نیوز الرٹ
  • بریکنگ :- عالمی ادارہ صحت کےیورپین ڈائریکٹرہینس کلوگےکی خبرایجنسی سےگفتگو
  • بریکنگ :- اومی کرون سےکوروناوباایک نئےفیزمیں داخل ہوگئی،یورپین ڈائریکٹرڈبلیوایچ او
  • بریکنگ :- اومی کرون ویرینٹ سےکوروناوباکےعام بیماری بننےکی امیدپیداہوگئی،ہینس کلوگے
  • بریکنگ :- اومی کرون کےبعدیورپ میں کوروناوباختم ہونےکی طرف جارہی ہے ،ہینس کلوگے
  • بریکنگ :- امیدہےاومی کرون کےبعدکوروناموسمی فلوکی شکل اختیارکرلےگا، ڈائریکٹرڈبلیوایچ او
Coronavirus Updates

سابق جج اسلام آباد ہائیکورٹ شوکت عزیز صدیقی کا بطور وکیل لائسنس بحال

پاکستان

اسلام آباد: (دنیا نیوز) جسٹس قاضی فائز عیسیٰ کی زیرِ صدارت انرولمنٹ کمیٹی کا اجلاس ہوا جس میں سابق جج اسلام آباد ہائی کورٹ شوکت عزیز صدیقی کا بطور وکیل لائسنس بحال کیا گیا۔

ذرائع کے مطابق پاکستان بار کونسل نے اپنے فیصلے میں لکھا کہ شوکت صدیقی کو بدعنوانی یا اخلاقی گراوٹ جیسے الزامات کی بنیاد پر چونکہ سپریم جوڈیشل کونسل نے برطرف نہیں کیا تو اس وجہ سے یہ کمیٹی فوری طور پر ان کے لائسنس کو بحال کرتی ہے۔

پاکستان بار کونسل کے فیصلے کے بعد اب جسٹس شوکت عزیز صدیقی سپریم کورٹ میں بطور وکیل پیش ہو سکیں گے۔ جسٹس شوکت عزیز صدیقی کی وکالت کا لائسنس سپریم جوڈیشل کونسل نے ایک ریفرنس کے باعث معطل کردیا تھا۔

ریفرنس میں الزام عائد کیا گیا تھا کہ جسٹس شوکت عزیز نے اختیارات سے تجاوز کرتے ہوئے سرکاری گھر پر تزین و آرائش کے لیے لاکھوں روپے خرچ کیے ہیں۔

اس سے قبل سپریم جوڈیشل کونسل نے جسٹس شوکت عزیز صدیقی کو راولپنڈی بار سے خطاب کے دوران قومی سلامتی کے اداروں پر تنقید کو بے جا اور بے بنیاد قرار دیتے ہوئے نوٹس بھی جاری کیا تھا۔
 

Advertisement
روزنامہ دنیا ایپ انسٹال کریں