نیوز الرٹ
  • بریکنگ :- امریکانےپہلےتنازع کوفوجی اندازمیں حل کرنےکی کوشش کی،وزیراعظم
  • بریکنگ :- افغان مسئلےکاکوئی فوجی حل نہیں،وزیراعظم عمران خان
  • بریکنگ :- افغان تاریخ کاادارک رکھنےوالے بھی کہتےرہےیہ کوئی حل نہیں،وزیراعظم
  • بریکنگ :- جب میں نےکہاافغان مسئلےکاکوئی فوجی حل نہیں تومجھےطالبان خان کہاگیا،وزیراعظم
  • بریکنگ :- میں نہیں جانتاافغان جنگ کاکیامقصدتھا،وزیراعظم عمران خان
  • بریکنگ :- قوم کی تعمیر،جمہوریت یاعورت کی آزادی جوبھی مقصدتھاطریقہ کارغلط تھا،وزیراعظم
  • بریکنگ :- بدقسمتی سےامریکااورنیٹوافواج مذاکرات کی صلاحیت کھوبیٹھےہیں،وزیراعظم
  • بریکنگ :- جب ڈیڑھ لاکھ فورسزتھیں تب افغان مسئلےکاسیاسی حل نکالاجاناچاہیےتھا،وزیراعظم
  • بریکنگ :- امریکانےافغانستان سےانخلاکی تاریخ دی توطالبان سمجھے وہ جیت چکےہیں،وزیراعظم
  • بریکنگ :- وزیراعظم عمران خان کاامریکی نشریاتی ادارےکوانٹرویو
  • بریکنگ :- میرےخیال میں امریکاافغانستان میں بُرےطریقےسے پھنس چکا ہے،وزیراعظم
  • بریکنگ :- اب طالبان کوسیاسی حل کیلئےمجبورکرنامشکل ہےوہ خودکوفاتح سمجھتےہیں،وزیراعظم
  • بریکنگ :- جب اشرف غنی صدارتی الیکشن لڑرہےتھےاسوقت امریکااورطالبان کی بات چیت ہورہی تھی
  • بریکنگ :- پاکستان نےامریکااورطالبان کومذاکرات کی میز پر لانےمیں اہم کرداراداکیا،وزیراعظم
  • بریکنگ :- جس کااعتراف امریکی نمائندہ خصوصی زلمے خلیل زاد نے بھی کیا،وزیراعظم عمران خان
  • بریکنگ :- صورتحال کےمطابق اشرف غنی کوصدارتی الیکشن نہیں لڑناچاہیےتھا،وزیراعظم
  • بریکنگ :- اشرف غنی کوالیکشن منسوخ کرکےسب کوسیاسی دھارےمیں لانا چاہیےتھا،وزیراعظم
  • بریکنگ :- اشرف غنی نےصدربننےکےبعدطالبان کومذاکرات کی دعوت دی،وزیراعظم
  • بریکنگ :- طالبان نے اسی وجہ سے مذاکرات سے انکارکردیاتھا،وزیراعظم
  • بریکنگ :- طالبان امریکااورافغان لیڈرزسےبات چیت کیلئےتیارتھےاشرف غنی سےنہیں،وزیراعظم
  • بریکنگ :- اسی وجہ سے مذاکرات ڈیڈلاک کاشکار ہوتے رہے،وزیراعظم
  • بریکنگ :- افغان مسئلےکاسیاسی حل نکالاجاناچاہیے،وزیراعظم عمران خان
  • بریکنگ :- افغانستان میں ایسی حکومت ہونی چاہیے جس میں تمام فریق شامل ہوں،وزیراعظم
  • بریکنگ :- افغانستان میں طویل خانہ جنگی ہوئی توپاکستان پردوہرےاثرات کاخدشہ ہے،وزیراعظم
  • بریکنگ :- 30لاکھ افغان مہاجرین پہلےسےموجودہیں اور بھی آجائیں گے،وزیراعظم
  • بریکنگ :- پاکستان کی معیشت مزید مہاجرین کابوجھ نہیں اٹھاسکتی،وزیراعظم
  • بریکنگ :- خانہ جنگی پاکستان میں داخل ہوسکتی ہےیہاں بھی کثیرتعدادمیں پشتون ہیں،وزیراعظم
  • بریکنگ :- پشتون اس خانہ جنگی کا شکارہوسکتےہیں لیکن ہم ایساکبھی نہیں چاہیں گے،وزیراعظم
  • بریکنگ :- اس جنگ سےپہلے القاعدہ افغانستان میں تھی،وزیراعظم عمران خان
  • بریکنگ :- پاکستان میں کوئی عسکریت پسند طالبان نہیں تھے،وزیراعظم عمران خان
  • بریکنگ :- نائن الیون میں کوئی پاکستانی ملوث نہیں تھا،وزیراعظم عمران خان
  • بریکنگ :- پاکستان نےامریکاکےساتھ اس جنگ میں شریک ہوکراپنی تباہی کی،وزیراعظم
  • بریکنگ :- جس جنگ سےہماراتعلق نہیں تھااس میں70ہزارپاکستانی شہید ہوئے،وزیراعظم
  • بریکنگ :- اس جنگ میں ہماری معیشت کو150ارب ڈالرکانقصان ہوا،وزیراعظم
  • بریکنگ :- سویت یونین کےخلاف بھی امریکا نےگروپس تیارکیے،وزیراعظم
  • بریکنگ :- ان کی فنڈنگ کی گئی اورکہا گیادہشت گردی کےخلاف جنگ ہے،وزیراعظم
  • بریکنگ :- 50مختلف گروپس نےپاکستان کی سیکیورٹی فورسزکونشانہ بناناشروع کردیا،وزیراعظم
  • بریکنگ :- امریکااورنیٹواپنی شکست کاذمہ دارہمیں ٹھہرارہےہیں،وزیراعظم
  • بریکنگ :- میرےخیال میں یہ ناانصافی کی انتہا ہے،وزیراعظم عمران خان
  • بریکنگ :- 10ہزارجہادی افغانستان میں داخل ہوئے یہ ناقابل فہم ہے،وزیراعظم
  • بریکنگ :- افغانستان کےپاس اگرشواہد ہیں توہمارے حوالےکرے،وزیراعظم
  • بریکنگ :- محفوظ پناہ گاہوں کی بات کرنےوالےبتائیں کہاں ہیں پناہ گاہیں،وزیراعظم
  • بریکنگ :- پاکستان میں افغان مہاجرین کیمپوں میں ہیں،وزیراعظم عمران خان
  • بریکنگ :- اگروہاں کوئی ایسےعناصرموجود ہیں تو کیسے علیحدہ کرسکتےہیں؟وزیراعظم
  • بریکنگ :- ہم توکہہ رہےہیں افغانستان اپنےمہاجرین کوواپس لےجائے،وزیراعظم
  • بریکنگ :- افغانستان میں 40سال سے خانہ جنگی ہے،وزیراعظم عمران خان
  • بریکنگ :- افغانستان میں ایسی صورتحال نہیں کہ مہاجرین واپس جاسکیں،وزیراعظم
  • بریکنگ :- افغان مہاجرین پاکستان کی معیشت پربوجھ ہیں،وزیراعظم
  • بریکنگ :- اگران میں طالبان کی حمایت کرنےوالےہیں تویہ ہم کیسے جان سکتےہیں،وزیراعظم
  • بریکنگ :- پاکستان اور افغانستان کےدرمیان 1500میل طویل سرحد ہے،وزیراعظم
  • بریکنگ :- ساراعلاقہ پہاڑی ہےاسے ڈیورنڈ لائن کہتےہیں،وزیراعظم عمران خان
  • بریکنگ :- برطانوی راج میں اسی وجہ سےدونوں اطراف سے قبائل تقسیم ہوئے،وزیراعظم
  • بریکنگ :- اب پاکستان نےالزامات ختم کرنےکےلیے سرحد پرباڑلگائی،وزیراعظم عمران خان
  • بریکنگ :- پاکستان نے پہلی بارخطیر رقم خرچ کرکے باڑلگائی،وزیراعظم عمران خان
  • بریکنگ :- پاک افغان سرحد پرباڑلگانے کاکام 90فیصدمکمل ہوچکا،وزیراعظم عمران خان
  • بریکنگ :- اب یہاں ایک مکمل سرحد بن رہی ہےجوپہلے نہیں تھی،وزیراعظم
  • بریکنگ :- اب پاکستان کاموقف بالکل واضح ہے،وزیراعظم عمران خان
  • بریکنگ :- اب ہماراملک کسی محاذآرائی کامتحمل نہیں ہوسکتا،وزیراعظم عمران خان
  • بریکنگ :- جب پاکستان نےدہشت گردی کےخلاف جنگ شروع کی توخودکش حملےہورہےتھے
  • بریکنگ :- خودکش حملوں سے تجارت اورسیاحت کےشعبےمتاثرہوئے،وزیراعظم
  • بریکنگ :- اب ہم کسی تصادم کوحصہ نہیں بنناچاہتے،وزیراعظم عمران خان
  • بریکنگ :- امریکا کواڈے دینےسے پاکستان دہشت گردی کانشانہ بنےگا،وزیراعظم
  • بریکنگ :- پاکستان امن میں شراکت دارہے،وزیراعظم عمران خان
  • بریکنگ :- پاک امریکا تعلقات میں ہمیشہ کوئی رخنہ رہا ہے،وزیراعظم عمران خان
  • بریکنگ :- امریکانےہمیشہ اس بات پراصرارکیاہم آپکو امداددےرہےہیں،وزیراعظم
  • بریکنگ :- پاکستان کواس جنگ میں استعمال کیاگیا،وزیراعظم عمران خان
  • بریکنگ :- پاکستان یہ محسوس کرتا تھا کہ ہمارااس جنگ سےکوئی تعلق واسطہ نہیں،وزیراعظم
  • بریکنگ :- کوئی ایساملک ہےجس نےکسی دوسرےملک کےلیے70ہزارجاںیں دی ہوں،وزیراعظم
  • بریکنگ :- پاکستان سمجھتا ہےہم امریکاکی جنگ لڑکراپنی معیشت کانقصان کررہےہیں،وزیراعظم
  • بریکنگ :- جوامریکی امداد ہے وہ ہمارےنقصان سے کہیں زیادہ کم ہے،وزیراعظم
  • بریکنگ :- افغانستان میں اپنی ناکامیوں کاالزام بھی ہمیں دیاجارہاہے،وزیراعظم
  • بریکنگ :- دونوں فریقین کوقریب لانے کےلیےہم نے بہت کچھ کیا،وزیراعظم
  • بریکنگ :- اب ہمار املک کسی محاذآرائی کامتحمل نہیں ہوسکتا،وزیراعظم عمران خان
  • بریکنگ :- ہم نے بڑی مشکل سے اپنی معاشی صورتحال کوبہترکیا ہے،وزیراعظم
  • بریکنگ :- ہم اس سے زیادہ کچھ نہیں کرسکتے کہ طالبان پرسیاسی حل کےلیےدباؤڈالیں،وزیراعظم
  • بریکنگ :- ہم چاہتےہیں افغان عوام اپنے مستقبل کاخودفیصلہ کریں،وزیراعظم
Kashmir Election 2021

سندھ، پنجاب، کشمیر میں معمول سے زیادہ مون سون بارشوں کا امکان

پاکستان

لاہور: (ویب ڈیسک) محکمہ موسمیات کی طرف سے جاری کردہ اعلامیہ میں کہا گیا ہے کہ امکان ہے رواں مون سون سیزن کے دوران سندھ، پنجاب کشمیر میں معمول سے زیادہ بارشیں ہوں گی۔

محکمہ موسمیات کے مطابق پاکستان میں رواں سال مون سون جون کے آخری ہفتے سے شروع ہونے کا امکان ہے، 27 سے 30 جون کے دوران بارشیں متوقع ہیں اور جولائی سے ستمبر کے دوران مون سون بارشیں معمول کے قریب ہوں گی جب کہ پنجاب کے بالائی، شمالی بلوچستان اور کشمیر میں معمول سے زائد بارشیں متوقع ہیں۔

اعلامیے میں کہا گیا ہےکہ پنجاب، کے پی اور سندھ کے میدانی علاقوں میں اربن فلڈنگ نظر انداز نہیں کی جاسکتی جب کہ پنجاب، آزاد کشمیر اور خیبر پختونخوا کے پہاڑی علاقوں میں سیلاب کا خطرہ رہے، اچانک تیز بارشوں کے باعث کیچمنٹ ایریا،ندیوں اور دریاوں میں سیلاب آسکتا ہے۔

اعلامیے کے مطابق شمالی علاقوں میں معمول سے زائد درجہ حرارت کے باعث برف پگھلنے کا امکان رہے گا، پہاڑوں سے برف پگھلنے کے باعث بالائی انڈس بیسن میں پانی کا بہاؤ بڑھ جائے گا تاہم بارشوں کے باعث پاور سیکٹر اور زراعت کے لیے پانی کافی مقدار جمع ہوگا۔

محکمہ موسمیات کا کہنا ہےکہ کراچی سمیت سندھ میں معمول سے زائد بارشوں کا امکان ہے، کراچی میں جولائی میں معمول کی بارشوں کا ریکارڈ 60 ملی میٹرہے جب کہ شہر میں اگست میں معمول کی بارشوں کا ریکارڈ 60.9 اور ستمبر میں 11 ملی میٹر ہے۔

Advertisement
روزنامہ دنیا ایپ انسٹال کریں