Coronavirus Updates

گھریلو خواتین توجہ دیں

خصوصی ایڈیشن

تحریر : روزنامہ دنیا


آپ ملازمت پیشہ ہیں یا خاتون خانہ، کچھ ایسے کام اور صلاحیتیں ہیں جن میں آپ کو ضرور مہارت حاصل کرنی چاہئے۔ زندگی کو سہل اور کارآمد بنانے میں ان کا اہم کردار ہو سکتا ہے۔ ان میں سے چند صلاحیتیں بھلے ہی آپ کی روزمرہ کی زندگی میں کام نہ آئیں، لیکن کسی مشکل کے پیش آنے پر اگر آپ میں یہ صلاحیتیں نہیں ہوں گی تو پریشانیوں کا سامنا کرنا پڑسکتا ہے۔ویسے بھی چھوٹی چھوٹی باتوں کے لئے شوہر یا گھر کے دیگر مردوں کی مدد لینا اچھی بات نہیں۔

ہوم اکنامکس

 اگر آپ سوچ رہی ہیں کہ اس کا تعلق معیشت سے ہے تو آپ غلط سوچ رہی ہیں۔ بیرون ممالک میں ایک مضمون کی طرح اسے کالجز میں پڑھایا جاتا ہے۔ اس کے تحت خواتین کو گھریلو ضروریات سے منسلک کئی صلاحیتوں کی پریکٹیکل ٹریننگ دی جاتی ہے، آپ بھی انہیں سیکھ سکتی ہیں۔ جیسے فیوز خراب ہو جانے پرتار دوبارہ لگانا، اچانک ٹوٹی خراب ہو جائے تو اسے تبدیل کرنا، دیوار میں سوراخ کے لئے ڈرل مشین کا استعمال کرنا، کارپینٹر سے متعلق چھوٹے موٹے کام کرنا وغیرہ اس سے آپ کی زندگی آسان ہو جائے گی۔

فرسٹ ایڈ

بیماریاں اور حادثات کبھی بھی پیش آسکتے ہیں۔ اس صورتحال میں گھبرانے کے بجائے سب سے زیادہ ضروری ہے کہ مریض یا حادثے کے شکار فرد کو طبی امداد فراہم کی جائے ۔ اس کے لئے آپ کو ہمیشہ گھر میں اینٹی سیپٹک مرہم، بینڈیج، پین کلر دوائیں، اسپرے، کاٹن وغیرہ رکھنا چاہئے۔ ساتھ ہی ابتدائی طبی امداد کے بارے میں معلومات حاصل کر لینا چاہئے۔ ان سب کے ساتھ ساتھ اسٹروک، ہارٹ اٹیک اور ہیٹ اسٹروک کے دوران کون سی احتیاطی تدابیر اپنانا چاہئیں؟ یہ بھی ضرور معلوم کرلیں۔

گاڑیوں کی باقاعدگی سے دیکھ بھال

 ان دنوں تقریباً ہر گھر میں کار ہے ۔ نجی گاڑیاں اب کوئی لگژری نہیں بلکہ ضرورت کا سامان بن گئی ہیں۔ مشکل تب پیش آتی ہے جب گاڑی راستے میں اچانک خراب ہو جائے اور اطراف میں کوئی مکینک نہ ملے۔ ایسے حالات سے نمٹنے کے لئے آپ کو گاڑیوں کی دیکھ بھال سے متعلق ضرور سیکھنا چاہئے۔ ان کی باقاعدگی سے صاف صفائی کا طریقہ، آئل تبدیل کرنا، ٹائر کا پریشر جانچنا، چھوٹی موٹی تکنیکی خرابیوں کو درست کرناآپ کو ضرور سیکھنا چاہئے۔ آپ کو گاڑی کا ٹائر بدلنا بھی آنا چاہئے ۔

سائبر پرائیویسی پروٹیکٹ کرنا

 سائبر کرائم کے بڑھتے واقعات کے پیش نظر یہ ضروری ہے۔ ماہرین کہتے ہیں کہ جب بھی آپ آن لائن شاپنگ کرتی ہیں، تو ویب ایڈریس کی شروعات میں دیکھیں اگر ایچ ٹی ٹی پی کے بعد ’ایس‘ نہیں لگا ہے، تو آپ کے کریڈٹ کارڈ کی تفصیل یہاں چوری ہوسکتی ہے۔ اسی طرح آپ کو اپنے فیس بک اکائونٹ کو بھی سیکیور کرنا آنا چاہئے۔ بہتر ہوگا کہ یہاں پروفائل پک کو پروٹیکٹ کر لیں۔ اپنی نجی تصاویر کو اپ لوڈ کرنا بند کر دیں۔ فیس بک اکاونٹ کو ہمیشہ پرائیویٹ سیٹنگ پر ہی رکھیں۔ وقفے وقفے سے پاس ورڈ بدلتے رہیں۔

 

روزنامہ دنیا ایپ انسٹال کریں
Advertisement

تلاش

افریقہ کے دور دراز گائوں میں ایک غریب کسان رہتا تھا۔ وہ ایک خوش مزاج، خوشحال اور قناعت پسند انسان تھا اور پر سکون زندگی گزار رہا تھا۔

شریر چوہا

جمیلہ کا گھر ایک خوبصورت باغ کے درمیان تھا۔اطراف میں رنگ برنگے پھولوں کی کیاریاں لگی تھیں۔ ان کے علاوہ اس میں آم، امرود، کیلے، چیکو اور ناریل وغیرہ کے درخت بھی تھے۔ جمیلہ بڑی اچھی لڑکی تھی۔ صبح سویرے اٹھتی نماز اور قرآن پڑھتی اور پھر باغ کی سیر کو نکل جاتی۔ گھر آکر اپنی امی کا ہاتھ بٹاتی اور پھر سکول چلی جاتی۔ اس کی استانیاں اس سے بہت خوش رہتی تھیں، کیوں کہ وہ ماں باپ کی طرح ان کا کہنا بھی مانتی تھی اور خوب جی لگا کر پڑھتی تھی۔ جمیلہ کے کمرے میں کتابوں اور کھلونوں کی الماریاں خوب سجی ہوئی تھیں۔ فرصت کے اوقات میں وہ کتابیں پڑھتی اور کبھی نت نئے کھلونوں سے بھی کھیلتی۔

چرواہے کا احسان

انگریز جب ہندوستان آئے تو اپنے ساتھ مشینیں بھی لائے۔ اس وقت تک یورپ میں ریل اور دوسری مشینیں ایجاد ہو گئی تھیں۔ انگریزوں نے ہندوستان میں ریلوں کی تعمیر کا کام شروع کیا۔ برصغیر پاک و ہند میں ریل کی پہلی لائن بمبئی سے تھانے تک پہنچائی گئی۔ اس کے بعد مختلف حصوں میں پٹریاں بچھائی جانے لگیں۔ پہاڑی علاقوں میں پٹریوں کا بچھانا ایک بے حد مشکل کام تھا۔ انجینئروں نے پہاڑوں میں سرنگیں کھود کر لائنوں کو گزارا۔ ہمارے ہاں کوئٹہ لائن اس کی ایک شاندار مثال ہے۔

پہیلیاں

گونج گرج جیسے طوفان،چلتے پھرتے چند مکانجن کے اندر ایک جہان،پہنچے پنڈی سے ملتان(ریل گاڑی)

اسوئہ حسنہ کی روشنی میں فلاح معاشرہ میں خاندانی زندگی کا کردار ،گھریلو زندگی میں صلح جو ہونے کا براہ راست اثر معاشرے پر پڑتا ہے

نبی اکرم ﷺ نے ہجرت مدینہ کے بعد ایک معتدل، انسان دوست اور مستحکم معاشرہ کی بنیاد رکھی۔ معاشرہ کی ترقی و خوش حالی کا انحصار افراد کے رویوں پر ہے۔ افراد کے رویے حکومت سازی، اداروں کے استحکام بقائے باہمی اور دیگر معاملات کی سمت، ضابطے اور منزل کا تعین کرتے ہیں۔ افراد کے فکری اور اخلاقی رویوں کی تشکیل کا بنیادی محرک عائلی زندگی ہے۔ عائلی زندگی کو اسلام میں بنیادی تربیتی ادارہ کی حیثیت حاصل ہے۔ نبی اکرمﷺ نے عائلی زندگی کے جو مقاصد اور حقوق و فرائض متعین فرمائے ان کی اساس اور جامع اثر فلاح معاشرہ کی صورت میں سامنے آتا ہے۔

بے شک اللہ تمہیں حکم دیتا ہے کہ اماتیں جن کی ہیں انہیں سپرد کرو، امانت داری ،ایمان کی علامت ، جب امانت ضائع کی جائے تو قیامت کا انتظار کرو

اللہ تعالیٰ قرآن پاک میں فرماتے ہیں کہ ’’بے شک اللہ تمہیں حکم دیتا ہے کہ امانتیں جن کی ہیں انہیں سپرد کرو‘‘ (سورۃ النساء:آیت 58)۔ دوسری جگہ ارشاد ربانی ہے کہ ’’اے ایمان والو! اللہ اور رسول سے دغا نہ کرو، اور نہ اپنی امانتوں میں دانستہ خیانت کرو‘‘ (سورۃ الانفال :آیت 27)، تاجدار ختم نبوت ﷺ کا ارشاد ہے’’تین باتیں ایسی ہیں کہ جس میں ہوں گی وہ منافق ہو گا اگرچہ نماز، روزہ کا پابند ہی ہو۔ (۱)جب بات کرے تو جھوٹ بولے، (۲)جب وعدہ کرے تو خلاف ورزی کرے، (۳)جب امانت اس کے سپرد کی جائے تو خیانت کرے۔‘‘ (صحیح مسلم، کتاب الایمان، رقم 59)