نیوز الرٹ
  • بریکنگ :- کنٹونمنٹ بورڈزکےانتخابات میں کامیابی معمولی بات نہیں،شہبازشریف
  • بریکنگ :- کنٹونمنٹ بورڈزکے انتخابات میں دھاندلی نہیں ہوئی ، شہبازشریف
  • بریکنگ :- پی ٹی آئی کوکنٹونمنٹ بورڈزالیکشن میں عبرتناک شکست ہوئی،شہبازشریف
  • بریکنگ :- 2023 میں پی ٹی آئی کی سیاست ہمیشہ کیلئےدفن کردیں گے،شہبازشریف
  • بریکنگ :- شفاف الیکشن مطالبہ نہیں حق ہے، اپوزیشن لیڈر شہبازشریف
  • بریکنگ :- سلیکٹڈنےسوا 3 سال میں ملک کوتباہ کردیا،اپوزیشن لیڈر شہبازشریف
  • بریکنگ :- عمران خان نےملکی معیشت کوتباہ کردیا، اپوزیشن لیڈر شہبازشریف
  • بریکنگ :- راولپنڈی:آج غریب آدمی مہنگی دوائی نہیں خریدسکتا، شہبازشریف
  • بریکنگ :- راولپنڈی:غریب عوام بجلی کے بلوں سے پریشان ہیں، شہبازشریف
Coronavirus Updates

سگ گزیدگی میں اضافہ،کتا مار مہم چلانے کا مطالبہ

سگ گزیدگی میں اضافہ،کتا مار مہم چلانے کا مطالبہ

دنیا اخبار

ویکسین کی عدم دستیابی کے سبب مختلف اسپتال جانا پڑا،متاثرہ شہری کی ویڈیو،نارتھ کراچی میں آوارہ کتوں کے غول،خواتین اور بچے گھروں میں محصور

کراچی (اسٹاف رپورٹر)کراچی میں آوارہ کتوں کی بہتات پر تاحال قابو نہیں پایا جاسکا، کتوں کی بہتات کے باعث سگ گزیدگی کے واقعات میں اضافہ ہوگیا، سگ گزیدگی کے واقعے سے متاثرہ شہری نے حکومت سے کتا مار مہم چلانے کا مطالبہ کردیا ہے ۔ تفصیلات کے مطابق کراچی کے علاقے عزیز آباد بلاک 2 میں آوارہ کتے نے شہری پر اچانک حملہ کردیا، آوارہ کتے نے شہری کے پیر پر مختلف جگہوں پر کاٹ لیا، شہری نے اینٹی ریبیز ویکسی نیشن کے لئے مختلف سرکاری اسپتالوں کا رخ کیا جہاں ویکسین کی عدم دستیابی کے سبب گھنٹوں گزر جانے کے بعد ویکسی نیشن کروائی۔ متاثرہ شہری کا ویڈیو میں کہنا تھا کہ کتے نے پیر پر کاٹا جس کے بعد وہ ویکسین لگوانے کے لئے پہلے عباسی شہید اسپتال گیا جہاں ویکسین موجود نہیں تھی جس کے بعد وہ سندھ گورنمنٹ اسپتال گیا وہاں سے اسے جناح اسپتال بھیج دیا گیا، جناح اسپتال میں ویکسین لگائی، اسپتالوں میں اینٹی ریبیز ویکسین کی عدم دستیابی کے سبب مختلف اسپتال جانا پڑا، ایڈمنسٹریٹر کراچی مرتضیٰ وہاب سے اپیل کرتے ہوئے ان کاکہنا تھا کہ کتوں کی بہتات ہوگئی، کتے چھوٹے بچوں کو بھی کاٹ سکتے ہیں لہٰذا شہر سے کتوں کا خاتمہ یقینی بنائیں۔ نارتھ کراچی کے مختلف علاقوں میں بھی آوارہ کتوں کے غول کے غول پھرتے ہیں جس کی وجہ سے نمازیوں کو پریشانی کے ساتھ ساتھ خواتین اور بچے بھی اپنے گھروں میں محصور ہوگئے ہیں۔

Advertisement
روزنامہ دنیا ایپ انسٹال کریں