نیوز الرٹ
  • بریکنگ :- جیت پراللہ تعالیٰ کےحضورسربسجودہیں،شہبازشریف
  • بریکنگ :- کامیابی اپنےمرحوم دوست پرویزملک کےنام کرتاہوں،شہبازشریف
  • بریکنگ :- مرحوم پرویزملک نوازشریف کےعظیم ساتھی تھے،شہبازشریف
Coronavirus Updates

کالعدم تنظیم کا پرتشدد احتجاج، جی ٹی روڈ بلاک، رینجرز نے کنٹرول سنبھال لیا

پاکستان

گوجرانوالہ: (دنیا نیوز) کالعدم تنظیم کی طرف سے پرتشدد احتجاج کا سلسلہ جاری ہے، کامونکی اور دیگر مقامات پر جی ٹی روڈ دونوں اطراف سے بند کر دی گئی ہے جبکہ ٹرین سروس بھی متاثر ہو کر رہ گئی ہے۔

کالعدم تنظیم کے کارکنان پر مشتمل ریلی کامونکی سے نکل کر گوجرانوالہ شہر کی طرف گامزن ہے، جس کے باعث اطراف کے علاقوں میں کاروبارِ زندگی معطل ہوگیا۔

کالعدم تنظیم کے پر تشدد احتجاج کے باعث عوام شدید پریشان ہیں، جی ٹی روڈ دونوں اطراف سے بند ہے، جی ٹی روڈ پر آمدورفت بند ہونے کے باعث اشیائے خورو نوش کی شدید قلت ہے۔

ریلوے سروس معطل 

ترجمان ریلوے کے مطابق لاہور اور راولپنڈی کے درمیان شام 4 بج کر 30 منٹ پر چلنے والی سبک خرام اور شام 6 بجے چلنے والی اسلام آباد ایکسپریس اور رات 12بج کر 30 منٹ پر چلنے والی راول ایکسپریس کو بھی دونوں اطراف سے آج کے لیے معطل کیا گیا ہے۔ اسی طرح پشاور سے کوئٹہ جانے والی جعفر ایکسپریس کو پشاور اور لاہور کے درمیان آج کے روز معطل کردیا گیا ہے، گرین لائن کو راولپنڈی اور لاہور کے درمیان آج کے روز معطل کیا گیا ہے۔ تیزگام ایکسپریس کو بھی آج کے روز راولپنڈی اور لاہور کے درمیان معطل کیا گیا ہے۔

جی ٹی روڈ پر تعلیمی ادارے بند

دوسری طرف شیخوپورہ ،گوجرانوالا، گجرات، جہلم میں موبائل، انٹرنیٹ سروس معطل ہے، جی ٹی روڈ پر تعلیمی اداروں کو بھی بند کر دیا گیا ہے۔ جبکہ کالعدم تنظیم کے قافلے کو روکنے کے لیے رینجرز نے دریائے چناب کے پل کا کنٹرول سنبھال لیا ہے۔

گجرات میں پولیس اور ایلیٹ فورس بھی تعینات کر دی گئی ہے، داخلی اور خارجی راستوں پر خندقیں کھود دی گئیں۔

راولپنڈی میں اہم مقامات پر رینجرز تعینات

مزید برآں کالعدم تنظیم کے مارچ کے پیش نظر راولپنڈی میں اہم مقامات پر رینجرزتعینات کر دی گئی ہے، داخلی اور خارجی راستے کنٹینرز لگا کر بند کر دیئے گئے ہیں، میٹرو بس سروس بھی صدر سے فیض آباد تک معطل کر دی گئی ہے، کرفیو جیسی صورتحال پیدا ہو گئی ہے جبکہ عوام کے لیے اسپتال جانا محال ہو گیا اور شہری گھروں میں محصور ہو گئے ہیں۔

وزیراعظم عمران خان نے قومی سلامتی کمیٹی کا اجلاس طلب کر لیا

وفاقی وزیر اطلاعات فواد چودھری نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر پر لکھا کہ کالعدم جماعت کی غیر قانونی سرگرمیوں سے پیدا ہونیوالی صورتحال کے پیش نظر وزیر اعظم عمران خان نے کل قومی سلامتی کمیٹی کا اجلاس طلب کیا ہے۔ اس اجلاس میں قومی سلامتی سے متعلق دیگر امور بھی زیر غور آئیں گے۔

ذرائع کے مطابق وزیراعظم عمران خان کی زیر صدارت قومی سلامتی کمیٹی کا اجلاس جمعہ کو 12 بجے ہو گا۔ مسلح افواج کے سربراہان اجلاس میں شریک ہوں گے، ڈی جی آئی ایس آئی، ڈی جی آئی بی بھی شریک ہوں گے، وفاقی وزراء بھی قومی سلامتی کمیٹی اجلاس میں شرکت کریں گے۔

ذرائع کے مطابق وزیر داخلہ شیخ رشید اور وزیر نور الحق اجلاس کو بریفنگ دیں گے، وزیر داخلہ موجودہ صورتحال پر قومی سلامتی کمیٹی کو اعتماد میں لیں گے، احتاجی مظاہرین سے نمٹنے کی حکمت عملی پر غور کیا جائے گا، کالعدم تنظیم کی غیرقانونی سرگرمیوں سے متعلق بریفنگ دی جائے گی، کالعدم تنظیم کے احتجاج سے متعلق کابینہ کےفیصلوں پر بریفنگ دی جائے گی، قومی سلامتی سےمتعلق دیگراموربھی غورکیا جائے گا۔

کالعدم تنظیم کے کارکنوں کی پولیس اہلکاروں پر فائرنگ کی ویڈیو سامنے آ گئی

کالعدم تنظیم کے کارکنوں کی جانب سے سادھوکی کے مقام پر پولیس پر فائرنگ کی ویڈیو سامنے آ گئی۔ ویڈیو میں دیکھا جا سکتا ہے کہ کالعدم تنظیم کے کارکنان نے ہاتھوں میں اسلحہ تھام رکھا ہے، وقتا فوقتا فائرنگ کرتے رہے۔

پولیس ذرائع کے مطابق فائرنگ کرنے والے تمام افراد کی گرفتاری کے لئے نادرا سے مدد لی جارہی ہے، گزشتہ روز دو پولیس اہلکار شہید اور متعدد زخمی ہوئے تھے، فائرنگ کس اسلحے سے کی گئی، تحقیقات جاری ہیں۔

دوسری طرف وزیر قانون پنجاب راجہ بشارت نے بڑا ایکشن لیتے ہوئےفائرنگ کرنے والے افراد کی شناخت کےلئے متعلقہ اداروں کو ہدایت جاری کردیں۔

صوبائی وزیر قانون کا کہنا تھا کہ فائرنگ کرنے والوں کی شناخت کرکے فوری گرفتار کیا جائے، پنجاب میں کسی کو قانون ہاتھ میں نہیں لینے دیں گے، کالعدم تنظیم کے اراکین کو ذمہ داری کا مظاہرہ کرنا چاہئے، کالعدم تنظیم کے احتجاج سے پنجاب کے لاکھوں عوام متاثر ہورہے ہیں، احتجاج کی وجہ سے بیماروں، مسافروں اور طلبا و طالبات سمیت عام شہری کئی دن سے شدید مشکلات کا شکار ہیں، احتجاج کے بجائے پرامن طریقہ اختیار کریں۔

شہید اہلکاروں کے مجرموں کی حوالگی تک مذاکرات نہیں ہو سکتے: فواد چودھری

وفاقی وزیر اطلاعات فواد چودھری نے کہا ہے کہ کالعدم تنظیم کی طرف سے شہید کیے گئے پولیس اہلکاروں کے مجرموں کی حوالگی تک مذاکرات نہیں ہو سکتے۔

وفاقی وزیر اطلاعات نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر پر اپنے ایک بیان میں لکھا کہ واضع کر چکے ہیں جب تک کالعدم جماعت کے لوگ سڑکیں خالی نہیں کرتے اور پولیس کو شہید کرنیوالے مجرموں کو اداروں کے حوالے نہیں کیا جاتا کوئی مذاکرات نہیں ہو سکتے۔

انہوں نے کہا کہ محبِ وطن لوگ اس احتجاج سے خود کو لاتعلق کریں، اپنے گھروں کو لوٹ جائیں اور ریاست کیخلاف دہشت گردی کا حصہ نہ بنیں۔

پیمرا نے کالعدم تنظیم کی میڈیا کوریج پر پابندی عائد کردی

پیمرا کی طرف سے جاری کردہ اعلامیے کے مطابق پیمرا نے تمام ٹی وی چینلز کو کالعدم تحریک لبیک پاکستان کی کوریج سے روک دیا ہے۔ ایف ایم ریڈیو، کیبل آپریٹرز اور نیوز چینلز کو بھی کوریج روکنے کی ہدایت کی ہے۔

اعلامیے کے مطابق کالعدم تنظیم کی میڈیا کوریج پر پابندی میڈیا کوڈ آف کنڈکٹ کے تحت لگائی، میڈیا کوڈ آف کنڈکٹ 2015ء کے تحت کالعدم تنظیموں کی میڈیا کوریج ممنوع ہے۔

اعلامیے میں بتایا گیا ہے کہ وزارت داخلہ نے کالعدم تنظیم کو 15 اپریل 2021ء کو کالعدم قراردیا ہے، وزارت داخلہ نے دہشتگردی کی کارروائی میں ملوث ہونے پر جماعت کو کالعدم قراردیا۔

کالعدم تنظیم کے مارچ کو ہر صورت روکا جائے گا: وفاقی وزیر داخلہ

نجی ٹی وی کو انٹرویو دیتے ہوئے وفاقی وزیر داخلہ شیخ رشیدا حمد نے کہا کہ حکومت یرغمال نہیں بنے گی، ریاست کی رٹ کو ہر صورت قائم کیا جائیگا، تمام مطالبات تسلیم کرلیے تھے، احتجاج کا کوئی جواز نہیں، مارچ کو ہر صورت روکا جائیگا۔ اگر مظاہرین واپس مرکز چلے جائیں تو حکومت ان سے بات چیت کیلئے تیار ہے۔

انہوں نے کہا کہ جی ٹی روڈ بند کرنیکی اجازت نہیں دی جائیگی، یہ دفاعی لحاظ سے اہم شاہراہ ہے اسے بند نہیں کیا جاسکتا، جمعہ اور ہفتہ کو دوبارہ کالعدم تنظیم کے قیادت سے دوبارہ بات ہو گی، وزیراعظم عمران خان پاکستان کی ریاست مدینہ کی طرز پر تعمیر کیلئے اقدامات کر رہے ہیں، حکومتی سطح پر پہلی بار ملک بھر میں عشرہ رحمت اللعالمین بھرپور طریقے سے منایا گیا، جب تمام مطالبات پہلے ہی تسلیم کیے جاچکے تو احتجاج اور پرتشدد مظاہروں کا کوئی جواز نہیں۔

شیخ رشید احمد کا کہنا تھا کہ فرانس کا سفیر پاکستان چھوڑ کر جا چکا ہے، ان ہنگاموں کے دوران پولیس کے جوان شہید ہوئے، اس کا حساب کون دے گا؟، مظاہرین نے پولیس پر کلاشنکوفوں سے سیدھی گولیاں چلائیں، پاکستان کو نقصان پہنچا کر اسلام کی کون سی خدمت کی جارہی ہے، جو حالات پیدا کیے گئے ہیں اس سے کالعدم تنظیم اور حکومت دونوں کا نقصان ہو گا، پاکستان کیخلاف عالمی پابندیاں لگانے کی سازش ہو رہی ہے۔

وفاقی وزیر داخلہ کا مزید کہنا تھا کہ ہم نے پولیس کو وہ اختیارات نہیں دیے جو وہ ہم سے مانگ رہے ہیں، بات آگے بڑھی تو جو سڑکوں پر ہیں انہی کا نقصان زیادہ ہو گا، کالعدم تنظیم سیاسی رول ادا کرے، الیکشن کمیشن نے اس پر پابندی نہیں لگائی، حکومت جھکے گی نہ یرغمال بنے گی۔ ریاست کی رٹ قائم کی جائیگی اور مظاہرین کو ہر صورت روکا جائیگا۔
ملک میں افراتفری پھیلی، حکومتی مشینری صورتحال سے بالکل لاعلم ہے: شہباز

سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر پر اپنی ٹوئٹ میں لیگی صدر نے کہا کہ وفاقی وزراء امن و امان کی صورتحال پر متضاد بیانات دے رہے ہیں، وزرا میں سے ایک نے کہا کہ وزیراعظم عمران خان کالعدم تنظیم کے ساتھ 2020 کے معاہدے سے لاعلم تھے۔

ان کا کہنا تھا کہ ملک میں افراتفری پھیلی ہے جبکہ قیادت کا فقدان ہے، حکومتی مشینری صورتحال سے بالکل لاعلم ہے، یہی عمرا ن خان کے نئے پاکستان کا طرز حکومت ہے، اس حکومت کی حالت کا اندازہ لگائیں جس کا وزیراعظم کہتا ہے اس نے ٹی وی پر روپے کی قدر میں کمی کی خبر سنی، موجودہ حکمران کسی بھی احساس ذمہ داری سے عاری ہیں، ملک آٹو پائلٹ پر ہے کیونکہ بد قسمتی سے ایک کے بعد دوسرا بحران گہرا ہوتا جا رہا ہے۔

Advertisement
روزنامہ دنیا ایپ انسٹال کریں