نیوز الرٹ
  • بریکنگ :- 24 گھنٹےمیں کوروناکےمزید 2928 کیس رپورٹ،این سی اوسی
  • بریکنگ :- ملک بھرمیں کورونامریضوں کی تعداد 12 لاکھ 18 ہزار 749 ہوگئی
  • بریکنگ :- ملک میں کوروناکےایکٹوکیسزکی تعداد 65 ہزار 725 ،این سی اوسی
  • بریکنگ :- ملک بھرمیں 24 گھنٹےکےدوران کوروناسےمزید 68 اموات
  • بریکنگ :- ملک بھرمیں کوروناسےجاں بحق افرادکی تعداد 27 ہزار 72 ہوگئی
  • بریکنگ :- 24 گھنٹےمیں کوروناکے 13 ہزار 716 مریض صحت یاب،این سی اوسی
  • بریکنگ :- کوروناسےصحت یاب افرادکی مجموعی تعداد 11 لاکھ 25 ہزار 952 ہوگئی
  • بریکنگ :- 24 گھنٹےکےدوران 57 ہزار 626 کوروناٹیسٹ کیےگئے،این سی اوسی
  • بریکنگ :- ملک بھرمیں ایک کروڑ 87 لاکھ 40 ہزار 356 کوروناٹیسٹ کیےجاچکے
  • بریکنگ :- پنجاب 4 لاکھ 19 ہزار 423،سندھ میں 4 لاکھ 48 ہزار 658 کیسز،این سی اوسی
  • بریکنگ :- خیبرپختونخواایک لاکھ 70 ہزار 391،بلوچستان میں 32 ہزار 707 کیس رپورٹ
  • بریکنگ :- اسلام آبادایک لاکھ 3 ہزار 720،گلگت بلتستان میں 10 ہزار 222 کیسز
  • بریکنگ :- آزادکشمیرمیں کورونامریضوں کی تعداد 33 ہزار 628 ہوگئی،این سی اوسی
  • بریکنگ :- ملک میں کورونامثبت کیسزکی شرح 5.08 فیصدرہی،این سی اوسی
  • بریکنگ :- کوروناسےمتاثر 4960 مریضوں کی حالت تشویشناک،این سی اوسی
Coronavirus Updates

مقبوضہ کشمیر :بھارت مخالف افراد کیلئے ملازمت پر پابندی

مقبوضہ کشمیر :بھارت مخالف افراد کیلئے ملازمت پر پابندی

دنیا اخبار

پتھرائومیں ملوث افراد کو ملازمت ملے گی اورنہ ہی پاسپورٹ:مراسلہ ، پارلیمنٹ کی کمیٹی دورہ کریگی،5اور 15کو ہڑتال اور سول کرفیو ہوگا:گیلانی

سری نگر(نیوز ایجنسیاں)مقبوضہ کشمیر کے بھارت مخالف افراد کے لیے سرکاری ملازمت اور پاسپورٹ کی فراہمی پر پابندی لگا دی گئی ۔بھارتی حکومت نے اعلان کیا ہے کہ مقبوضہ کشمیر میں حکومت مخالف سرگرمیوں اور فورسز اہل کاروں پر پتھرا ئوکرنے والے افراد کو پاسپورٹ دیے جائیں گے اور نہ ہی سرکاری ملازمت ۔ امریکی نشریاتی ادارے کی رپورٹ کے مطابق کریمنل انویسٹی گیشن (سی آئی ڈی)، سپیشل برانچ کی جانب سے تمام دفاتر کو مراسلہ جاری کیا گیا ہے ۔ نقصِ امن کا باعث بننے والے افراد کو پاسپورٹس کی سکیورٹی کلیئرنس نہ دی جائے ۔سرکاری نوکری کے حصول یا کسی بھی سرکاری سکیم کے لیے ایسے افراد کی دستاویزات کی بھی تصدیق نہ کی جائے جو ملک دشمن سرگرمیوں میں ملوث ہوں۔نئے حکم نامے کے تحت تمام افراد کو پابند کیا گیا ہے کہ وہ یہ بتائیں کہ ان کا یا ان کے خاندان کے کسی فرد کا سیاسی جماعت یا گروہ سے تعلق تو نہیں ہے یا ان کے کسی غیر ملکی تنظیم یا کسی کالعدم جماعت سے کوئی تعلق تو نہیں۔ایسے افراد کی نشان دہی کے لیے پولیس ریکارڈ میں موجود سی سی ٹی وی فوٹیجز، تصاویر، ویڈیوز اور آڈیو کلپس کی مدد لی جائے گی۔ادھربھارتی پارلیمنٹ کی سٹینڈنگ کمیٹی کی ایک ٹیم 16سے 22 اگست تک غیر قانونی طورپر بھارت کے زیرتسلط جموں وکشمیرکا دورہ کرے گی۔ کانگریس کے رہنما آنند شرما کی قیادت میں ٹیم وادی کشمیر ، جموں اور لداخ میں سول سوسائٹی، سیاسی رہنماؤں اور صنعت وتجارت کے نمائندوں سے بات چیت کرے گی۔دریں اثنا قائدتحریک آزادی جموں وکشمیر سید علی گیلانی نے مقبوضہ کشمیر پر جبر و تشدد اور بندوق کے بل پر غیر قانونی قبضے کو مسترد کر تے ہوئے اعلان کیا ہے کہ 5 اگست اور 15 اگست کو ریاست بھرمیں مکمل ہڑتال اورسول کرفیو ہوگا۔

روزنامہ دنیا ایپ انسٹال کریں
Advertisement