نیوز الرٹ
  • بریکنگ :- کراچی : بندرگاہ پر پھنساجہازنکال لیا گیا، ترجمان کے پی ٹی
  • بریکنگ :- کراچی: بحری جہاز بندرگاہ کے چینل پر خراب ہوگیا تھا، ترجمان
Coronavirus Updates

پورٹ قاسم کلکٹریٹ: اسرائیلی و بھارتی سامان کی کلیئرنس کا انکشاف

پورٹ قاسم کلکٹریٹ:  اسرائیلی و بھارتی سامان کی کلیئرنس کا انکشاف

فیس واش، ٹوتھ برش اور آئل شامل، کنسائنمنٹ میں 80لاکھ روپے سے زائد کی ٹیکس و ڈیوٹی چوری کی گئی، درآمد کنندگان اور کلیئرنگ ایجنٹ کیخلاف مقدمہ درج ،مس ڈیکلیریشن کے ذریعے ٹی پی کنٹینر سے منتقلی کے بعد سامان کی کلیئرنس لاہور ڈرائی پورٹ سے کرائی جانی تھی، گڈز ڈیکلیریشن میں بھی غلط بیانی کی گئی، ذرائع

کراچی (رپورٹ: نادر خان) پورٹ قاسم کلکٹریٹ سے پابندی کے باوجود اسرائیلی اور بھارتی کاسمیٹکس سامان کی ٹرانس شپمنٹ کے ذریعے کلیئرنس کا انکشاف ہوا ہے، ڈائریکٹوریٹ آف کسٹم انٹیلی جنس اینڈ انویسٹی گیشن کراچی نے پورٹ قاسم کی حدود سے باہر نکلنے پر کنٹینر پکڑلیا، درآمد کنندگان اور کلیئرنگ ایجنٹ کے خلاف مقدمہ درج کرلیا گیا، درآمدی کنسائنمنٹ میں 80 لاکھ روپے سے زائد کی ٹیکس و ڈیوٹی چوری کا بھی انکشاف ہوا ہے، پورٹ قاسم کی حدود سے باہر نکلنے کے بعد کنٹینر میں موجود سامان کو دوسرے صوبے منتقلی سے قبل تبدیل کیا جانا تھا۔ پورٹ قاسم کلکٹریٹ سے اسرائیلی اور بھارتی ساختہ کاسمیٹکس کا سامان کلیئر کرالیا گیا۔ واضح رہے کہ حکومت پاکستان نے بھارتی سامان کی کلیئرنس پر پابندی لگا رکھی ہے، جب کہ اسرائیل آئٹم کو پورٹ پر اترنے کی اجازت بھی نہیں ہے، تاہم درآمد کنندگان نے مس ڈیکلیریشن کے ذریعے سامان کی کلیئرنس ٹی پی کنٹینر سے منتقلی کے بعد لاہور میں ڈرائی پورٹ سے کرائی جانی تھی۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ ڈائریکٹوریٹ آف کسٹم انٹیلی جنس اینڈ انویسٹی گیشن کو اس حوالے سے پہلے ہی رپورٹ موصول ہوگئی تھی کہ عمان کی پورٹ سلالہ سے ایک کنٹینر میں بھارتی اور اسرائیلی کاسمیٹکس پروڈکٹس کو پورٹ قاسم سے کلیئر کرایا جانا ہے، جس کے لئے کلیئرنگ ایجنٹ اور درآمد کنندگان کی کسٹم کے بعض افسران سے ملی بھگت شامل ہے۔ جس پرکسٹم انٹیلی جنس حکام نے ٹرمینل سے سامان کی کلیئرنس کے لئے انتظار کیا اور کنٹینر کی آن لائن نگرانی کے دوران ٹرمینل سے کنٹینر کو آؤٹ ہونے کے بعد روک لیا اور کنٹینر کی دستاویزات چیک کرنے کے بعد قبضے میں لے لیا۔ کسٹمز انٹیلی جنس نے کنسائنمنٹ کی جانچ پڑتال کی توانکشاف ہواکہ درآمدکنندہ نے فائل کی جانے والی ٹی پی کی گڈز ڈیکلیریشن میں بھی غلط بیانی سے کام لیا ہے اور جی ڈی میں درآمدکنندہ نے کاسمیٹکس کی مقدارکوکم کیا اور کنسائنمنٹ کی درآمدی قیمت 12 لاکھ 95 ہزار ظاہر کرکے 80 لاکھ مالیت کی ڈیوٹی وٹیکس چوری کرنے کی کوشش کی۔ ذرائع کے مطابق کسٹم انٹیلی جنس کی جانب سے کی گئی جانچ پڑتال میں اس امرکا انکشاف ہواکہ درآمدکنندہ نے کاسمیٹکس کی تعداد 18500 عدد ظاہر کی جبکہ کنسائنمنٹ میں 60637 عددمختلف کاسمیٹکس کی اشیا برآمدہوئیں۔ اس کے علاوہ کنسائنمنٹ سے انڈین فیس واش، ٹوتھ برش اور اسرائیلی آئل برآمد ہوا، جس کی پاکستان میں درآمد پر پابندی ہے۔

Advertisement
روزنامہ دنیا ایپ انسٹال کریں