پی ٹی آئی کیساتھ تحریک چلا نے جارہے ہیں؟دیکھو اور انتظار کرو:فضل الرحمٰن

پی ٹی آئی کیساتھ تحریک چلا نے جارہے ہیں؟دیکھو اور انتظار کرو:فضل الرحمٰن

اسلام آباد (اپنے رپورٹرسے ، نیوز ایجنسیاں) جمعیت علما اسلام کے سربراہ مولانا فضل الرحمن سے صحافی نے سوال کیا کہ کیا آپ پی ٹی آئی کیساتھ تحریک چلانے جارہے ہیں ؟ جس پر انہوں نے کہا دیکھو اور انتظار کر و ۔

 ہمارے ہم سفروں نے اصول تبدیل کیا اور اقتدار میں بیٹھ گئے ہم اصول پر کھڑے ہیں ہم سرنڈر نہیں ہوں گے جو قوتیں ایسا کرتی ہیں انہیں عوام کے سامنے سرنڈر کرنا پڑے گا ،جے یو آئی کی شوریٰ اور عاملہ عید کے بعد بیٹھے گی اور اگلی حکمت عملی دینگے ہم اسمبلیوں سے استعفے دینے والے نہیں،جنگ ہے تو جنگ سہی، ہم نتائج بھگتنے کو بھی تیار ہیں ۔جے یو آئی کے اجلاس کے بعد مرکزی رہنمائوں کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے انہوں نے کہا اڈیالہ جیل والے سے کوئی رابطہ نہیں جب تحریک انصاف سے کوئی پیشرفت ہوگی تو بتائیں گے بلوچستان اور خیبرپختونخوا میں دکھ سے بات کرتا ہوں کہ ریاستی رٹ ختم ہوچکی کوئی شخص اپنے ماحول میں محفوظ نہیں معلوم نہیں ہوسکا کہ واقعی دہشت گردی ہے خلاف جنگ لڑی جارہی ہے یا معدنی ذخائر پر قبضہ کیا جارہا ہے ہم ملکی دفاع اور فوج کو طاقت ور دیکھنا چاہتے ہیں ۔ہماری افغانستان کے حوالے سے محنتوں پر پانی کس کے کہنے پر پانی پھیرا جارہا ہے چمن کے لوگوں کے حالات سب کے سامنے ہیں، دہشتگردی ختم ہونے کی بجائے بڑھ گئی ہے آپ پارلیمان اور سیاسی جماعتوں کولونڈی بناکردیکھنا چاہتے ہیں ہمارے سے زیادہ ذمہ داری ان کے اوپر ہے ہم نے افغانستان کے ساتھ راستے کھولے آج اس پر پانی پھیرا جارہا ہے آج چمن کے کیا حالات ہیں۔ انھوں نے کہا کہ ہماری طرف سے پی ٹی آئی کیلئے سیز فائر ہے کوئی بیان کوئی ماضی کی بات ہم نہیں دہرا رہے مگر ابھی تک پی ٹی آئی کی طرف سے کوئی آدمی نہیں آیا ، ہر کوئی جیل سے باہر آکر کہتا ہے بانی چیئر مین نے یہ کہا یا توبانی چیئرمین خود باہر آئیں جیل سے ، اس کے بعد کچھ واضح ہوگاموجودہ صورت حال میں نئے الیکشن کے سوا کوئی حل نہیں ۔مولانا فضل الرحمن سے صحافی نے سوال کیا کہ کیا پی ڈی ایم طرز کا کوئی اور اتحاد بننے جارہا ہے ؟ اور یہ بھی پوچھا کہ کیا عید الاضحیٰ کے بعد پی ٹی آئی کیساتھ اتحاد کرکے کوئی تحریک چلانے جارہے ہیں؟ تو ان کا جواب تھا کہ وہ کہتے ہیں نا سی اینڈ ویٹ۔ویٹ اینڈ سی۔ دیکھو اور انتظار کرو۔ پوچھا گیا کہ مولانا یہ بتائیے کہ \'آپ\' کون ہیں؟ تو ان کا برجستہ جواب تھا کہ آپ میرا انداز تکلم ہے ، یہ آپ بھی جانتے ہیں آپ کون ہے ۔انہوں نے کہا کہ ہماری طرف سے پی ٹی آئی کیلئے سیز فائز ہے کوئی بیان کوئی ماضی کی بات ہم نہیں دہرا رہے مگر ابھی تک پی ٹی آئی کی طرف سے کوئی آدمی نہیں آیا، ہر کوئی جیل سے باہر آکر کہتا ہے خاں صاحب نے یہ کہا یا تو خود عمران صاحب خود باہر آئیں جیل سے ، اس کے بعد کچھ واضح ہوگا’موجودہ صورت حال میں نئے الیکشن کے سوا کوئی حل نہیں۔

روزنامہ دنیا ایپ انسٹال کریں