نیوز الرٹ
  • بریکنگ :- 24 جنوری سےپاکستان بھرمیں کسان احتجاج ہوگا،سعیدغنی
  • بریکنگ :- کسان مارچ ملیرسےنکل کرمزارقائدکےقریب خدادکالونی پہنچےگا،سعیدغنی
  • بریکنگ :- کسان حکومت کی نااہلی کیخلاف احتجاج کریں گے،سعیدغنی
  • بریکنگ :- حکومت کی نااہلی سےمہنگائی عروج پرہے،وزیراطلاعات سندھ
  • بریکنگ :- وفاقی حکومت میں بیٹھے 300ترجمان کہتےہیں مہنگائی نہیں ہے،سعیدغنی
  • بریکنگ :- وفاقی حکومت لوگوں کی توجہ بدلنےمیں ماہرہے،سعیدغنی
  • بریکنگ :- ملک میں صدارتی نظام آنےکاکوئی راستہ موجودنہیں،سعیدغنی
Coronavirus Updates

ناجائز منافع خوری میں ملوث عناصر کیخلاف قانونی کارروائی کی جائے: وزیراعظم

پاکستان

اسلام آباد: (دنیا نیوز) وزیر اعظم عمران خان نے ہدایت کرتے ہوئے کہا ہے کہ ذخیرہ اندوزی اور ناجائز منافع خوری میں ملوث عناصر کے خلاف قانونی کارروائی کی جائے۔

وزیراعظم عمران خان کی زیر صدارت ملک میں کھاد کے موجودہ سٹاک اور قیمتوں کے حوالےسے جائزہ اجلاس ہوا، اجلاس میں وفاقی وزراء اسد عمر، مخدوم خسرو بختیار، سیّد فخر امام، مشیر خزانہ شوکت ترین اور سینئر افسران نے شرکت کی۔ ۔

اجلاس کے دوران وزیراعظم کو بریفنگ دی گئی کہ کھاد کی فی بوری قیمت فروخت میں اوسطاً 400 روپے کی کمی آئی ہے، کھاد کی سپلائی کو مانیٹر کرنے کے لیے آن لائن پورٹل بنا لی گئی ہے، آن لائن پورٹل سے صوبے اور تمام ضلعی انتظامیہ کھاد کی نقل و حرکت اور اسٹاک کو مانیٹر کر سکتے ہیں۔

چیف سیکرٹری پنجاب نے کہا کہ 13 نومبر سے اب تک کھاد کی ذخیرہ اندوزی کو روکنے کے لیے متعدد اقدامات لئے گئے ہیں، پنجاب 347 ایف آئی آر، 244 گرفتاریاں، 21٫111 انسپیکشنز، 480 گودام سیل اور 2.79 کروڑ کے جرمانے لگائے جا چکے۔

بریفنگ کے دوران مزید بتایا گیا کہ ہر ضلع میں کنٹرول روم بنائے گئے ہیں جہاں کھاد کی کمی، ذخیرہ اندوزی اور منافع خوری سے متعلق شکایات درج کروائی جا سکتی ہیں، صوبوں کے مابین سرحدوں پر اسمگلنگ روکنے کے لیے چیک پوسٹیں قائم کر دی گئیں۔

اس موقع پر وزیراعظم عمران خان نے ہدایت کرتے ہوئے کہا کہ ذخیرہ اندوزی اور ناجائز منافع خوری میں ملوث عناصر کے خلاف قانونی کارروائی کی جائے۔ 

Advertisement
روزنامہ دنیا ایپ انسٹال کریں