نیوز الرٹ
  • بریکنگ :- احتساب کا ڈرامہ اب ختم ہوچکا ہے،مولانا فضل الرحمان
  • بریکنگ :- پی ڈی ایم نے آپ کااحتساب کرکےکیفرکردارتک پہنچانا ہے،مولانافضل الرحمان
  • بریکنگ :- غریب عوام پرمہنگائی کے پہاڑتوڑدیئے ہیں،مولانا فضل الرحمان
  • بریکنگ :- روزانہ کی بنیاد پرقیمتوں میں اضافہ ہوتاہے،مولانا فضل الرحمان
  • بریکنگ :- معاشی صورتحال خراب ہوتوریاست اپناوجودبرقرارنہیں رکھ سکتی،فضل الرحمان
  • بریکنگ :- دنیامیں ایک بارپھرمعیشت کی جنگ شروع ہوچکی ہے،مولانا فضل الرحمان
  • بریکنگ :- فیصل آباد:اداروں کومضبوط دیکھنا چاہتے ہیں،مولانا فضل الرحمان
  • بریکنگ :- ہرایک کواپنے دائرےمیں رہ کرکام کرنا ہوگا،مولانا فضل الرحمان
  • بریکنگ :- فیصل آباد:ملکی معیشت کوتباہ کردیا گیا،مولانا فضل الرحمان
  • بریکنگ :- پی ڈی ایم کا پلیٹ فارم اقتدارکےحصول کیلئےنہیں بنایا گیا، فضل الرحمان
  • بریکنگ :- چین نے پاکستان میں 70ارب ڈالرکی سرمایہ کی،مولانا فضل الرحمان
  • بریکنگ :- فیصل آباد:موجودہ حکمران کشمیرفروش ہیں،مولانا فضل الرحمان
  • بریکنگ :- ہم اقتدارمیں تھےتوکشمیرکا سودا نہیں ہوا،مولانا فضل الرحمان
  • بریکنگ :- ایک کروڑنوکریوں کا نعرہ لگاکرقوم کوبیوقوف بنایا گیا،مولانافضل الرحمان
  • بریکنگ :- نوکریاں دینے کے بجائے 30لاکھ ملازمین کوفارغ کردیا،فضل الرحمان
  • بریکنگ :- موجودہ حکمرانوں نےچین کوبھی ناراض کردیا،مولانا فضل الرحمان
Coronavirus Updates

کراچی کے شہریوں کے لیے لگائے جانے والے آر او پلانٹس بند، مشینری بھی غائب

پاکستان

کراچی: (دنیا نیوز) سندھ حکومت کی جانب سے کراچی کے شہریوں کو صاف پانی کی فراہمی کے لیے مختلف علاقوں میں لگائے جانے والے آر او پلانٹس کی ناکامی کے بعد ان کی بندش تو زبان زد عام ہے لیکن اب کیماڑی کے آر او پلانٹ پر نصب کروڑوں روپے کی مشینری ہی غائب ہوچکی۔

روٹی، کپڑا اور مکان کا نعرہ لگانے والوں کی پانی دینے کی کوشش کراچی کے شہریوں کو کوئی آسانی فراہم نہ کرسکی۔ قصہ ہے 2012 اور 13 کا کہ جب سندھ حکومت نے کیماڑی، منوڑہ اور لیاری سمیت کراچی کے مختلف علاقوں میں آراو پلانٹس لگائے لیکن زیادہ عرصہ نہ چلے اور کاردگی کم ہوتے ہوتے پلانٹس بند ہی ہوگئے۔

عدالتوں نے نوٹس لیا، واٹر کمیشن نے اظہار برہمی کیا، ہونا تو یہ چاہیے تھا کہ پلانٹس چلانے کے لیے انتظامات کیے جاتے ہوا یہ کہ کیماڑی پر نصب
آر او پلانٹس کی ساری کی ساری مشینری ہی غائب ہوگئی۔ بڑے ہال کے صرف درودیوار ہی باقی ہیں، نشئیوں کے ڈیرے لگے ہیں۔ گندگی اور ہرسو اٹی مٹی بتا رہی ہے کہ کوئی زمہ دار زمانوں سے یہاں نہیں آیا۔

صرف ایک کیماڑی کا نہیں، منوڑہ اور لیاری سمیت مختلف علاقوں میں لگائے گئے آر او پلانٹس بند ہیں۔ کیا عوام، کیا اپوزیشن کی سیاسی جماعتیں اور کیا ہی عدالتیں سب ہی نے سب کچھ کہ دیا لیکن سندھ حکومت نے ان پلانٹس کی بحالی کا کام اب تک شروع نہ کرایا۔
 

Advertisement
روزنامہ دنیا ایپ انسٹال کریں