نیوز الرٹ
  • بریکنگ :- پاکستان کےاولڈوارویٹرن لیفٹیننٹ کرنل(ر)سلطان محمد خان مینگل انتقال کرگئے
  • بریکنگ :- لیفٹیننٹ کرنل (ر)سلطان محمد خان مینگل کی عمر 103سال تھی،آئی ایس پی آر
  • بریکنگ :- سلطان محمدخان مینگل زبردست سولجر ،مہم جو اور کوہ پیما تھے،آئی ایس پی آر
  • بریکنگ :- لیفٹیننٹ کرنل (ر)سلطان محمدخان مینگل نے مختلف مہمات میں حصہ لیا
Coronavirus Updates

4 ارب روپے کا فنڈ جاری ہونے کے باوجود جنوبی پنجاب سیکرٹریٹ کی تعمیر التوا کا شکار

4 ارب روپے کا فنڈ جاری ہونے کے باوجود جنوبی پنجاب سیکرٹریٹ کی تعمیر التوا کا شکار

دنیا اخبار

ملتان اور بہاولپور میں عمارتوں کی بنیادیں بھی نہ ڈالی جاسکیں ،سیکرٹریز اکثر لاہوررہنے لگے اختیارات کا مسئلہ بھی حل ہوسکا،سائلین کی مشکلات برقرار ،اپنے ادھورے کاموں کیلئے دربدر ہونے لگے

ملتان (سٹاف رپورٹر )حکومت نے ملتان اور بہاولپور میں جنوبی پنجاب سیکرٹریٹ کی عما رتوں کیلئے چار ارب روپے کا فنڈ جاری کر دیا ہے لیکن دو ماہ گزرنے کے باوجود تا حال سیکرٹریٹ کی عمارتوں کی بنیادیں ہی نہیں ڈالی جا سکیں جس کی وجہ سے جنوبی پنجاب میں تعینات سیکرٹریز بھی اپنے متعلقہ محکموں کے دفاتر میں بیٹھنے کو تیار نہیں جس کی وجہ سے سیکرٹریز کے اکثر لاہور رہنے اور اختیارات کے مسائل حل نہ ہونے پر سائلین کی مشکلات برقرار ہیں ۔تفصیلات کیمطابق ملتان اور بہاولپور میں جنوبی پنجاب سیکرٹریٹ کی عمارتوں کا قیام حکومت کی ترجیحات میں شامل ہے لیکن چار ارب روپے کا فنڈ دینے کے باوجود تا حال دونوں منصوبوں پر کام صرف متعقلہ کمپنی کے افسروں کے رہائشی کمرے بنانے تک ہی محدود رہ گیا ہے جس کی وجہ سے دو ماہ گزرنے کے باوجود تا حال عمارتوں کی بنیادیں ہی نہیں ڈالی جاسکیں جس کا شہریوں نے حکومت سے نوٹس لے کر کام کی رفتار تیز کرنا کا بھی مطالبہ کیا ہے ۔ تاہم کمشنر ملتان ڈاکٹر ارشاد احمد نے روزنامہ دنیا کو بتایا کہ جنوبی پنجاب سیکرٹریٹ کی تعمیر کی ذمہ داری ایڈیشنل چیف سیکرٹری کی ہے لیکن اسکے باوجود اپنے لیو ل پر کام کی رفتار کو بڑھانے کیلئے سائٹ کا وزٹ کر لیا ہے جس سے صورتحال کا فی حدتک بہتر ہو جائے گی ۔دوسری جانب جنوبی پنجاب سیکرٹریٹ میں تعینات سیکرٹریز کو تا حال اختیارات نہیں دئیے گئے جبکہ سیکرٹریٹ کی مستقل عمارت نہ ہونے اور سہولیات کے فقدان کو جواز بنا کر متعلقہ محکموں کے سیکرٹریز بھی لاہور رہنے کو ہی ترجیح دے رہے ہیں جس کی وجہ سے جنوبی پنجاب کے سائلین کے مسائل جوں کے توں ہیں جس کے حوالے سے سائلین کی اکثریت ہی پریشان ہے ۔

Advertisement
روزنامہ دنیا ایپ انسٹال کریں