریٹیلرز کے لئے 2000 سکوائرفٹ اراضی کی اجازت دی گئی ہے ۔قادر نواز کا مزید یہ کہنا تھا پہلے مرحلے میں ڈیڑھ سال تک ایف بی آر کی جانب سے ریٹیلرز کو رجسٹرڈ کرنے کے لیے آگاہی مہم چلائی گئی ۔ اس دوران کسی ریٹیلر کو نہ تو جرمانہ کیا گیا نہ ہی ان کے خلاف کوئی قانونی کارروائی عمل میں لائی گئی۔آگاہی کا مرحلہ ختم ہونے کے بعد رجسٹرڈ نہ ہونے والے 24 ریٹیلرز کے خلاف کارروائی عمل میں لائی گئی اور مجموعی طور پر 4 ملین کے جرمانے کیے گئے۔ رجسٹرڈ ریٹیلر سے چمڑے اور ٹیکسٹائل مصنوعات کی خریداری پر سیلز ٹیکس کی مد میں صرف 10 فیصد ٹیکس وصول کیا جائیگا جبکہ غیر رجسٹرڈ ریٹیلر سے خریداری کی صورت میں اضافی سیلز ٹیکس اور دیگر ٹیکس وصول کیے جائیں گے ۔

Advertisement
روزنامہ دنیا ایپ انسٹال کریں