نیوز الرٹ
  • بریکنگ :- شجاع آباد:بیگاں والی میں استادکاسبق یادنہ کرنےپرطالبعلم پرتشدد،پولیس
  • بریکنگ :- ابتدائی میڈیکل رپورٹ میں تشددثابت،ملزم کی گرفتاری کےلیےچھاپے
  • بریکنگ :- شجاع آباد:تشدد کےباعث 7سالہ علی حمزہ زخمی،اسپتال منتقل،پولیس
Coronavirus Updates

سندھ میں جبری تبدیلی مذہب کے ثبوت نہیں ملے ،ریسرچ سکالر

سندھ میں جبری تبدیلی مذہب کے ثبوت نہیں ملے ،ریسرچ سکالر

دنیا اخبار

کزن میرج ،بیوگان کی شادی اور ذات پات کے معاملات کا اہم رول ہے ،صوفی غلام حسین

اسلام آباد (اپنے رپورٹرسے ) انسٹی ٹیوٹ آف پالیسی سٹڈیز کے تحقیق کار صوفی غلام حسین کے سندھ میں تبدیلی مذہب پر تحقیقی مطالعے میں انکشاف ہوا ہے کہ صوبے میں غیرمسلموں بشمول نابالغ لڑکیوں کے جبری تبدیلی مذہب کا نشانہ بننے کے کوئی شواہد نہیں ملے ،دس سالہ تحقیق میں مرحلہ وار فیلڈ وزٹس، سندھی سماج کے مختلف طبقات کے انٹرویوز اور صوبے بھر کی درگاہوں اور عدالتوں سے حاصل شدہ اعداد و شمار کا شماریاتی تجزیہ کیاگیا ، 970افراد پر مشتمل جوڑوں میں بڑی تعداد ان بیوگان کی ہے جو ہندو رہتے ہوئے دوسری شادی نہیں کر سکتی تھیں، ان میں نمایاں تعداد میں ایسے افراد بھی شامل ہیں جو اپنے کزنز سے شادی کرنا چاہتے تھے لیکن ہندو مذہب میں ان کیلئے یہ گنجائش موجود نہیں تھی،کئی شادیاں دو مختلف ذاتوں سے تعلق رکھنے والے افراد کے درمیان طے پاتی ہیں جس کی گنجائش انھیں ہندو روایات کی رو سے حاصل نہیں ہوتی اور وہ مذہب تبدیل کرکے یہ راستہ اختیار کرلیتے ہیں۔

Advertisement
روزنامہ دنیا ایپ انسٹال کریں