نیوز الرٹ
  • بریکنگ :- مودی کامقبوضہ کشمیرمیں ظلم جاری ہے،راناثنااللہ
  • بریکنگ :- لاہور:2 سال میں کشمیرکازکونقصان پہنچایاگیا،راناثنااللہ
  • بریکنگ :- سلیکٹڈکی وجہ سےپاکستان کشمیرکازکیلئےکردارادانہیں کرسکا،راناثنااللہ
  • بریکنگ :- حکومت کاکام ہربات پرپروپیگنڈاکرناہے،راناثنااللہ
  • بریکنگ :- یورپی ممالک جیسالاک ڈاؤن پاکستان میں نہیں ہوا،راناثنااللہ
Coronavirus Updates

صرف22فیصد ترقیاتی بجٹ استعمال:ایل ڈی اے 14ارب خرچ نہ کر سکا

صرف22فیصد ترقیاتی بجٹ استعمال:ایل ڈی اے 14ارب خرچ نہ کر سکا

دنیا اخبار

رواں مالی سال 17 ارب 37 کروڑمختص ،صرف 3 ارب 43 کروڑ 21 لاکھ خرچ ،78 فیصد بجٹ واپس ہونے کا اندیشہ سٹرکچر پلان روڈ،جیل روڈ انڈر پاس پر بھی ایک پیسہ نہ لگا،کورونا کے باعث فنڈز نہیں ملے :وائس چیئرمین ایس ایم عمران

لاہور (شیخ زین العابدین)ایل ڈی اے نے فنڈز ہونے کے باوجود شہر پر خرچ نہ کئے ،اب تک صرف 22 فیصد بجٹ استعمال ہوسکا، 78 فیصد بجٹ سرنڈر ہونے کا اندیشہ پیدا ہوگیا۔ایل ڈی اے کی بجٹ دستاویزات نے شہر کے ساتھ ناروا سلوک کا بھانڈا پھوڑ دیا۔ایل ڈی اے نے مالی سال 2020-21 میں ترقیاتی کاموں کے لیے 17 ارب 37 کروڑ روپے کا بجٹ مختص کیا،اب تک صرف 3 ارب 43 کروڑ 21 لاکھ روپے خرچ ہوسکے جبکہ تقریباً 14 ارب روپے خرچ نہ ہو سکے جو سرنڈر ہونے کا اندیشہ پیدا ہوگیا۔سٹرکچر پلان روڈ،جیل روڈ انڈر پاس سکیم ،ایل ڈی اے ٹاور فیروز پور روڈ، ڈبل کیرج سبزہ زار پر ایک پیسہ بھی خرچ نہ ہوا۔علامہ اقبال ٹاؤن کی سڑکوں کی تعمیر پر صرف 8.25 فیصد بجٹ خرچ ہوا۔ اسی طرح انٹرٹینمنٹ پارک جوہر ٹاؤن کے لیے مختص بجٹ میں سے بھی کچھ نہ خرچ ہوا۔فنڈز موجود ہونے کے باوجود ترقیاتی سکیموں پر خرچ نہ ہونے سے شہر لاہور کے باسیوں کو مشکلات کا سامنا کرنا پڑا جبکہ ماضی کے شروع ہونے والے منصوبے بھی ادھورے رہے ۔وائس چیئرمین ایل ڈی اے ایس ایم عمران کا کہنا تھا کورونا وباکی وجہ سے بیشتر فنڈز نہ مل سکے جس کی وجہ سے منصوبے شروع نہیں ہوئے ،ادھورے کام آئندہ مالی سال میں مکمل کر لئے جائیں گے ۔

Advertisement
روزنامہ دنیا ایپ انسٹال کریں