نیوز الرٹ
  • بریکنگ :- پاکستان اورسعودی عرب کےتاریخی تعلقات ہیں،شاہ محمودقریشی
  • بریکنگ :- کچھ لوگوں نےپاک سعودی عرب تعلقات سےمتعلق پروپیگنڈاکیا،وزیرخارجہ
  • بریکنگ :- عیدکےبعدسعودی عرب کاوفدپاکستان آئےگا،وزیرخارجہ شاہ محمودقریشی
  • بریکنگ :- سعودی وزیرخارجہ بھی پاکستان کادورہ کریں گے،شاہ محمودقریشی
  • بریکنگ :- پاکستان نئی امریکی انتظامیہ سےبہترتعلقات چاہتاہے،شاہ محمود قریشی
  • بریکنگ :- امریکانےافغانستان میں پاکستان کےکردارکوسراہا،شاہ محمودقریشی
  • بریکنگ :- پاکستان چاہتاہےبرادرممالک میں غلط فہمیاں پیدانہ ہوں،وزیرخارجہ
  • بریکنگ :- مسجداقصیٰ میں فلسطینیوں پرمظالم کی مذمت کرتےہیں،وزیرخارجہ
  • بریکنگ :- سعودی عرب میں اسرائیل کےحوالےسےگفتگونہیں ہوئی،وزیرخارجہ
  • بریکنگ :- پاکستان پراسرائیل کےحوالےسےکوئی دباؤنہیں،شاہ محمودقریشی
  • بریکنگ :- سعودی عرب نےدباؤکےباوجوداسرائیل پرموقف نہیں بدلا،وزیرخارجہ
  • بریکنگ :- سعودی عرب کاکشمیرکےحوالےسےکردارڈھکاچھپانہیں،وزیرخارجہ
  • بریکنگ :- وزیراعظم نےاپنانقطہ نظرسعودی قیادت کوسمجھایا،شاہ محمودقریشی
  • بریکنگ :- مسئلہ کشمیرپرثالثی سےبھارت نےہمیشہ انکارکیا،شاہ محمودقریشی
  • بریکنگ :- 2ایٹمی قوتیں جنگ نہیں کرسکتیں،واحدراستہ بات چیت ہے،وزیرخارجہ
  • بریکنگ :- پاکستان اپنےمعاملات طےکرنےکیلئےتیارہے،شاہ محمودقریشی
  • بریکنگ :- پاکستان نےنہیں بھارت نےمعاملات کوبگاڑاہے،شاہ محمودقریشی
  • بریکنگ :- مسئلہ کشمیریواین قراردادوں کےمطابق حل کیاجاسکتاہے،وزیرخارجہ
  • بریکنگ :- پاکستان اپنےاصولی موقف پرقائم ہے،وزیرخارجہ شاہ محمودقریشی
  • بریکنگ :- آرٹیکل 370کومقبوضہ کشمیرکی جماعتوں نےمستردکیا،وزیرخارجہ
  • بریکنگ :- مسلم لیگ(ن)کےکچھ لوگ مسئلہ کشمیرپرسیاست نہ کریں،شاہ محمودقریشی
  • بریکنگ :- مقبوضہ کشمیرکےتمام معاملات بھارت کااندرونی معاملہ نہیں،وزیرخارجہ
  • بریکنگ :- سعودی عرب میں افغانستان کےمعاملات پربھی گفتگوہوئی،شاہ محمودقریشی
  • بریکنگ :- سعودی عرب نےافغان امن کیلئےپاکستان کی کوششوں کوسراہا،وزیرخارجہ
  • بریکنگ :- افغانستان میں امن سےپاکستان سمیت خطےکوفائدہ ہوگا،شاہ محمودقریشی
  • بریکنگ :- سعودی عرب بھی افغانستان میں امن چاہتاہے،شاہ محمودقریشی
  • بریکنگ :- چاہتےہیں افغانستان اپنےمستقبل کافیصلہ بات چیت سےکرے،وزیرخارجہ
  • بریکنگ :- پاکستان افغانستان کےمعاملات میں مداخلت نہیں کررہا،شاہ محمودقریشی
  • بریکنگ :- افغانستان میں بدامنی پھیلی توپاکستان کونقصان ہوگا،شاہ محمودقریشی
  • بریکنگ :- افغانستان کامعاملہ مذاکرات سےہی حل ہوگا،شاہ محمودقریشی
  • بریکنگ :- پاکستان کاامریکاکوہوائی اڈےدینےکاکوئی ارادہ نہیں،شاہ محمودقریشی
  • بریکنگ :- پاکستان کےامت مسلمہ کےساتھ بہترین تعلقات ہیں،وزیرخارجہ
  • بریکنگ :- قطر،یمن اورایران کےساتھ تعلقات میں بہتری آرہی ہے،وزیرخارجہ
  • بریکنگ :- پاکستان اورچین کےدرمیان تاریخی تعلقات ہیں اوررہیں گے،وزیرخارجہ
  • بریکنگ :- پاک امریکاتعلقات میں اتارچڑھاؤرہا،وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی

پاک ،چین کامویشی ، ماہی پروری تعاون بڑھانے کا عزم

پاک ،چین  کامویشی ، ماہی پروری  تعاون بڑھانے کا عزم

دنیا اخبار

چین کے اشتراک سے مویشی اور ماہی پروری انڈسٹری کو جدیدبنانا ہو گا، فخر امام

اسلام آ باد (دنیا رپورٹ)چین اور پاکستان کے مابین مویشی اور ماہی پروری کے تعاون میں مزید اہداف کے حصول کیلئے ایک ویبینار کا انعقاد کیا گیا جس میں چین اور پاکستان نے مویشی اور ماہی پروری میں تعاون بڑھانے کا عزم کیا ۔گوادر پرو کے مطابق دونوں ممالک کے مویشی اور ماہی پروری کے شعبوں کے معروف ماہرین اور کمپنیوں نے اس سلسلے میں تعلیمی اور صنعتی پروگراموں میں دوطرفہ تعاون کو عملی شکل دینے کے ممکنہ اقدامات پر تبادلہ خیال کیا۔ وز یر برائے قومی فوڈ سکیورٹی اینڈ ریسرچ سید فخر امام نے پاکستان میں لائیوسٹاک اور فشریز کے شعبوں میں مختلف چیلنجز کی نشاندہی کی۔ انہوں نے پاکستان پر زور دیا کہ وہ چین کے ساتھ مشترکہ کاروباری اداروں ، ٹیکنالوجی کی منتقلی اور ٹیلنٹ کے استعمال کے ذریعہ انفراسٹرکچر کو اپ گریڈ کرنے اور خاطر خواہ سپلائی چین تعمیر کرکے اپنی مویشی اور ماہی پروری انڈسٹری کو جدید بنائے ۔ وزارت برائے قومی فوڈ سکیورٹی اینڈ ریسرچ کے فشریز ڈیویلپمنٹ بورڈ کے صدر ڈاکٹر محمد اکرم اور وزارت برائے قومی فوڈ سکیورٹی اینڈ ریسرچ کے اینیمل ہسبینڈری کمشنر ڈاکٹرخورشید احمد نے چیلنجز کی نشاندہی کی۔ خورشید احمد نے بتایا کہ پاکستان 208 ملین خوراک والے جانوروں کا گھر ہے جن کی دودھ کی پیداوار 60 ملین ٹن سے زیادہ اور انڈوں کی پیداوار 20 بلین سالانہ ہے انہوں نے کہا صلاحیت پیدا کرنے کیلئے چینی ٹیکنالوجیز ، جینیاتی بہتری اور دیگرلا ئیوسٹاک اور ماہی پروری علوم میں مشترکہ تحقیق کی کوششوں کے ذریعہ ان شعبوں کے معیار اور پیداوار میں مزید بہتری لائی جاسکتی ہے ۔ ماہرین اور کاروباری اداروں نے تحقیق ، صنعت اور دونوں شعبوں میں تجارتی پیشرفت میں موجودہ اور مستقبل کے تعاون پر تبادلہ خیال کیا۔

Advertisement
روزنامہ دنیا ایپ انسٹال کریں