نیوز الرٹ
  • بریکنگ :- افغانستان کوعالمی امدادکی ضرورت ہے،گلبدین حکمت یار
  • بریکنگ :- کوئی ملک امدادبغیرشرائط کےنہیں دیتا،گلبدین حکمت یار
  • بریکنگ :- امریکاکارویہ امتیازی ہے،گلبدین حکمت یار
  • بریکنگ :- امریکاکےآلہ کارافغانستان میں اب بھی جنگ چاہتےہیں،گلبدین حکمت یار
  • بریکنگ :- میں سمجھتاہوں ایسےلوگوں سےمفاہمت نہیں کرنی چاہیے،گلبدین حکمت یار
  • بریکنگ :- پاکستان نےافغان مہاجرین کوپناہ دی،گلبدین حکمت یار
  • بریکنگ :- ماضی کی افغان حکومت میں پاکستان پرالزامات لگائےگئے،گلبدین حکمت یار
  • بریکنگ :- پنج شیرکےحوالےسےبھی پاکستان پرالزام لگایاگیا،گلبدین حکمت یار
  • بریکنگ :- افغانستان 40 سال کی جنگ میں تباہ ہوچکاہے،گلبدین حکمت یار
  • بریکنگ :- افغانستان سےپاکستان کےخلاف پروپیگنڈاہوتارہاہے،گلبدین حکمت یار
  • بریکنگ :- سی آئی اےکاچیف افغانستان آتاہےتوشورنہیں مچایاجاتا،گلبدین حکمت یار
  • بریکنگ :- پاکستانی وفدافغانستان آتاہےتودنیامیں شورمچ جاتاہے،گلبدین حکمت یار
  • بریکنگ :- غیرملکی طاقتوں نےافغانستان میں غیرنمائندہ حکومتیں مسلط کیں،گلبدین حکمت یار
  • بریکنگ :- سابق صدراشرف غنی پیسےلےکرملک سےفرارہوئے،گلبدین حکمت یار
Coronavirus Updates

نورمقدم کوبے وفائی پرقتل کیا،ملزم ظاہرجعفرکااعتراف جرم

نورمقدم کوبے وفائی پرقتل کیا،ملزم ظاہرجعفرکااعتراف جرم

دنیا اخبار

ملزم کے فنگرپرنٹس حاصل،موبائل فون برآمد،وقوعہ کے دن والدسے 5باررابطہ ، والدین اور2ملازمین کوجیل بھیج دیاگیا، ذاکر جعفر اورانکی اہلیہ کی ضمانت کیلئے درخواست

اسلام آباد (دنیا نیوز،اپنے نامہ نگارسے ،نیوایجنسیاں)نور مقدم قتل کیس میں اہم پیشرفت سامنے آئی ہے ، ذرائع کے مطابق ملزم ظاہر جعفر نے جرم کا اعتراف کرتے ہوئے خاتون کو قتل کرنے کی وجوہات سے پولیس کو آگاہ کر دیا ہے ۔دنیا نیوز کے ذرائع کے مطابق قاتل ظاہر جعفر نے وجہ قتل بتاتے ہوئے کہا ہے کہ نور مقدم میرے ساتھ بے وفائی کر رہی تھی جس کا مجھے دکھ تھا، علم ہونے پر اسے روکا، مگر وہ نہیں مانی۔ذرائع کے مطابق ملزم ظاہر جعفرنے قتل کا اعتراف کرتے ہوئے کہا ہے کہ بے وفائی میرے لئے ناقابل برداشت تھی، دھوکا دینے پر نور مقدم کو قتل کیا۔ذرائع کا کہنا ہے کہ ملزم نے پانچ روزہ جسمانی ریمانڈ کے بعد اعتراف جرم میں وجہ قتل بتائی۔ذرائع کے مطابق پولیس نے ملزم ظاہر جعفر کے برطانیہ اور امریکا میں کریمنل ریکارڈ کے لیے فنگر پرنٹس لے کردونوں سفارت خانوں کو بھجوادئیے ہیں جبکہ ملزم کا موبائل فون برآمد کر لیا ہے ،ذرائع کے مطابق موبائل ڈیٹا سے انکشاف ہوا کہ نور مقدم کے قتل کے روز ملزم ظاہر جعفر نے اپنے والد سے پانچ بار رابطہ کیا، ملزم نے 19جولائی کو اپنے والدسے 4باربات کی جس کادورانیہ32منٹ بنتاہے جبکہ وقوعہ کے دن 20 جولائی کو ملزم کا اپنے والد سے 5 بار رابطہ ہواجس کا دورانیہ31 منٹ بنتاہے ،ذرائع کے مطابق ملزم ظاہر جعفر انٹرنیشنل کالج کنسلٹنٹ نامی فرم کا مالک تھا،کمپنی اسکے والدنے بناکردی تھی جسے وہ2017سے چلارہاتھا، ملزم طلبہ کو ہنگری تعلیم کے لیے بھجواتا تھا۔ادھر جوڈیشل مجسٹریٹ شعیب اختر نے مرکزی ملزم ظاہر جعفر کے والدین اور2 ملازمین کو جوڈیشل کردیا،گزشتہ روزپولیس نے ملزم کے والدین ذاکر جعفر اورعصمت آدم کے علاوہ دوملازمین افتخار اور جمیل کو سخت سکیورٹی میں عدالت میں پیش کیااور بتایاکہ چاروں ملزمان سے تفتیش مکمل کرلی ہے استدعا ہے کہ چاروں کو جوڈیشل کردیاجائے جس پرعدالت نے چاروں کو جوڈیشل کرتے ہوئے 10 اگست کو دوبارہ پیش کرنے کی ہدایت کردی،اس موقع پر وکیل صفائی نے ملزمان کو مقدمہ سے ڈسچارج کرنے کی استدعاکی ، عدالت کی ہدایت پر وکیل صفائی کی ذاکر جعفر اورانکی اہلیہ سے ملاقات کرائی گئی ،مزیدبرآں مرکزی ملزم کے والدین نے ایڈیشنل ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج محمد سہیل کی عدالت میں ضمانت بعد از گرفتاری کی درخواستیں دائر کردی ہیں جس پر عدالت نے پولیس سے ریکارڈاور جواب طلب کرتے ہوئے فریقین کو30جولائی کانوٹس جاری کردیا ہے ۔

روزنامہ دنیا ایپ انسٹال کریں
Advertisement