نیوز الرٹ
  • بریکنگ :- کئی ممالک نے امریکا اور عالمی برادری کے سامنے ہمارے حق میں آواز اٹھائی،ترجمان
  • بریکنگ :- 6روز قبل چین اور روس نے بھی ہمای حکومت کے حق میں بات کی،ذبیح اللہ مجاہد
  • بریکنگ :- قطر،ازبکستان اور دیگر ممالک نے بھی مثبت موقف اپنایا،ترجمان طالبان
  • بریکنگ :- پاکستان ہمارا ہمسایہ ملک ہے،ان کا موقف قابل تحسین ہے،ذبیح اللہ مجاہد
  • بریکنگ :- افغانستان کے ساتھ عالمی برادری کے روابط ضروری ہیں،ذبیح اللہ مجاہد
  • بریکنگ :- افغانستان کو تجارت اور اقتصادی امور میں ہمسایہ ممالک کی ضرورت ہے،ترجمان
  • بریکنگ :- توقع ہے ہمسایہ ممالک اپنا مثبت کردار جاری رکھیں گے،ترجمان طالبان
  • بریکنگ :- پنج شیر میں لڑائی ختم ہوچکی ہے،ترجمان طالبان ذبیح اللہ مجاہد
  • بریکنگ :- بیشترمقامی عمائدین ،علمائے کرام اور مجاہدین ہمارے ساتھ ہیں،ترجمان طالبان
  • بریکنگ :- ہم کسی کے ساتھ جنگ نہیں چاہتے،ترجمان طالبان ذبیح اللہ مجاہد
  • بریکنگ :- پوری دنیا کے ساتھ بہتر تعلقات چاہتےہیں،ترجمان طالبان ذبیح اللہ مجاہد
  • بریکنگ :- اگر کوئی لڑائی یا حملے کی خواہش رکھتاہے تو سخت جواب دیاجائےگا،ترجمان طالبان
  • بریکنگ :- افغانستان میں امن کے بعد ہماری ترجیح ہے کہ تجارت فروغ پائے،ذبیح اللہ مجاہد
  • بریکنگ :- افغانستان کو پشاور اور پاکستان کے دیگر علاقوں سے منسلک کیاجائےگا،ترجمان طالبان
  • بریکنگ :- سی پیک منصوبہ اہم ہے،تھوڑی تحقیق کی ضرورت ہے،ترجمان طالبان
  • بریکنگ :- چاہتے ہیں سی پیک میں شامل ہوں،ترجمان طالبان ذبیح اللہ مجاہد
  • بریکنگ :- پاکستان ہمارا پڑوسی ملک اور افغانوں کا دوسرا گھر ہے،ترجمان طالبان
  • بریکنگ :- لاکھوں افغان مہاجرین اب بھی پاکستان میں رہائش پذیر ہیں،ترجمان طالبان
  • بریکنگ :- ہماری زبان ،مذہب مشترکہ اور رسم ورواج بھی ایک جیسے ہیں،ترجمان طالبان
  • بریکنگ :- دورہ پاکستان کی دعوت ملی توقیادت معاملےپر غورکرےگی،ترجمان طالبان
Coronavirus Updates

کھجورپیداکرنے والے ممالک میں پاکستان پانچویں نمبر پر

کھجورپیداکرنے والے ممالک میں پاکستان پانچویں نمبر پر

دنیا اخبار

سندھ کا مجموعی پیداوارمیں حصہ 60فیصد اوربلوچستان کا20فیصد ہے ،ڈاکٹرکامران عظیم

کراچی (اسٹاف رپورٹر)دنیا بھر میں پاکستان کھجور پیدا کرنے والے ممالک میں پانچویں نمبر پر ہے ، جہاں ہر سال تقریبا چھ لاکھ میٹرک ٹن کھجور کی پیداوار ہوتی ہے ۔ صوبہ سندھ میں ملک کی کل کھجور کی پیداوار کا 60 فیصد حصہ پیدا کیا جاتا ہے ۔ اس کے بعد بلوچستان کے اضلاع تربت اور پنجگور سے بیس فیصد پیداوار حاصل ہوتی ہے ۔ یہ بات ملک کے نامور اسکالر پروفیسر ڈاکٹر کامران عظیم کی جانب سے حال ہی میں ممتاز بین الاقوامی پبلشر اسپرنجر (Springer)کی جانب سے کھجور کی جینیاتی خصوصیات پر شائع ہونے والی کتاب میں پاکستانی کھجورکی خصوصیات پر لکھے جانے والے مضمون میں کہی گئی ہے ۔ ڈاکٹر کامران عظیم، محمد علی جناح یونیورسٹی میں پروفیسر اور ڈین ہیں۔ مذکورہ کتاب میں دنیا کے دس مختلف ممالک کے 30 نامور محققین کے مضامین شامل کئے گئے ہیں ۔ اس کتاب میں کھجور کی پیداوار میں اضافے ، کھجور کی نئی اقسام متعارف کرانے اور جدید زراعت میں کھجور کی فصل سے متعلق مضامین شامل کیے گئے ہیں۔ پروفیسر ڈاکٹر کامران عظیم نے پاکستان میں پیدا کی جانے والی مختلف اقسام کی کھجوروں اور ان کی جینیاتی خصوصیات پر روشنی ڈالی ہے ۔ انہوں نے بتایا کہ خیرپور اور سکھر کے علاقوں میں سب سے زیادہ کھجور کی پیداوار ہوتی ہے ۔

Advertisement
روزنامہ دنیا ایپ انسٹال کریں