آپریشن سے پیدا بچوں میں خسرہ کیخلاف قوتِ مدافعت کم

آپریشن سے پیدا بچوں میں خسرہ کیخلاف قوتِ مدافعت کم

کیمبرج(نیٹ نیوز)ایک نئی تحقیق سے پتہ چلا ہے کہ جو بچے آپریشن کے ذریعے پیدا ہوتے ہیں انہیں خسرہ کی ویکسین کی دو خوراکوں کی ضرورت پڑ سکتی ہے۔

نیچر مائیکرو بایولوجی نامی جریدے میں شائع ہونے والی تحقیق کے مطابق سی-سیکشن سے پیدا ہونے والے بچوں کو خسرہ ویکسین کی ایک خوراک ناکافی ہوسکتی ہے ۔ مناسب مدافعت کیلئے 2 خوراکیں دینا ضروری ہے ۔محققین نے بتایا کہ سی سیکشن سے پیدا ہونے والے بچوں میں خسرہ ویکسین کی ایک خوراک مکمل طور پر غیر موثر ہونے کا امکان ان بچوں کے مقابلے میں زیادہ ہوتا ہے جو نارمل طریقے سے پیدا ہوئے ہوں۔سی سیکشن والے بچوں کا مدافعتی نظام ویکسین کی 1 خوراک کے بعد خسرہ کے خلاف لڑنے کے لیے کافی اینٹی باڈیز پیدا نہیں کرپاتا۔ مطالعے کے مصنف اور برطانیہ کی کیمبرج یونیورسٹی میں جینیات کے لیکچرار، ہنریک سالجے نے کہا کہ ہم نے دریافت کیا ہے کہ ہم جس طریقے سے پیدا ہوتے ہیں۔ اس کے ہماری قوت مدافعت پر طویل مدتی اثرات پڑتے ہیں۔

Advertisement
روزنامہ دنیا ایپ انسٹال کریں