موہنجو دڑو میں2000سال پرانے سکے دریافت

موہنجو دڑو میں2000سال پرانے سکے دریافت

لاڑکانہ(نیٹ نیوز)پاکستان میں ماہرین آثار قدیمہ نے موہنجو دڑو میں بنے بدھ مت کے مزار کے کھنڈرات سے تانبے کے سکوں کا ایک انتہائی قدیم ذخیرہ دریافت کیا ہے۔۔

 جس کے بارے میں خیال کیا جاتا ہے کہ یہ 2000 سال سے زیادہ پرانا ہے ۔سکے اور مزار جسے سٹوپا کے نام سے جانا جاتا ہے ، کے بارے میں ماہرین کا ماننا ہے کہ یہ کشان سلطنت کے زمانے سے ہے جو ایک بنیادی طور پر بدھ مت کی حکومت تھی جس نے تقریباً دوسری صدی قبل مسیح سے تیسری صدی عیسوی تک اس علاقے پر حکومت کی اور سکندر اعظم کی قائم کردہ گریکو-بیکٹرین سلطنت کو فتح کیا۔یہ مزار موہنجو دڑو کے وسیع کھنڈرات کے درمیان موجود ہے جو جنوب مشرقی پاکستان کا حصہ ہے ۔ اس کی تاریخ تقریباً 2600 قبل مسیح ہے اور یہ قدیم وادی سندھ یا ہڑپہ تہذیب سے تعلق رکھتا ہے جو دنیا کی قدیم ترین تہذیبوں میں سے ایک ہے ۔ 

 

Advertisement
روزنامہ دنیا ایپ انسٹال کریں