نیوز الرٹ
  • بریکنگ :- لاہور:خاتون شہری کی معاوضہ کی عدم ادائیگی کیخلاف درخواست
  • بریکنگ :- پنجاب حکومت کی تین روزمیں 3 کروڑ 8 لاکھ روپےاداکرنےکی یقین دہانی
  • بریکنگ :- باقی رقم کی ادائیگی کیلئے 15 جولائی تک مہلت دی جائے،پنجاب حکومت
  • بریکنگ :- خاتون سےزمین لےلی،اس پرسڑکیں بنالیں،مگررقم ادانہیں کی،عدالت
  • بریکنگ :- لوگ خوارہورہےہیں،15 جولائی کےبعدایک لاکھ روپےروزانہ جرمانہ ہوگا،عدالت
  • بریکنگ :- کئی سال پہلےاراضی حاصل کی مگرمعاوضہ نہیں دیاگیا،چیف جسٹس ہائیکورٹ
  • بریکنگ :- لاہور:یہ سرکارکاغریب لوگوں پرظلم ہے،چیف جسٹس قاسم خان
Coronavirus Updates

مسائل اور ان کا حل

خصوصی ایڈیشن

تحریر : مفتی محمد زبیر


سونا اور نقدی ملاکر ساڑھے باون تولہ چاندی کے بقدر ہونے پر زکوٰۃ واجب ہے سوال :(1)اسکی وضاحت فرمائیں کہ دویاتین تولے سونے پرکون سی زکوٰۃ ہوتی ہے اوردویاتین تولے سونے کے ساتھ ایک روپیہ بھی ہوتوکونسی زکوٰۃ ہوتی ہے؟ (عامربن غلام جیلانی )جواب:(1) دراصل سونے کی زکوٰۃ کانصاب ساڑھے سات تولہ ہے جسکی تفصیل یہ ہے کہ اگرکسی کے پاس صرف سوناہوسونے کے علاوہ چاندی ،نقدی یا مال تجارت کچھ نہ ہوتوایسی صورت میں ساڑھے سات تولہ سونے سے کم سونے پرزکوٰۃ واجب نہیں اورساڑھے سات تولہ سونایااس سے زیادہ سوناہونے کی صورت میں زکوٰۃ واجب ہے ، تاہم اگرسوناساڑھے سات تولے سے کم ہو اور اسکے ساتھ نقدی بھی ہوتوایسی صورت میں اب شرعاً سونے کے نصاب کااعتبارنہیں کیا جائیگا بلکہ اب ایسی صورت میں چاندی کانصاب معتبرہوگا جوکہ ساڑھے باون تولہ ہے لہٰذاایک دوتولہ سونے کے ساتھ ایک روپیہ بھی ہوتواسکی مجموعی قیمت چونکہ ساڑھے باون تولہ (چاندی کے نصاب کے بقدر)مالیت بنتی ہے اسلئے اس صورت میں چاندی کے نصاب کے اعتبارسے شرعاً زکوٰۃ واجب ہوگی۔(مزید تفصیل اور حوالہ جات کیلئے دیکھئے فتاویٰ عثمانی 2؍70)‘‘

عقیقہ کا سارا گوشت خود استعمال کرلینا

سوال :(2)بہت سارے علاقوں میں یہ رواج ہے کہ بچے کاعقیقہ جب لوگ کرتے ہیں تولڑکی کا1 اورلڑکے کے 2بکرے پکاتے ہیں اور صرف رشتہ داروں کوکھلاتے ہیں کسی پڑوسی یا محلہ کے کسی فردکویادوست جاننے والے کوقطعی شامل نہیں کرتے اورگھرسے باہربھی نہیں گوشت لے جایاجاتابلکہ ہڈیاں بھی گھرکے اندرہی گڑھا کھود کر دفن کی جاتی ہیں اوریہ کہ عقیقہ کابکراصرف اورصرف باپ کی کمائی سے ہی لیاجائے دادایاکوئی اور قیمت نہ دیا کرے ۔یہ سب باتیں کہاں تک درست ہیں وضاحت فرمائیں۔(شہناز بیگم، راولپنڈی)

جواب:(2) لڑکے کے عقیقہ میں 2اورلڑکی کے عقیقہ میں 1 بکراذبح کرناسنت ہے اور عقیقہ کے گوشت میں بھی قربانی کے گوشت کی طرح 3 حصے کرنامستحب ہے ایک گھروالوں کیلئے دوسرا رشتہ داروں کیلئے اور تیسرا فقراء و مساکین کیلئے، لیکن اگر کوئی سارا گوشت خود استعمال کر لے اور صرف رشتہ داروں کو کھلا دے تو اس میں بھی کوئی گناہ نہیں ہے تاہم سنت کے مطابق 3 حصے کرلینا بہتر ہے باقی ہڈیاں گھر میں دفنانے کی شرعاً کوئی اصل نہیں اس سے احتراز کیا جائے ۔

خواتین کا آفس میں کام کرنا اور مخلوط تقریب میں شرکت کرنا 

سوال :میں ایک آفس میں کام کرتی ہوں جہاں مرد حضرات بھی ہیں کیاہم سب اکٹھے بیٹھ کر کھانا وغیرہ کھاسکتے ہیں ؟یہ لازمی بتائیے گا اور آفس میں ہونے والی کسی پارٹی میں حدمیں رہ کر شرکت کی جاسکتی ہے؟(عائشہ جاوید ، فورٹ عباس)

جواب:عورتوں کانامحرم مردوں کے ساتھ اختلاط شرعاً جائز نہیں اس سے احترازلازم ہے تاہم مجبوری کی بناء پر عورت کو آفس کا کام کرنا پڑے تو حتی الامکان پردہ کا اہتمام کرنا چاہئے اور بلا ضرورت اختلاط سے احتراز کیا جائے نیز کھانے اور تقریب میں اختلاط کے بجائے خواتین کیلئے کھانے کاانتظام علیٰحدہ کیاجائے۔

دوا کے مفید یا مضر ہونے کا نظریہ

سوال :اگرمریض کایہ عقیدہ ہے کہ یہ دوامجھے فائدہ دیتی ہے یافلاں دوامجھے فائدہ نہیں دیتی کیایہ شرک کے زمرے میں آتاہے کہ نہیں؟(نام ظاہر نہ کریں )

جواب :اگریہ عقیدہ ہوکہ مؤثرحقیقی اللہ تعالیٰ ہے اوروہی شفاء دیتا ہے توکسی دوا کو اسباب کے درجے میں مفید یا مضر سمجھنے میں شرعاًکوئی حرج نہیں۔ واذامرضت فھویشفین (القرآن)

وظائف کا اہتمام اور نمازوں کو ترک کرنا

سوال:(2) ایک آدمی وظائف کرتاہے مگروہ نمازنہیں پڑھتااسکے متعلق کیاحکم ہے؟

جواب: ایسا شخص فاسق ہے فرائض وواجبات اداکرنا شرعاً لازم ہے ۔نیز اگر وظائف دنیاوی غرض کیلئے ہوں تو وہ باعث ثواب نہیں تاہم کسی دینی غرض یا فضیلت کیلئے پڑھتاہے تواسکی حیثیت ایک مستحب عمل کی ہے اور حقوق و فرائض کو چھوڑ کر صرف مستحبات پرعمل کرنا نجات کیلئے کافی نہیں ۔

 والدین کی زندگی میں فوت ہونے والی اولاد

 کی اولاد کا میراث میں حصہ نہیں 

سوال :اگر کسی شخص کی بیٹی کا انکی زندگی میں انتقال ہوجائے اور اس عورت کی ایک بیٹی ہو تو اس شخص اور اسکی بیوی یعنی عورت کی ماں کی وفات کے بعد اسکی نواسی یعنی اسکی بیٹی کی بیٹی کو والدین کی وراثت میں حصہ ملے گا ؟قرآن وحدیث میں کیا فرمان ہے ؟ (ہارون رشید ملتان )

جواب : والدین کی زندگی میں انتقال کرنے والے بیٹے یا بیٹی کا والدین کی میراث میں شرعاًحق نہیں لہٰذاصورت مسئولہ میں مذکورہ شخص اور اسکی بیوی کی زندگی میں وفات پاجانے والی بیٹی کی اولاد کا اس عورت کی والدہ کی میراث میں حصہ نہیں ہے فی صحیح مسلم (2؍34)الحقواالفرائض باھلھافمابقی فھولأولی رجل ذکر۔

 دعائے قنوت کے بغیر رکوع میں جانا 

سوال:دعائے قنوت کے بغیر اگر رکوع میں چلے گئے تو کیا کیا جائے ،دوبارہ  رکوع سے اٹھ کر دعائے قنوت پڑھنی چاہیے؟یا کیا کیا جائے ؟ (امین، حیدرآباد)

جواب:دعائے قنوت پڑھے بغیر اگر رکوع میں چلے گئے تو رکوع سے لوٹانہ جائے اور آخر میں سجدہ سہو کرلیا جائے۔

 

روزنامہ دنیا ایپ انسٹال کریں
Advertisement

بجٹ میں خواتین کو کیا ملا؟

دنیا کے کئی دیگر ممالک کی طرح پاکستان میں بھی خواتین امور مملکت چلانے میں اپنا حصہ حاصل کرنے میں کامیاب نہیں ہو سکیں۔سیاست میں انکی نمائندگی کبھی کم اور کبھی زیادہ ہوتی رہتی ہے۔اس اہم شعبے میں فعال اور متحرک کردار ادا کرنے میں ناکامی کے اثرات دیگر شعبوں پر بھی پڑتے ہیں ۔سماجی ،انتظامی اور معاشی شعبوں میں پیچھے رہ جانے کی بڑی وجہ بھی یہی ہے۔جینڈر گیپ رپورٹ کے مطابق ’’ کام کرنے کی عمر 6کروڑ خواتین میں سے صرف 22.6فیصد خواتین برسرروزگار ہیں‘‘۔ یعنی ہر پانچ میں سے صرف ایک خاتون کو روزگار دستیاب ہے۔اسی لئے تو جینڈر گیپ سے متعلق 156 ممالک کی فہرست میں ہم 153ویں نمبر پر ہیں۔ اس رینکنگ میں جنگ زدہ افغانستان ،یمن اور عراق ہم سے نیچے ہیں۔یہ رینکنگ تعلیم، صحت ، مجموعی عمر اور زندگی کے تحفظ کو مد نظر رکھتے ہوئے بنائی جاتی ہے یعنی ہم اپنی خواتین اور بچیوں کے جان و مال کے تحفظ سمیت دیگر بنیادی تقاضے بھی پورے نہیں کر سکے ۔

ماؤتھ واش کا صحیح استعمال

زندگی کے ہر شعبے میں توازن قائم رکھنا لازمی ہے،اپنے بچوں کو خوب پیار کیجئے لیکن ان کی تربیت ایسے نہ کیجئے کہ وہ میز سے پانی کاگلاس اٹھانا بھی بھول جائیں اور پیاس بجھانے کیلئے بھی کسی کو آواز دیں۔اسی طرح خوراک کے ساتھ ساتھ ادویات کے استعمال میں بھی توازن قائم کیا جائے۔ حیاتین یا طاقت کی ایک گولی استعمال کی جائے ، بعض خواتین جلدی صحت یاب ہونے کی خواہش میں بیک وقت ایک سے زیادہ گولیاں کھا لیتی ہیں ،ان کا فائدہ ہونے کی بجائے الٹا نقصان ہی ہوتا ہے۔ آج ہم صرف مائوتھ واش کے اضافی استعمال کے بارے میں کچھ بتائیں گے۔

آج کا پکوان، آلوؤں کی مزیدار سلاد

آلو ایک ایسی سبزی ہے جسے کئی طرح سے پکایا جا سکتا ہے۔جس کی ہر ڈش کا ذائقہ ہی الگ ہے۔ سالن کے علاوہ آلوئوں کی سلاد بھی کافی کلوریز کی حامل ہونے کی وجہ سے صحت کی ضامن بن سکتی ہے۔

ابوظہبی میں چوکوں اورچھکوں کی بہار قومی کرکٹرز اورغیرملکی ستاروں سے سجی ٹیمیں شاندار کھیل کا مظاہرہ کررہی ہیں

آئندہ میچز کا شیڈول13 جون: اسلام آباد یونائیٹڈ بمقابلہ لاہور قلندرز۔ ملتان سلطانز بمقابلہ پشاور زلمی۔14 جون: اسلام آباد یونائیٹڈ بمقابلہ کراچی کنگز۔15 جون: کوئٹہ گلیڈی ایٹرز بمقابلہ لاہورقلندرز، پشاور زلمی بمقابلہ کراچی کنگز۔16 جون: ملتان سلطانز بمقابلہ کوئٹہ گلیڈی ایٹرز۔17جون: اسلام آباد یونائیٹڈ بمقابلہ پشاور زلمی۔ کراچی کنگز بمقابلہ لاہور قلندرز۔ 18 جون: ملتان سلطانز بمقابلہ لاہور قلندرز۔19 جون: کوئٹہ گلیڈی ایٹرز بمقابلہ کراچی کنگز، ملتان سلطانز بمقابلہ اسلام آباد یونائیٹڈ۔20 جون: پریکٹس میچز۔21 جون: کوالیفائر (پوائنٹس ٹیبل پر پہلی بمقابلہ دوسری پوزیشن والی ٹیم )۔پوائنٹس ٹیبل پر تیسری بمقابلہ چوتھی پوزیشن والی ٹیم)۔22 جون: ایلیمینیٹر 2 (کوالیفائر ہارنے والی ٹیم اور ایلیمینیٹر 1کی فاتح ٹیم)۔23 جون: آرام/ٹریننگ ۔24 جون: فائنل کھیلا جائیگا۔

قومی ٹیم کا اگلا مشن ...برطانیہ اورویسٹ انڈیز

ابوظہبی میں جاری پاکستان سپرلیگ کا چھٹا ایڈیشن مکمل ہوتے ہی قومی کرکٹ ٹیم اپنے اگلے مشن پر برطانیہ روانہ ہوجائیگی، پاکستان کو انگلینڈ کے خلاف3ون ڈے اور3ٹی ٹوئنٹی میچز اور ویسٹ انڈیز کے خلاف 5ٹی ٹوئنٹی اور 2 ٹیسٹ میچز کھیلے گا۔ قومی کرکٹ ٹیم کی سلیکشن کمیٹی نے دورہ انگلینڈ اور ویسٹ انڈیز کے لیے قومی اسکواڈ ز میں چار کھلاڑیوں کی واپسی ہوئی ہے۔ حارث سہیل (قومی ون ڈے انٹرنیشنل )، عماد وسیم (قومی ٹی ٹوئنٹی اسکواڈز)، محمد عباس اور نسیم شاہ کی قومی ٹیسٹ اسکواڈ، اعظم خان کو پہلی مرتبہ قومی ٹی ٹوئنٹی اسکواڈ اور سلمان علی آغا کو قومی ون ڈے انٹرنیشنل اسکواڈ کا حصہ بنایا گیا ہے۔

بجٹ22-2021 کس کو کیا ملا؟

پاکستان تحریک انصاف حکومت کے چوتھے وزیرخزانہ نے تیسرا بجٹ پیش کردیا ہے۔ اس بجٹ میں پاکستان کے کل سالانہ اخراجات کا تخمینہ 7523 ارب روپے لگایا گیا ہے جو گزشتہ مالی سال کے مقابلے میں 17 فیصد زیادہ ہے، جبکہ اس کے مقابلے میں ملک کی کل آمدنی 7909 ارب روپے ہے، یوں ماضی کی طرح موجودہ بجٹ بھی خسارے کا بجٹ ہی ہے۔ بجٹ دستاویز کے مطابق آئندہ مالی سال میں این ایف سی ایوارڈ کے تحت صوبوں کو مجموعی طور پر 3412 ارب روپے منتقل کیے جانے کا تخمینہ ہے۔ اس قابل تقسیم محصولات میں ہے پنجاب کو 1691ارب روپے، سندھ کو 848 ارب روپے، خیبر پختونخوا کو 559 ارب روپے اور بلوچستان کو 313 ارب روپے دیے جانے کا تخمینہ لگایا گیا ہے۔ یوں صوبوں کو پیسوں کی ترسیل کے بعد وفاقی حکومت کے پاس 4497 ارب روپے رہ جاتے ہیں جن سے ملک کو چلایا جائے گا۔ موجودہ مالی سال میں ہونے والے اخراجات کی جانب نظر ڈالی جائے تو معلوم ہوتا ہے کہ اس سال مجموعی طور پر 3060 ارب روپے قرضوں پر سود کی مد میں ادا کیے جائیں گے، جن میں سے اندرونی قرضوں پر سود کی مد میں 2757 ارب روپے جبکہ بیرونی قرضوں پر سود کی مد میں 302 ارب روپے ادا کیے جائیں گے۔ اسی طرح وفاقی سول حکومت کو چلانے کے اخراجات کی مد میں 479 ارب روپے مختص کیے گئے ہیں۔ بجٹ کی تفصیل میں جایا جائے تو موجودہ بجٹ میں دفاعی اخراجات کیلئے 1370 ارب روپے رکھے گئے ہیں جو کہ گزشتہ مالی بجٹ کے مقابلے میں تقریباً 80 ارب زیادہ ہیں۔ اسی طرح حکومت کی جانب اس دفعہ پنشن کی مد میں 480 ارب روپے مختص کیے گئے ہیں، جن میں سے ملٹری پنشن کیلئے 360 ارب روپے اور سول ملازمین کی پنشن کیلئے 120 ارب روپے رکھے گئے ہیں۔ آئندہ مالی سال کا وفاقی ترقیاتی بجٹ 900 ارب روپے رکھنے کی تجویز ہے، جو گزشتہ مالی بجٹ کے مقابلے میں 40 فیصد زیادہ ہے۔ اب اگر وفاقی حکومت کے سالانہ ترقیاتی پروگرام کا موازنہ کیا جائے تو موجودہ مالی سال میں حکومت نے سڑکوں اور شاہراہوں کی تعمیر و مرمت کیلئے نیشنل ہائی ویز اتھارٹی کو 113 ارب روپے دینے کا فیصلہ کیا گیا ہے جو کہ گزشتہ مالی بجٹ سے 5 ارب روپے کم ہے۔ اس کے علاوہ آبی وسائل کی بہتری کیلئے 103 ارب روپے مختص کیے گئے ہیں