پسماند علاقوں میں اتائیوں کی بھر مار،زندگیاں خطرے میں

پسماند علاقوں میں اتائیوں کی بھر مار،زندگیاں خطرے میں

چوپڑہٹہ (نمائندہ دنیا )حکومتیں آتی جاتی رہیں لیکن غریب عوام کی حالت زار نہ بدل سکی،پسماندہ علاقوں کی عوام آج بھی اتائیت کے رحم و کرم پر،سینکڑوں لوگ اتائیت کی بھینٹ چڑھ گئے ۔۔۔

بغیر لائسنس میڈیکل سٹورز پر علاج معالجہ جاری،میڈیکل سٹورز پر ممنوعہ اور غیر معیاری ادویات کی فروخت مبینہ طور پر متعلقہ محکموں کی ملی بھگت سے جاری،اعلیٰ حکام نوٹس لیں۔تفصیل کے مطابق کبیروالا کے نواحی علاقوں میں درجنوں کے حساب سے غیر رجسٹرڈ میڈیکل سٹورز قائم ہیں جہاں غیر معیاری بغیر وارنٹی اور جنسی ادویات کی فروخت متعلقہ محکمے کی مبینہ ملی بھگت سے جاری ہے جو درجنوں لوگوں کو معذور بنا کر کئی گھروں کے چراغ گل کر چکے ہیں لیکن حکومتی سطح پر اتائیت کے خاتمے کے دعووں کو آج تک حقیقت کا روپ نہ دیا جا سکا،غیر رجسٹرڈ میڈیکل سٹورز پر اتائی کھلے عام غریب عوام کو نیلی پیلی گولیاں اور طاقت کے نام پر ڈرپس لگا کر دونوں ہاتھوں سے لوٹنے کے ساتھ ساتھ موت کے منہ میں دھکیل رہے ہیں،سرکاری ہسپتالوں میں صحت کی بہترین سہولیات کی فراہمی کے باوجود نواحی علاقوں چوپڑہٹہ،سرائے سدھو،باٹی بنگلہ،ککڑہٹہ،سردار پور،نواں شہر میں عطائیت اور متعلقہ محکموں کی ملی بھگت سے غریب عوام کو معذور بنانے میں مصروف ہیں ۔جبکہ نشہ آور گولیوں اور جنسی طاقت کی ادویات سے نوجوان نسل تیزی سے تباہی کی طرف گامزن ہے ۔عوامی و سماجی حلقوں نے حکام بالا سے مطالبہ کیا ہے کہ صورتحال کا نوٹس لیا جائے ۔

 

Advertisement
روزنامہ دنیا ایپ انسٹال کریں