ڈکیتی مزاحمت نوجوان قتل ، تاجروں نے 3ڈاکوئوں کو مار ڈالا

ڈکیتی مزاحمت نوجوان قتل ، تاجروں نے 3ڈاکوئوں کو مار ڈالا

ملتان (کرائم رپورٹر)ملتان میں تھانہ گلگشت کے علاقہ گردیزی مارکیٹ میں جیولرز شاپ پر ڈکیتی کی واردات کے دوران مزاحمت پر ڈاکوئوں نے فائرنگ کرکے 16سالہ نوجوان کو قتل کردیا۔

 بعدازاں تاجروں نے مسلح ڈاکوؤں کو قابو کرلیا اوررسیوں سے باندھ کر شدید تشدد کا نشانہ بنایا جس سے تین ڈاکو ہلاک ہو گئے جبکہ ایک کو پولیس نے شدیدزخمی حالت میں نشتر ہسپتال منتقل کردیا ۔مقتول تاجر کے لواحقین ڈیڈ باڈی نشتر ہسپتال سے پوسٹ مارٹم کے بغیر زبردستی گھر لے گئے اور پولیس کے خلاف احتجاج بھی کیا۔تفصیلات کے مطابق گردیزی مارکیٹ میں رپل جیولرز شاپ میں گزشتہ روز موٹرسائیکلوں پرآئے چار مسلح ڈاکو گھس گئے اور دکان میں موجودمزاحمت کرنیوالے 16 سالہ نوجوان عالیان آصف پر فائرنگ کردی ،اسکو تین فائر سینے میں لگے اوروہ موقع پر ہی دم توڑ گیا۔فائرنگ کی آواز سے مارکیٹ کے دیگر تاجر اکٹھے ہوگئے اورڈاکوؤں کو گھیرا ڈال لیا ،ڈاکوؤں نے سیدھی فائرنگ کی جس کی زد میں آکر شعیب اور ادریس نامی تاجر بھی زخمی ہوگئے تاہم تاجروں نے فائرنگ کے باوجود ڈاکوؤں کو قابو کرلیا جن کو شدید تشدد کا نشانہ بنایا ،ڈاکوؤں کو رسیوں سے باندھ کر ادھ موئی حالت میں پوری مارکیٹ میں گھسیٹا جاتارہا ،اس دوران سینکڑوں افراد جمع ہوگئے اور ڈاکوؤں کو تشدد کا نشانہ بناتے رہے ،جس کی ویڈیوز بھی وائرل ہوگئی ہیں۔اطلاع پر پولیس کی بھاری نفری موقع پر پہنچی شہریوں نے ڈاکوؤں کو پولیس کے حوالے کرنے سے انکار کردیا اور ان کو آگ لگانے کی کوشش کی۔

ایس پی گلگشت بابر جوئیہ نے موقع پر پہنچ کر مشتعل تاجروں کو روکا اور زخمی ڈاکوؤں کو خود اٹھا کر ڈالے میں ڈالا جن کو نشتر ہسپتال منتقل کیا گیا ۔پولیس کے مطابق ہلاک ڈاکوؤں میں ایک احسان سکنہ خدا داد تھا ڈکیتی معہ قتل و دیگر 2 مقدمات میں مطلوب تھا ۔دوسرا محمد بلال سکنہ سکندرآباد قتل سمیت 3 مقدمات میں مطلوب تھا۔تیسرا لیاقت سکنہ خانیوال اقدام قتل، رابری، چوری و دیگر 22 مقدمات میں پولیس کو مطلوب تھا۔ چوتھا ڈاکو جسے زخمی حالت میں نشتر ہسپتال منتقل کیا گیا اس کا نام عباس ہے جو متعدد وارداتوں میں مطلوب ہے ۔ گردیزی مارکیٹ کا 16 سالہ نوجوان تاجر عالیان آصف جو ڈاکوئوں کی فائرنگ سے جان بحق ہوگیا تھا اس کے لواحقین نے نشتر ہسپتال پہنچ کرشدید احتجاج کیا اور زبردستی ڈیڈ باڈی بغیر پوسٹمارٹم کے گھر لے گئے ،جسے بعد ازاں پولیس نے لواحقین سے لے کر واپس نشتر منتقل کیا ۔ پولیس کا موقف ہے کہ ڈاکو اندھا دھند فائرنگ کے دوران اپنے ہی ساتھیوں کی فائرنگ کا نشانہ بنے تھے اورزخمی تھے ، پھر مشتعل مظاہرین کے تشدد کے بعد زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے دم توڑ گئے ۔پولیس کے مطابق چند روز قبل تھانہ گلگشت کے علاقہ میں جیولرزشاپ پر ہونے والی ڈکیتی بھی ان ڈاکوؤں نے ہی کی تھی۔

 

Advertisement
روزنامہ دنیا ایپ انسٹال کریں