نیوز الرٹ
  • بریکنگ :- 24 گھنٹےمیں کوروناکےمزید 1239 کیس رپورٹ،این سی اوسی
  • بریکنگ :- ملک بھرمیں کورونامریضوں کی تعداد 9 لاکھ 41 ہزار 170 ہوگئی
  • بریکنگ :- ملک میں کوروناکےایکٹوکیسزکی تعداد 42 ہزار 290 ہے
  • بریکنگ :- ملک بھرمیں کوروناسےجاں بحق افرادکی تعداد 21 ہزار 689 ہوگئی
  • بریکنگ :- 24 گھنٹےمیں کوروناکے 1610 مریض صحت یاب،این سی اوسی
  • بریکنگ :- کوروناسےصحت یاب افرادکی مجموعی تعداد 8 لاکھ 77 ہزار 191 ہوگئی
  • بریکنگ :- 24 گھنٹےکےدوران 36 ہزار 368 کوروناٹیسٹ کیےگئے
  • بریکنگ :- ملک بھرمیں ایک کروڑ 38 لاکھ 18 ہزار 36 کوروناٹیسٹ کیےجاچکے
  • بریکنگ :- پنجاب 3 لاکھ 43 ہزار 926،سندھ میں 3 لاکھ 27 ہزار 604 کیسز
  • بریکنگ :- خیبرپختونخواایک لاکھ 35 ہزار 877،بلوچستان میں 26 ہزار 201 کیس رپورٹ
  • بریکنگ :- اسلام آباد 82 ہزار 99،گلگت بلتستان میں 5 ہزار 707 کیسز
  • بریکنگ :- آزادکشمیرمیں کورونامریضوں کی تعداد 19 ہزار 756 ہوگئی،این سی اوسی
  • بریکنگ :- کوروناسےمتاثر 2661 مریضوں کی حالت تشویشناک،این سی اوسی
  • بریکنگ :- ملک میں کورونامثبت کیسزکی شرح 3.41 فیصدرہی،این سی اوسی
Coronavirus Updates

سماجی فاصلہ نہ ماسک، لمبی قطاریں، رمضان بازاروں میں ایس او پیز کی دھجیاں

سماجی فاصلہ نہ ماسک، لمبی قطاریں، رمضان بازاروں میں ایس او پیز کی دھجیاں

دنیا اخبار

11رمضان بازاروں میں پولیس اور ضلعی انتظامیہ کی موجودگی کے باوجود بازار میں آنیوالے شہری ماسک نہیں پہنتے ،سرکاری دفاتر میں بھی ایس او پیز کا کوئی خیال نہیں رکھا جا رہا

ملتان (کورٹ رپورٹر)شہر کے رمضان بازاروں میں کورونا وائرس کے حوالے سے بنائی گئی ایس او پیز کی دھجیاں اڑا دی گئیں۔چینی کے سٹالز پر مرد اور خواتین کی لمبی قطاریں ماسک کے استعمال کو بھی یقینی نہیں بنایا جا رہا۔شہر کے مختلف علاقوں میں قائم گیارہ رمضان بازاروں میں پولیس اور ضلعی انتظامیہ کی موجودگی کے باوجود بازار میں آنیوالے شہری ماسک نہیں پہنتے ۔چینی اور آٹے کے سٹالز پر سب سے زیادہ رش لگتا ہے جہاں پر سماجی فاصلے کا بھی خیال نہیں کیا جاتا ضلعی انتظامیہ کے اقدامات صرف زبانی دعوئو ں تک محدود ہیں۔رمضان بازاروں کے علاوہ سرکاری دفاتر میں بھی ایس او پیز کا کوئی خیال نہیں رکھا جا رہا ۔سرکٹ ہاؤس کیساتھ موجود محکمہ انٹر پرائزز میں کوئی بھی ملازم دوران ڈیوٹی ماسک نہیں پہنتا جبکہ لینڈ ریکارڈ آفس اور پٹوار خانے میں بھی ماسک کا استعمال نہیں کیا جا رہا۔ڈپٹی کمشنر سمیت پوری انتظامیہ کورونا ایس او پیز کے حوالے سے روزانہ اجلاس بلاتی ہے اور کاغذ ی کارروائی میں سب اچھا ہے کی رپورٹ لکھ دی جاتی ہے لیکن حقیقت اسکے برعکس ہے ۔سرکاری دفاتر میں ماسک ہینڈ سینٹائزر اور سماجی فاصلے کی دھجیاں اڑائی جا رہی ہے جس کے باعث شہر میں وائرس کے پھیلنے کی شدت کا خطرہ بڑھ گیا ہے لیکن انتظامیہ خاموش تماشائی بنی ہوئی ہے ۔

Advertisement
روزنامہ دنیا ایپ انسٹال کریں