صاف پانی کے سینکڑوں پلانٹ ناکارہ، شہری بیمار ہونے لگے

صاف پانی کے سینکڑوں پلانٹ ناکارہ، شہری بیمار ہونے لگے

لاہور(عمران اکبر)اہل لاہور صاف پانی سے محروم ہوگئے، محکمہ بلدیات فلٹریشن پلانٹس کا مسئلہ حل نہ کرسکا، شہریوں کو صاف پانی دینے کے بجائے فلٹریشن پلانٹس کو نیا دکھانے کے لئے رنگ و روغن کئے جانے کا انکشاف ہوا ہے۔

تفصیل کے مطابق شہر میں بڑے پیمانے پر واٹر فلٹریشن پلانٹس ناکارہ ہونے کا انکشاف ہوا ہے۔ محکمہ بلدیات، میٹروپولیٹن کارپوریشن لاہور کے زیر تحت سینکڑوں واٹر فلٹریشن پلانٹ ناکارہ ہیں۔ دستاویزات کے مطابق صاف پانی فراہم کرنے کے بجائے انتظامیہ نے رنگ و روغن کر دیا۔ لاہور میں مجموعی طور پر 1228 واٹر فلٹریشن پلانٹ موجود ہیں جن میں سے مختلف علاقوں میں اربوں روپے لاگت سے لگائے جانیوالے 350 واٹر فلٹریشن پلانٹ ناکارہ ہو گئے جس کے باعث گندا پانی پینے سے شہریوں میں بیماریاں پھیلنے لگیں۔ پنجاب حکومت نے ابتدائی طور پر 185 واٹر فلٹریشن پلانٹ کو فعال کرنے کا فیصلہ کیا ہے، 185 واٹر فلٹریشن پلانٹ پر 60 کروڑ 10 لاکھ کے اخراجات کئے جائیں گے ۔محکمہ بلدیات سمیت دیگر محکمے واٹر سپلائی سکیمز کی مرمت و بحالی کیلئے موجود فنڈز میں سے ادائیگی کریں گے۔ واضح رہے آلودہ پانی کے استعمال سے ہیپاٹائٹس اور پیٹ کے امراض میں اضافہ دیکھنے میں آرہا ہے۔

Advertisement
روزنامہ دنیا ایپ انسٹال کریں