نجی کلینک میں بچی جاں بحق،ڈاکٹرنے غفلت کامظاہرہ کیا،اہلخانہ

 نجی کلینک میں بچی جاں بحق،ڈاکٹرنے غفلت کامظاہرہ کیا،اہلخانہ

کراچی (رپورٹ: آغا طارق)بھینس کالونی میں عطائی ڈاکٹر کی مبینہ غفلت سے 4 سالہ بچی جاں بحق ہوگئی ۔ تفصیلات کے مطابق بھینس کالونی پیرانو گوٹھ کی رہائشی چار سالہ عائشہ ولد برکت علی عطائی ڈاکٹر محمد الطاف کی مبینہ غفلت سے جاں بحق ہو گئی ۔۔

جس کے بعد ورثاء نے شدید احتجاج کیا اوردھرنا ،عطائی ڈاکٹر کلینک بند کر کے فرار ہوگیا۔ ورثاء نے بچی کو پوسٹ مارٹم کے بعد آبائی قبرستان میں سپردخاک کردیا ۔واضح رہے کچھ روز قبل سندھ ہیلتھ کیئر کمیشن کی جانب سے بھینس کالونی میں عطائی ڈاکٹروں کے خلاف کریک ڈاؤن کیا گیا جس میں متعدد عطائی ڈاکٹروں کے کلینکوں کو سیل کردیا گیا تھا۔ مذکورہ ڈاکٹر کے کلینک کو بھی سیل کردیا گیا تھا لیکن بعدازاں ڈاکٹر سے بھاری رشوت لے کر کلینک کو دوبارہ کھولنے کی اجازت دی گئی تھی ۔جناح اسپتال کے باہر متوفیہ بچی کے اہلخانہ نے بتایا کہ دو دن پہلے بچی کو بخار ہوا تھا جس پراسے نجی کلینک لے کرگئے جہاں ڈاکٹر نے بچی کو انجکشن لگایا جس پر بچی کی طبیعت ٹھیک ہونے کے بجائے مزید بگڑ گئی۔بچی کو بڑے اسپتال لے کر گئے جہاں بچی کو ڈرپ لگائی گئیں لیکن بچی کی تکلیف کم نہیں ہوئی۔گزشتہ روزبچی کوجناح اسپتال لا رہے تھے کہ بچی راستے میں دم توڑ گئی۔ لواحقین نے الزام عائد کیا کہ بچی کی موت مبینہ طورپرغلط انجکشن لگنے سے ہوئی ہے ، جس جگہ  انجکشن لگایا وہ جگہ سوج گئی تھی اورسیاہ پڑ گئی تھی۔لواحقین نے مطالبہ کیا کہ ہمیں انصاف فراہم کیا جائے اور ہمارا مقدمہ درج کرکے بچی کو انجکشن لگانے والے ڈاکٹر کو گرفتار کرکے عبرتناک سزا دی جائے ۔

Advertisement
روزنامہ دنیا ایپ انسٹال کریں