گرداوری سسٹم بھی ناکام،نگران کمیٹیاں غیر فعال،کھاد کی ذخیرہ اندوزی جاری،کاشتکار پریشان

گرداوری سسٹم بھی ناکام،نگران کمیٹیاں غیر فعال،کھاد کی ذخیرہ اندوزی جاری،کاشتکار پریشان

سرگودھا(سٹاف رپورٹر ) حکومت کی جانب سے سرگودھا سمیت صوبہ بھر میں کھا د کی باآسانی دستیابی اور ذخیرہ اندوزی و مڈل مین کے کردار کا کنٹرول یقینی بنانے کیلئے گرداری بیسڈ فرٹیلائزر سسٹم لانچ کیا تھا۔۔

 جو کہ مناسب عملدرآمد اور چیک اینڈ بیلنس نہ ہونے کے باعث اپنی افادیت پیدا نہیں کر سکا اورکاشتکار بدستور مشکلات کا شکار ہیں، کاشتکاروں کو فصلوں کی نوعیت اور رقبہ کے تناسب سے آن لائن سسٹم کے ذریعے کھاد فراہم کرنے کیلئے سابق حکومت نے گرداری بیسڈ فرٹیلائزر سسٹم لانچ کیا تھا ، جس کے تحت نہ تو ڈیلرز اور نہ ہی کاشتکاروں کے کوائف آن لائن ہو سکے ،جس کی وجہ سے لمبی قطاروں کیساتھ ساتھ کھاد کی دستیابی میں پیش آنیوالے مشکلات ختم ہونے کی بجائے روزبروز بڑھ رہی ہیں ،اورحقیقی کاشتکار کو کھاد کی دستیابی میں دشواری کا سامنا ہے ، حکومتی گائیڈ لائن اورسسٹم کو فعال کرنے و نگرانی کیلئے ضلعی سطح پر خصوصی کمیٹیاں بھی غیر فعال ہیں اور ٹی او آرز سرکاری فائلوں میں دب کر رہ گئے ہیں ،کمپنیوں کے موجودہ سٹاک کے ساتھ ساتھ خرید وفروخت کے ریکارڈ میں بھی ہیرا پھیری کی جارہی ہے ۔

 

Advertisement
روزنامہ دنیا ایپ انسٹال کریں