چیف جسٹس پر دباؤ نہیں ڈالا جاسکتا:اپنی ذمہ داری کابخوبی علم،جانبداری نہیں کرینگے:سپریم کورٹ کا عمران خان کے خط پر اعلامیہ

چیف جسٹس پر دباؤ نہیں ڈالا جاسکتا:اپنی ذمہ داری کابخوبی علم،جانبداری نہیں کرینگے:سپریم کورٹ کا عمران خان کے خط پر اعلامیہ

اسلام آباد(سپیشل رپورٹر)سابق چیئرمین پی ٹی آئی عمران خان کے خط پر سپریم کورٹ کی جانب سے اعلامیہ جاری کیا گیا ہے جس میں کہا گیا ہے کہ چیف جسٹس پاکستان قاضی فائز عیسیٰ کو اپنی آئینی ذمہ داری کا بخوبی علم ہے۔

 ان پر دبائو نہیں ڈالا جا سکتا اور نہ ہی وہ جا نبداری کر یں گے ،اللہ تعالیٰ کے فضل سے وہ اپنے فرا ئض کی ادائیگی اور اپنے منصب کے حلف کی پاسداری کر تے ہیں ۔ سابق چیئر مین تحریک انصاف کی جانب سے سپریم کورٹ کو لکھے گئے خط کے معاملے پر سپریم کورٹ سے جاری اعلامیے میں کہا گیا ہے کہ یکم دسمبر کو7 صفحات کی درخواست مع 77صفحات موصول ہوئی جو کہ زرد رنگ کی پیپر بک میں ہے ،مگر دستاویز تیار کرنے والے وکیل کا نام اور رابطہ کی تفصیلات نہیں دی گئیں۔لفا فے کے مطابق یہ دستاویز وکیل انتظار حسین پنجوتھا نے کورئیر کی۔یہ امر حیران کن ہے کہ ایک سر بمہر لفا فہ موصول ہو نے سے قبل میڈیا کو جاری کیا گیا۔ اعلامیے کے مطابق دستاویز بظاہر ایک سیاسی جماعت کی جانب سے بھیجی گئی ہے ، اس جماعت کی اچھی نمائندگی وکلا کرتے رہے ہیں، پچھلے دنوں سپریم کورٹ میں اس جماعت کے وکلا فوجی عدالتوں اور انتخابات کیس کو تکمیل تک لے گئے ۔ اعلامیے میں مزید کہا گیا ہے کہ چیف جسٹس قاضی فائزعیسی اللہ کے فضل سے اور اپنے حلف کے مطابق فرائض کی انجام دہی کرتے رہیں گے ۔

Advertisement
روزنامہ دنیا ایپ انسٹال کریں