نیوز الرٹ
  • بریکنگ :- ہرتھانےکاپولیس بجٹ منظورہوتاہے،فروغ نسیم
  • بریکنگ :- منظورشدہ بجٹ تھانے کونہیں دیاجاتا،فروغ نسیم
  • بریکنگ :- تھانیدارکے پاس قلم اورسیاہی کےپیسے نہیں ہوتے،فروغ نسیم
  • بریکنگ :- یقینی بنایا ہے کہ فنڈتھانےکوہی دیاجائےگا،فروغ نسیم
  • بریکنگ :- شواہد کی ریکارڈنگ کیلئےکئی دن درکار ہوتے ہیں،فروغ نسیم
  • بریکنگ :- انگلینڈمیں شواہدجمع کرنےکیلئےلائیوریکارڈنگ ہوتی ہے،فروغ نسیم
  • بریکنگ :- بیرون ملک یاشہررہنےوالوں کےبیان ویڈیولنک کےذریعے ریکارڈہوں گے،فروغ نسیم
  • بریکنگ :- ان کیسز پر توجہ دی جائے گی جن میں شواہدموجود ہوں گے،فروغ نسیم
  • بریکنگ :- عادی مجرموں سے پلی بارگین نہیں کی جائےگی،فروغ نسیم
  • بریکنگ :- 5سال کی سزاپانےوالا 20 سال تک سزاکاٹتارہتا ہے،فروغ نسیم
  • بریکنگ :- اس نظام میں جج فیصلہ کرےگاجرم کی نوعیت کیا ہے،فروغ نسیم
  • بریکنگ :- پلی بارگین چھوٹے جرائم کیلئے ہے،فروغ نسیم
  • بریکنگ :- مقصد یہ ہےبڑےجرائم پرتوجہ دی جاسکے،فروغ نسیم
  • بریکنگ :- لوئرکورٹس میں وکلاکےالتوالینےسےفیصلوں میں تاخیرہوتی ہے،فروغ نسیم
  • بریکنگ :- گواہوں کے تحفظ کی بھی پالیسی بنادی گئی ہے،فروغ نسیم
  • بریکنگ :- وزیراعظم کومحسوس ہوایہ کام وزارت قانون کرسکتی ہے،فروغ نسیم
  • بریکنگ :- تمام اسٹیک ہولڈرزسےمشاورت کرکےمسودہ تیارکیاگیا،فروغ نسیم
  • بریکنگ :- منگل کومسودہ کابینہ میں پیش کیاجائےگا،فروغ نسیم
  • بریکنگ :- مسودہ پارلیمان میں پیش کیاجائےگا،فروغ نسیم
  • بریکنگ :- اپوزیشن سیاست نہ کرے،اس قانون کوپاس کرے،فروغ نسیم
Coronavirus Updates
اداریہ
WhatsApp: 0344 4450229

غیرقانونی سلاٹر ہائوسز

 لاہور میں 800 سے زائد غیرقانونی سلاٹر ہاؤسز کا انکشاف ہوا ہے جہاں لاغر اور بیمار جانوروں کو نہ صرف ذبح کیا جاتا ہے بلکہ ان پر جعلی مہریں لگا کر اس گوشت کو مارکیٹ میں سپلائی بھی کیا جاتا ہے۔ ایسا گوشت پانی ملا اور مضر صحت ہوتا ہے۔ فوڈ اتھارٹی کے مطابق ایسا ہزاروں من گوشت اب تک تلف کیا جا چکا ہے مگر سوال یہ ہے کہ اس کی مستقل روک تھام کے لیے اقدامات کیوں نہیں کیے جاتے؟ اگر صوبائی دارالحکومت میں یہ صورتحال ہے تو اندازہ کیا جا سکتا ہے پورے صوبے اور وسیع تر تناظر میں پورے ملک میں گوشت کی سپلائی و فروخت کی صورتحال کیا ہو گی۔

شنید ہے کہ سرکاری مذبحوں کا مصدقہ گوشت شہر کی ضروریات پوری کرنے سے قاصر ہے جبکہ شہر کے نو زونز میں نئے سلاٹر ہائوسز کو فنکشنل کرنے کا معاملہ التوا کا شکار ہے‘ جس کی وجہ سے غیر قانونی سلاٹر ہائوسز کا دھندہ عروج پر ہے۔ اگر سلاٹر ہائوسز کے زیر التوا منصوبوں کو مکمل کر دیا جائے اور ضروریات کے مطابق گوشت کی سپلائی میں بھی خاطر خواہ اضافہ کیا جائے تو اس مسئلے سے آسانی سے نمٹا جا سکتا ہے؛ تاہم دوسری طرف غیر قانونی طور پر اور مضرِ صحت گوشت بیچنے والوں سے بھی آہنی ہاتھوں سے نمٹا جانا چاہیے جو ناقص گوشت کی آڑ میں بیماریوں کا بیوپار کر رہے ہیں۔ 

 

روزنامہ دنیا ایپ انسٹال کریں
Advertisement