نیوز الرٹ
  • بریکنگ :- سابق چیف جج گلگت بلتستان راناشمیم پرعائدفردجرم کی چارج شیٹ
  • بریکنگ :- راناشمیم نےزیرالتواکیس پراثراندازہونےکی کوشش کی،چارج شیٹ
  • بریکنگ :- راناشمیم نے 10 نومبر 2021 کوبرطانیہ میں بیان حلفی نوٹرائزڈکرایا،چارج شیٹ
  • بریکنگ :- راناشمیم نےدستاویزکولیک،عدلیہ کواسکینڈلائزکرنےکی کوشش کی،چارج شیٹ
  • بریکنگ :- پیپرعدالت پہنچاتوکوریئرسروس کےلفافےمیں تھا،چارج شیٹ
  • بریکنگ :- یہ عمل آپ کےاس بیان کوجھٹلاتاہےکہ وہ خودسیل کیاتھا،چارج شیٹ
  • بریکنگ :- راناشمیم کےبقول بیان حلفی خفیہ تھاتولیک ہونےپرکوئی کارروائی نہیں کی،چارج شیٹ
Coronavirus Updates

سعودی عرب نے عمرہ زائرین کے قیام کی مدت 10 کے بجائے 30دن کردی

دنیا

ریاض:(ویب ڈیسک)سعودی عرب کی جانب سے اہل اسلام کو خوشخبری سناتے ہوئے کہا گیا ہے کہ عمرے پر آئے زائرین اب مملکت میں 10 کے بجائے 30دن تک قیام کرسکیں گے جس کا اطلاق سعودی حکومت نے فوری طور پر کردیا ہے۔

سعودی عرب کے سرکاری میڈیا کی جانب سے جاری کردہ بیان کے مطابق یکم نومبر 2020 کو جب سعودی عرب نے عمرے کی اجازت دی تو اس وقت معتمرین کو صرف 10 یوم قیام کی اجازت تھی جسے اب 30 دن کردیا گیا ہے اور اس کا اطلاق فوری طور پر ہوگا۔

واضح رہے کہ کورونا وائرس کی وجہ سے پہلی بار مارچ 2020 میں پابندیاں عائد کی تھیں تاہم اب بتدریج تمام پابندیاں ختم کی جارہی ہیں۔

سعودی سرکاری میڈیا کے مطابق مملکت نے صرف 4 ویکسینز کے استعمال کی منظوری دی ہے جن میں موڈرنا، فائزر، بائیو این ٹیک، جانسن اینڈ جانسن اور آکسفورڈ کی ایسٹرازینیکا شامل ہیں۔

 گزشتہ دنوں سعودی حکام نے اعلان کیا تھا کہ اب عمرے کیلئے آنے والے افراد کو کوئی قرنطینہ نہیں کرنا پڑے گا تاہم ضروری ہے کہ انہوں نے سعودی عرب میں منظور کیے جانے والے کورونا ویکسین کی کم سے کم دو ڈوز لگوا لیے ہوں۔

سعودی حکام کا کہنا تھا کہ سفری پابندی کی فہرست میں موجود ممالک کے علاوہ دنیا بھر کے شہری براہ راست عمرے کیلئے آسکتے ہیں تاہم ضروری ہے کہ ان کی عمر 18 سال یا اس سے زائد ہو جبکہ سعودی عرب میں مقیم افراد کیلئے عمر کی حد 12 سال ہے۔
 

Advertisement
روزنامہ دنیا ایپ انسٹال کریں