نیوز الرٹ
  • بریکنگ :- آرمی چیف کالاہورگیریژن کادورہ،آئی ایس پی آر
  • بریکنگ :- آرمی چیف کوکورہیڈکوارٹرزلاہورمیں فارمیشن کی آپریشنل اورٹریننگ پربریفنگ
  • بریکنگ :- آرمی چیف کی لاہورکےتعلیمی اداروں کےطلبااور فیکلٹی سے بھی ملاقات
  • بریکنگ :- فیکلٹی اورطلبانےخوشگوارماحول میں آرمی چیف سے سوالات کیے،آئی ایس پی آر
  • بریکنگ :- آرمی چیف نےطلبااورفیکلٹی ممبران کےسوالات کےجواب دیئے
  • بریکنگ :- پنجاب یونیورسٹی،ایف سی کالج،جی سی،یوای ٹی کےطلباوفدکاحصہ تھے
  • بریکنگ :- فیکلٹی اورطلبانےآرمی چیف سےملاقات کوانتہائی مثبت قراردیا،آئی ایس پی آر
  • بریکنگ :- اس موقع پرکورکمانڈرلاہورلیفٹیننٹ جنرل محمدعبدالعزیزبھی موجودتھے
  • بریکنگ :- آرمی چیف نےمستقبل کیلئےقیادت تیارکرنے میں اداروں کےکردارکوسراہا
  • بریکنگ :- پاکستانی نوجوان انتہائی باصلاحیت ہیں،آرمی چیف
  • بریکنگ :- نوجوانوں کوسازگارماحول فراہم کیاجائےتویہ ملک کو ترقی کی طرف لےجائیں گے،آرمی چیف
  • بریکنگ :- تعلیم،صحت،ماحول ،انفراسٹرکچرکےشعبوں میں انسانی وسائل کی ترقی کی ضرورت ہے،آرمی چیف
  • بریکنگ :- غلط معلومات کاپھیلاؤریاست کےوقارکیلئےخطرہ ہے، آرمی چیف
  • بریکنگ :- آرمی چیف کاغلط معلومات کےپھیلاؤکےخاتمےکی مہم کی ضرورت پرزور
  • بریکنگ :- قوم کودشمن قوتوں کی پھیلائی گئی غلط معلومات کا توڑنکالناہوگا،آرمی چیف
Coronavirus Updates

شہباز شریف انٹر نیشنل صادق اور امین ہیں تو عدالت میں شواہد لے آئیں: شہزاد اکبر

پاکستان

اسلام آباد: (دنیا نیوز) وزیر اعظم کے مشیر برائے داخلہ شہزاد اکبر نے کہا ہے کہ شہباز شریف اگر انٹر نیشنل صادق اور امین ہیں تو عدالت میں شواہد لے کر آئیں ۔شہبازشریف اور مریم نواز مقدمات کو طول دے رہے ہیں۔پی ڈی ایم کچھ نہیں کرسکے گی۔

ایوان وزیراعلی لاہور میں وزیر اعظم کے مشیر برائے داخلہ نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ شہباز شریف احتساب عدالت جانے کے بجائے اسلام آباد چلے گئے ۔ یہ ان کی شو بازی کا ثبوت ہے وہ مقدمے کو طول دینے کی کوشش کررہے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ 2003 سے 2009 تک شہباز فیملی کے اثاثوں میں 66 کروڑ کا اضافہ ہوا۔ شہباز نے تو مجھے عدالتوں میں گھسیٹنے کا کہا تھا۔ وہ اب مجھے عدالت کیوں نہیں لے کر جاتے۔ پی ڈی ایم کے احتجاج سے کچھ نہیں ہوگا۔

شہزاداکبر نے مزید کہا کہ مہنگائی پوری دنیا کا مسئلہ ہے، نئے آرڈیننس کے بعد 6 ماہ میں کیس کا فیصلہ کرنا لازم ہے۔
 

Advertisement
روزنامہ دنیا ایپ انسٹال کریں