نیوز الرٹ
  • بریکنگ :- 24 گھنٹےمیں کوروناکےمزید 3582 کیس رپورٹ،این سی اوسی
  • بریکنگ :- 24 گھنٹےکےدوران 49 ہزار 798 کوروناٹیسٹ کیےگئے
  • بریکنگ :- ملک بھرمیں ایک کروڑ 61 لاکھ 58 ہزار 330 کوروناٹیسٹ کیےجاچکے
  • بریکنگ :- کوروناسےمتاثر 3398 مریضوں کی حالت تشویشناک،این سی اوسی
  • بریکنگ :- پنجاب 3 لاکھ 58 ہزار 387،سندھ میں 3 لاکھ 87 ہزار 261 کیسز
  • بریکنگ :- خیبرپختونخواایک لاکھ 45 ہزار 306،بلوچستان میں 30 ہزار 627 کیس رپورٹ
  • بریکنگ :- اسلام آباد 88 ہزار 344،گلگت بلتستان میں 8 ہزار 318 کیسز
  • بریکنگ :- آزادکشمیرمیں کورونامریضوں کی تعداد 25 ہزار 34 ہوگئی،این سی اوسی
  • بریکنگ :- ملک میں کورونامثبت کیسزکی شرح 7.19 فیصدرہی،این سی اوسی
  • بریکنگ :- ملک بھرمیں کورونامریضوں کی تعداد 10 لاکھ 43 ہزار 277 ہوگئی
  • بریکنگ :- ملک میں کوروناکےایکٹوکیسزکی تعداد 75 ہزار 373 ہے
  • بریکنگ :- ملک بھرمیں 24 گھنٹےکےدوران کوروناسےمزید 67 اموات
  • بریکنگ :- ملک بھرمیں کوروناسےجاں بحق افرادکی تعداد 23 ہزار 529 ہوگئی
  • بریکنگ :- 24 گھنٹےمیں کوروناکے 1355 مریض صحت یاب،این سی اوسی
  • بریکنگ :- کوروناسےصحت یاب افرادکی مجموعی تعداد 9 لاکھ 44 ہزار 375 ہوگئی
Coronavirus Updates

این ایف سی ایوارڈ میں اضافہ، صوبوں کیلئے 3411 ارب روپے مختص

این ایف سی ایوارڈ میں اضافہ، صوبوں کیلئے 3411 ارب روپے مختص

دنیا اخبار

پنجاب کو 369 سندھ 167.8 خیبر پختونخوا115.8 اور بلوچستان کو حصے سے 55.6 ارب روپے زائد ملیں گے

اسلام آباد (رپورٹنگ ٹیم )وفاقی حکومت نے چاروں صوبوں کے این ایف سی ایوارڈ کے تحت حصہ نظرثانی شدہ تخمینہ2704.1ارب روپے سے بڑھاکر3411ارب روپے مختص کر دیا ہے ۔ صوبوں کے حصے میں707ارب روپے کا اضافہ کرنے کا فیصلہ کیا گیا ۔ وفاقی بجٹ دستاویز کے تخمینہ کے مطابق پنجاب کا حصہ1322ارب روپے سے بڑھاکر 1691ارب روپے کر دیا گیا ، پنجاب کو حصے سے 369 ارب روپے زائد ملیں گے ۔سندھ کا حصہ680.4ارب سے بڑھا کر848.2ارب کر دیا گیا، اسے 167.8ارب روپے زیادہ ملیں گے ۔خیبر پختونخوا کو حصہ 443.3ارب روپے سے بڑھاکر559.2ارب کرنے سے 115.8ارب زائد اور بلوچستان کا حصہ 257.6ارب روپے سے بڑھاکر313.2ارب کرنے سے اسے 55.6ارب روپے اضافی ملیں گے ۔ صوبوں کو ان حصوں کی ادائیگی کیلئے انکم ٹیکس سے 1232ارب روپے ، کیپیٹل ویلیو ٹیکس32کروڑ روپے ، جنرل سیلز ٹیکس سے 1435ارب روپے ، فیڈرل ایکسائز سے 197.2ارب روپے ، کسٹمز ڈیوٹی سے 444.4ارب روپے فراہم کئے جائیں گے ۔ گیس ڈویلپمنٹ سرچارج سے 16.4ارب روپے ، تیل اور گیس پر رائلٹی سے 51ارب ، خام تیل کی پیداوار پر رائلٹی سے 21.6ارب روپے ، قدرتی گیس پر رائلٹی سے 11.7ارب روپے فراہم کئے جائیں گے ۔

روزنامہ دنیا ایپ انسٹال کریں
Advertisement