نیوز الرٹ
  • بریکنگ :- آرمی چیف کا کورہیڈکوارٹرزلاہور کا دورہ، آئی ایس پی آر
  • بریکنگ :- آرمی چیف کو فارمیشن کے مختلف امورپر بریفنگ،آئی ایس پی آر
  • بریکنگ :- آرمی چیف کامختلف جامعات کےوائس چانسلرز،اساتذہ وطلباسےتبادلہ خیال
  • بریکنگ :- غلط اطلاعات سےریاستی یکجہتی کوخطرات لاحق ہیں،آرمی چیف
  • بریکنگ :- ڈس انفارمیشن مہم کےسدباب کیلئےمل کرکوششیں کرنا ہوں گی،آرمی چیف
  • بریکنگ :- آرمی چیف نےطلبا کوبامقصدشہری بنانےمیں تعلیمی اداروں کےکردارکوسراہا
  • بریکنگ :- تعلیم،صحت،ماحولیات میں ہیومن ڈیویلپمنٹ کی ضرورت ہے،آرمی چیف
  • بریکنگ :- اس موقع پرکورکمانڈرلیفٹیننٹ جنرل محمدعبدالعزیزبھی موجودتھے
Coronavirus Updates

سابق جج اسلام آباد ہائیکورٹ شوکت عزیز صدیقی کا بطور وکیل لائسنس بحال

پاکستان

اسلام آباد: (دنیا نیوز) جسٹس قاضی فائز عیسیٰ کی زیرِ صدارت انرولمنٹ کمیٹی کا اجلاس ہوا جس میں سابق جج اسلام آباد ہائی کورٹ شوکت عزیز صدیقی کا بطور وکیل لائسنس بحال کیا گیا۔

ذرائع کے مطابق پاکستان بار کونسل نے اپنے فیصلے میں لکھا کہ شوکت صدیقی کو بدعنوانی یا اخلاقی گراوٹ جیسے الزامات کی بنیاد پر چونکہ سپریم جوڈیشل کونسل نے برطرف نہیں کیا تو اس وجہ سے یہ کمیٹی فوری طور پر ان کے لائسنس کو بحال کرتی ہے۔

پاکستان بار کونسل کے فیصلے کے بعد اب جسٹس شوکت عزیز صدیقی سپریم کورٹ میں بطور وکیل پیش ہو سکیں گے۔ جسٹس شوکت عزیز صدیقی کی وکالت کا لائسنس سپریم جوڈیشل کونسل نے ایک ریفرنس کے باعث معطل کردیا تھا۔

ریفرنس میں الزام عائد کیا گیا تھا کہ جسٹس شوکت عزیز نے اختیارات سے تجاوز کرتے ہوئے سرکاری گھر پر تزین و آرائش کے لیے لاکھوں روپے خرچ کیے ہیں۔

اس سے قبل سپریم جوڈیشل کونسل نے جسٹس شوکت عزیز صدیقی کو راولپنڈی بار سے خطاب کے دوران قومی سلامتی کے اداروں پر تنقید کو بے جا اور بے بنیاد قرار دیتے ہوئے نوٹس بھی جاری کیا تھا۔
 

Advertisement
روزنامہ دنیا ایپ انسٹال کریں