نیوز الرٹ
  • بریکنگ :- وزیراعظم کی زیرصدارت پارٹی رہنماؤں کااجلاس
  • بریکنگ :- کم آمدن والےافرادکوپٹرولیم مصنوعات پرسبسڈی دینےکی تجویزپرغور،ذرائع
  • بریکنگ :- وزیراعظم کی کم آمدن والوں کیلئےپٹرول پرسبسڈی دینےپرپلان بنانےکی ہدایت
  • بریکنگ :- موٹرسائیکل،رکشہ،عوامی سواری کوپٹرول پرسبسڈی دینےکاپلان آئندہ ہفتےپیش کیاجائےگا
  • بریکنگ :- مہنگائی میں کمی کےلیےضلعی سطح پرکمیٹیاں بنانےکافیصلہ،ذرائع
  • بریکنگ :- یوٹیلیٹی اسٹورزکےذریعےکم آمدن والےافرادکوٹارگٹڈسبسڈی دینےکافیصلہ،ذرائع
  • بریکنگ :- اجلاس میں ملکی معاشی اورمہنگائی کی صورتحال کاجائزہ،ذرائع
Coronavirus Updates

2022ءمیں کیویز،انگلینڈ نے دوبارہ پاکستان آنا ہے، بیک اپ پلان تیار رکھیں گے: رمیز

کرکٹ

لاہور: (دنیا نیوز) پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) کے چیئر مین رمیز راجہ نے کہا ہے کہ اب کھل کر بات کرنے کا وقت آگیا ہے۔ نیوزی لینڈ اور انگلینڈ ٹیموں نے 2022ء میں دوبارہ آنا ہے، ہم اپنا بیک اپ پلان تیاررکھیں گے۔

پاکستان کرکٹ بورڈ کے چیئر مین بننے کے بعد دنیا نیوز کے پروگرام ’دنیا کامران خان کے ساتھ‘ میں میزبان کامران خان کو اپنے پہلے خصوصی انٹرویو میں انہوں نے کہا کہ انٹرنیشنل کرکٹز کا مورال ہمیشہ بلند ہی ہوتا ہے، پاکستان میں کرکٹ بحالی کیلئے بہت اقدامات کیےگئے۔

اپنی بات کو جاری رکھتے ہوئے چیئر مین پی سی بی کا کہنا تھا کہ نیوزی لینڈ کرکٹ ٹیم پاکستان سے بھاگی ہے، انگلینڈ بہانہ کیا ہے سکیورٹی کا کوئی مسئلہ نہیں،آئی سی سی میں اپنا موقف بھرپور انداز میں پیش کروں گا، ہرکرکٹ بورڈز کی اپنی اہمیت ہے، انٹرنیشنل کرکٹ کونسل (آئی سی سی) میں سیاست نہیں ہے، انگلینڈ بہانہ کیا ہے، سیکیورٹی کا کوئی ایشو نہیں تھا۔ انگلینڈ کرکٹ بورڈ نے بے تکا فیصلہ کیا۔

ان کا کہنا تھا کہ نیوزی لینڈ اور انگلینڈ کرکٹ ٹیموں نے 2022ء میں دوبارہ آنا ہے، اب پی سی بی کا چیئرمین کرکٹر ہے۔ اب ہم اپنا بیک اپ پلان تیاررکھیں گے۔ اب ہم اپنی شرائط پر ان کو بلائیں گے۔

انہوں نے کہا کہ مجھے چیئر مین پی سی بی بنے سات دن نہیں ہوئے، میرا پلان 100 دن کا ہے، فرسٹ کلاس پلیئرز کے لیے پیسے بڑھائے ہیں، کرکٹ ٹیم میں نوجوان کھلاڑیوں کو لیکر آئیں گے، ٹیم میں ہر کھلاڑی کو عزت دی جائے گی۔

رمیز راجہ نے کہا کہ نئے کھلاڑیوں کو لانے کا مقصد کھلاڑیوں کی سوچ تبدیل کرنا ہے، پاکستانی ٹیم کو نمبر ون بنانے کے لیے کام کریں گے، ورلڈکپ کے لیے قومی ٹیم سلیکٹ ہو چکی ہے۔ سلیکشن کو بیک کر رہا ہوں، ٹیم میں ایک دو کھلاڑیوں پر اختلاف ہو سکتا ہے۔

چیئر مین پی سی بی کا کہنا تھا کہ سوچا نہیں تھا آتے ساتھ باؤنسرزشروع ہوجائیں گے۔ پاکستانی ٹیم کو اب کارکردگی سے جواب دینا ہو گا۔ جو پریشر بلڈ اپ ہوا ہے اسے کارکردگی سے ختم کرنا ہوگا۔ پاکستان ٹیم کو سمجھنے کی ضرورت ہے سب ان کی طرف دیکھ رہے ہیں۔

Advertisement
روزنامہ دنیا ایپ انسٹال کریں