نیوز الرٹ
  • بریکنگ :- یوایس بزنس کونسل کےساتھ راؤنڈ ٹیبل کانفرنس ہوئی،شوکت ترین
  • بریکنگ :- یو ایس انسٹی ٹیوٹ آف پیس کےساتھ بھی نشست ہوئی،شوکت ترین
  • بریکنگ :- ملاقات میں افغانستان کی صورتحال پربات چیت ہوئی،شوکت ترین
  • بریکنگ :- ترک ہم منصب کےساتھ بھی ملاقات ہوئی،وفاقی وزیرخزانہ شوکت ترین
  • بریکنگ :- ترک ہم منصب سےزراعت سمیت مختلف شعبوں میں تعاون پرتبادلہ خیال ہوا،شوکت ترین
  • بریکنگ :- صدرعالمی بینک سے بھی ملاقات ہوئی،وزیرخزانہ شوکت ترین
  • بریکنگ :- ترکی نے ٹیکسوں سےمتعلق مدد کی پیش کش کی،شوکت ترین
  • بریکنگ :- پاکستان میں معاشی اصلاحات کےلیےکوشش کررہےہیں،شوکت ترین
  • بریکنگ :- آٹا،چینی دالوں پرسبسڈی دیں گے،شوکت ترین
  • بریکنگ :- دنیابھرمیں پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافہ ہورہا ہے،شوکت ترین
  • بریکنگ :- ہمارےپاس ڈیٹابیس آگیا ہے ہرگھر کی کتنی آمدن ہے،شوکت ترین
  • بریکنگ :- وزیراعظم نے مجھےخیبرپختونخوا سےسینیٹر بنانےکاپروسیس شروع کردیا،شوکت ترین
  • بریکنگ :- توانائی سیکٹرسےمتعلق معاہدےکیے گئے،2سے3روزمیں تفصیلات سامنےآئیں گی،شوکت ترین
  • بریکنگ :- کئی شعبوں میں ٹیکس کاہدف حاصل کرلیا ہے،شوکت ترین
Coronavirus Updates

جبری تبدیلی مذہب کا قانون مسترد کرتے ہیں:علماکرام

 جبری تبدیلی مذہب کا قانون مسترد کرتے ہیں:علماکرام

دنیا اخبار

کسی غیر اسلامی قانون کی گنجائش نہیں،مساجد اہلحدیث میں مذمتی قراردادیں منظور

گوجرانوالہ (نیوز رپورٹر) حکومت کی طرف سے \'\'انسداد جبری تبدیلی مذہب ایکٹ\'\' کی خبروں پر رد عمل کا اظہار کرتے ہوئے مرکزی جمعیت اہلحدیث سٹی کی اپیل پر گوجرانوالہ کی مساجد اہلحدیث میں مذمتی قراردادیں منظور کی گئیں، علمائے کرام نے کہا کہ جبری تبدیلی مذہب کا قانون مسترد کرتے ہیں،ملک میں کسی غیر اسلامی قانون کی گنجائش نہیں، کسی کو اسلام قبول کرنے سے نہیں روکا جا سکتا بلکہ لوگوں میں اسلامی تعلیمات کو عام کرنا حکومت پاکستان کی ذمہ داری ہے،آئین پاکستان کی رو سے غیر اسلامی قانون سازی نہیں ہو سکتی،، اگر ایسا کوئی قانون اسمبلی میں پیش کیا گیا تو پاکستانی مسلمانوں کا ردعمل سنبھالنا مشکل ہو جائے گا۔

Advertisement
روزنامہ دنیا ایپ انسٹال کریں