اداریہ
WhatsApp: 0344 4450229

کتابِ مقدس کی بے حرمتی

سویڈن کے بعد نیدر لینڈ میں بھی قرآن پاک کی بے حرمتی کا دلخراش واقعہ پیش آیا ہے۔ وہاں ایک انتہا پسند نے پولیس کی موجودگی میں یہ گھنائونا کام کیا اور انتظامیہ خاموش تماشائی بنی رہی۔ ایک وڈیو میں انتہا پسند شخص نے دعویٰ کیا ہے کہ اُس نے یہ مذموم فعل مقامی انتظامیہ کی اجازت سے انجام دیا۔ آزادیٔ اظہارِ رائے کی آڑ میں کسی مذہب مخالف عمل کی اجازت دینا مکمل طور پر ناقابلِ قبول ہے۔ اسلامو فوبیا پر مبنی اس طرح کے اشتعال انگیز واقعات سے دنیا بھر کے مسلمانوں کے جذبات شدید مجروح ہوتے ہیں۔ پاکستان‘ ترکیہ‘ خلیجی ممالک اور اسلامی تعاون تنظیم نے بھی اس قبیح فعل کی شدید الفاظ میں مذمت کی ہے۔ یہ واقعہ اس حقیقت کی ایک اور مثال ہے کہ یورپ میں اسلامو فوبیا‘ نسل پرستی اور امتیازی سلوک خطرناک حدوں کو چھو رہاہے۔ اسلام ایک پُر امن مذہب ہے جو تمام مذاہب کی تعلیمات اور عقائد کے احترام کا درس دیتا ہے جبکہ آزادیٔ اظہارِ رائے کی آڑ میں کسی کو بھی دیگر مذاہب یا ان کے مقدس شعائر کی بے حرمتی کی اجازت نہیں دی جا سکتی۔ اس قسم کے ناقابلِ قبول واقعات سے دلوں میں ایک دوسرے کیلئے نفرتیں ہی پیدا ہوسکتی ہیں جو دنیا کے امن کے لیے خطرات کا باعث ہیں۔ ضروری ہے کہ مذکورہ دونوں ممالک کی حکومتیں اس معاملے میں اپنی ذمہ داریوں کو پہچانیں اور اس قسم کے گھناؤنے اور اشتعال انگیز فعل میں ملوث عناصر کے خلاف فوری ایکشن لیںاور یقینی بنائیں کہ آئندہ ایسے مذموم واقعات کا تدارک ہو سکے۔

روزنامہ دنیا ایپ انسٹال کریں
Advertisement