نیوز الرٹ
  • بریکنگ :- حکومت نےپٹرول پرسیلزٹیکس فی لٹر 67 پیسےبڑھادیا
  • بریکنگ :- پٹرول پر 25 روپے 22 پیسےفی لٹرٹیکس،ڈیوٹیز،مارجن اورلیوی عائد
  • بریکنگ :- پٹرول پرسیلزٹیکس بڑھاکر 8 روپے 82 پیسےفی لٹرکردیاگیا
  • بریکنگ :- پٹرول پر لیوی 5 روپے 62 پیسےفی لٹربرقرار
  • بریکنگ :- فی لٹرپٹرول کی لاگت 112 روپے 57 پیسےہے
  • بریکنگ :- عوام کیلئےپٹرول کی فی لٹرقیمت 137 روپے 79 پیسےمقرر
  • بریکنگ :- پٹرول پر 3 روپے 91 پیسےفی لٹرڈیلرزکمیشن عائدہے
  • بریکنگ :- فی لٹرپرآئل مارکیٹنگ کمپنیوں کامارجن 2 روپے 97 پیسےہے
  • بریکنگ :- فی لٹرپٹرول پرفریٹ 3 روپے 90 پیسےعائدہے
Coronavirus Updates

سگ گزیدگی میں اضافہ،کتا مار مہم چلانے کا مطالبہ

سگ گزیدگی میں اضافہ،کتا مار مہم چلانے کا مطالبہ

دنیا اخبار

ویکسین کی عدم دستیابی کے سبب مختلف اسپتال جانا پڑا،متاثرہ شہری کی ویڈیو،نارتھ کراچی میں آوارہ کتوں کے غول،خواتین اور بچے گھروں میں محصور

کراچی (اسٹاف رپورٹر)کراچی میں آوارہ کتوں کی بہتات پر تاحال قابو نہیں پایا جاسکا، کتوں کی بہتات کے باعث سگ گزیدگی کے واقعات میں اضافہ ہوگیا، سگ گزیدگی کے واقعے سے متاثرہ شہری نے حکومت سے کتا مار مہم چلانے کا مطالبہ کردیا ہے ۔ تفصیلات کے مطابق کراچی کے علاقے عزیز آباد بلاک 2 میں آوارہ کتے نے شہری پر اچانک حملہ کردیا، آوارہ کتے نے شہری کے پیر پر مختلف جگہوں پر کاٹ لیا، شہری نے اینٹی ریبیز ویکسی نیشن کے لئے مختلف سرکاری اسپتالوں کا رخ کیا جہاں ویکسین کی عدم دستیابی کے سبب گھنٹوں گزر جانے کے بعد ویکسی نیشن کروائی۔ متاثرہ شہری کا ویڈیو میں کہنا تھا کہ کتے نے پیر پر کاٹا جس کے بعد وہ ویکسین لگوانے کے لئے پہلے عباسی شہید اسپتال گیا جہاں ویکسین موجود نہیں تھی جس کے بعد وہ سندھ گورنمنٹ اسپتال گیا وہاں سے اسے جناح اسپتال بھیج دیا گیا، جناح اسپتال میں ویکسین لگائی، اسپتالوں میں اینٹی ریبیز ویکسین کی عدم دستیابی کے سبب مختلف اسپتال جانا پڑا، ایڈمنسٹریٹر کراچی مرتضیٰ وہاب سے اپیل کرتے ہوئے ان کاکہنا تھا کہ کتوں کی بہتات ہوگئی، کتے چھوٹے بچوں کو بھی کاٹ سکتے ہیں لہٰذا شہر سے کتوں کا خاتمہ یقینی بنائیں۔ نارتھ کراچی کے مختلف علاقوں میں بھی آوارہ کتوں کے غول کے غول پھرتے ہیں جس کی وجہ سے نمازیوں کو پریشانی کے ساتھ ساتھ خواتین اور بچے بھی اپنے گھروں میں محصور ہوگئے ہیں۔

Advertisement
روزنامہ دنیا ایپ انسٹال کریں