نیوز الرٹ
  • بریکنگ :- وزیر اعظم عمران خان کارحمت اللعالمین ﷺکانفرنس سےخطاب
  • بریکنگ :- آپ ﷺکی تعلیمات سےہمیں رہنمائی لینےکی ضرورت ہے،وزیراعظم
  • بریکنگ :- اللہ نےسب کچھ دیا،ملک میں کسی چیز کی کمی نہیں،وزیراعظم
  • بریکنگ :- مدینہ کی ریاست ہمارےلیےرول ماڈل ہے،وزیراعظم عمران خان
  • بریکنگ :- آپ ﷺدنیامیں تلوارکےذریعےنہیں،اپنی سوچ سےانقلاب لائے،وزیراعظم
  • بریکنگ :- ریاست مدینہ نہ صرف مسلمانوں بلکہ ہرمعاشرےکیلئےمثالی نمونہ بنی،وزیراعظم
  • بریکنگ :- اگرہمیں عظیم قوم بنناہےتواسلامی اصولوں پرچلناہوگا،وزیراعظم
  • بریکنگ :- انصاف ہمیشہ کمزورکوچاہیے،طاقتورخودکوقانون سےاوپرسمجھتاہے،وزیراعظم
  • بریکنگ :- انصاف اورانسانیت کی وجہ سےقوم مضبوط ہوتی ہے،وزیراعظم
  • بریکنگ :- ہماری جدوجہدملک میں قانون کی بالادستی کیلئےہے،وزیراعظم
  • بریکنگ :- بزدل انسان کبھی لیڈرنہیں بن سکتا،وزیراعظم عمران خان
  • بریکنگ :- صرف اسلام نےیہ حق دیاکہ کئی غلام حکمران بن گئے،وزیراعظم
  • بریکنگ :- ریاست مدینہ میں میرٹ کاسسٹم تھا،باصلاحیت افراداوپرآتےتھے،وزیراعظم
  • بریکنگ :- عزت،رزق اورموت صرف اللہ تعالیٰ کےہاتھ میں ہے،وزیراعظم
  • بریکنگ :- اسلام نےپہلی بارخواتین کووراثت میں حقوق دیئے،وزیراعظم
  • بریکنگ :- پناماکیس میں کیابتاؤں کس طرح کےجھوٹ بولےگئے،وزیراعظم
  • بریکنگ :- کیس برطانوی عدالت میں ہوتاتوان کواسی وقت جیل میں ڈال دیاجاتا،وزیراعظم
  • بریکنگ :- برطانوی جمہوریت میں ووٹ بکنےکاتصوربھی نہیں کیاجاسکتا،وزیراعظم
  • بریکنگ :- سب کوپتہ ہےکہ سینیٹ انتخابات میں پیسہ چلتاہے،وزیراعظم
  • بریکنگ :- برطانیہ میں چھانگامانگاجیسی سیاست نہیں ہوتی،وزیراعظم
  • بریکنگ :- اخلاقیات کامعیارنہ ہوتوجمہوریت نہیں چل سکتی،وزیراعظم
  • بریکنگ :- قانون کی بالادستی کےبغیرخوشحالی کاخواب پورانہیں ہوسکتا،وزیراعظم
  • بریکنگ :- احساس پروگرام کےتحت سواکروڑخاندانوں کوسبسڈی دیں گے،وزیراعظم
  • بریکنگ :- معاشرےمیں جنسی جرائم کابڑھنابہت خطرناک ہے،وزیراعظم
  • بریکنگ :- نوجوانوں کوسود کےبغیرقرضےدیں گے،وزیراعظم
  • بریکنگ :- اپنے نوجوانوں کوبےراہ روی سےبچاناہے،وزیراعظم
  • بریکنگ :- ہالی ووڈکلچرہمارےنوجوانوں کوتباہ کرے گا،وزیراعظم
  • بریکنگ :- خاندانی نظام میں بہتری لانےکی ضرورت ہے،وزیراعظم
  • بریکنگ :- ٹی وی چینلزکےپروگراموں کومانیٹرکرنےکی ضرورت ہے،وزیراعظم
  • بریکنگ :- بچوں سےموبائل نہیں چھین سکتےکم ازکم تربیت توکرسکتےہیں،وزیراعظم
  • بریکنگ :- نوجوان نسل کونبی کریم ﷺکی سیرت کاعلم ہوناچاہیے،وزیراعظم
  • بریکنگ :- آپ ﷺنےاپنی سیرت مبارکہ کےذریعےانصاف کادرس دیا،وزیراعظم
  • بریکنگ :- آپ ﷺنےمعاشرےمیں اچھےبرےکی تمیزرکھی،وزیراعظم
  • بریکنگ :- حضوراکرم ﷺنےخواتین،بیواؤں اورغلاموں کوحقوق دیئے،وزیراعظم
  • بریکنگ :- ہمیں عظیم قوم بنناہےتواسلامی اصولوں پرچلناہوگا،وزیراعظم
  • بریکنگ :- ملک کانظام تب درست ہوگاجب قانون کی حکمرانی ہوگی،وزیراعظم
  • بریکنگ :- دنیامیں امیراورغریب کافرق بڑھتاجارہاہے،وزیراعظم
  • بریکنگ :- سالانہ ایک ہزارارب ڈالرچوری ہوکرآف شورکمپنیوں میں چلاجاتاہے،وزیراعظم
  • بریکنگ :- انصاف کانظام نہیں ہوگاتوخوشحالی نہیں آئےگی،وزیراعظم
  • بریکنگ :- طاقتوراورکمزورکیلئےالگ الگ قانون سےقومیں تباہ ہوجاتی ہیں،وزیراعظم
  • بریکنگ :- 50سال پہلےپاکستان خطےمیں تیزی سےترقی کررہاتھا،وزیراعظم
  • بریکنگ :- ہمیں اپنی سمت درست کرنی ہے،وزیراعظم عمران خان
  • بریکنگ :- ملکی ترقی کیلئےنظام درست کرنےکی ضرورت ہے،وزیراعظم
  • بریکنگ :- قانون کی حکمرانی کیلئے آوازبلندکرتارہوں گا،وزیراعظم
  • بریکنگ :- طاقتورکوقانون کےنیچےلاناہوگا،وزیراعظم عمران خان
  • بریکنگ :- فلاحی ریاست بنانےکےلیےکوشاں ہیں،وزیراعظم
  • بریکنگ :- مغرب کونہیں پتاہم اپنےنبی ﷺسےکتنی محبت کرتےہیں،وزیراعظم
Coronavirus Updates
"ZIC" (space) message & send to 7575

سرخیاں، متن اور ابرار احمد

چیئر مین نیب کی توسیع کیلئے کوئی مسودہ نہیں: فروغ نسیم
وفاقی وزیر قانون فروغ نسیم نے کہا ہے کہ ''چیئر مین نیب کی توسیع کے لیے کوئی مسودہ نہیں‘‘ جو ہم اگر چاہیں تو آناً فاناً بن بھی سکتا ہے کیونکہ سست روی کے ساتھ ساتھ اب ہماری پھرتیوں سے بھی ہر کوئی واقف ہو چکا ہے اور جس کی متعدد مثالیں پہلے بھی موجود ہیں، بلکہ بہت سے مسودات ہم نے احتیاطاً پہلے سے ہی تیار کر کے رکھے ہوئے ہیں کیونکہ وقت کی قدر جتنی ہمیں ہے کسی کو بھی نہیں ہو سکتی جبکہ ہمارے پاس وقت پہلے بھی بہت کم رہ گیا ہے، اور ابھی ہم نے اپنی کارکردگی بھی دکھانی ہے۔ آ پ اگلے روز اسلام آباد میں صحافیوں سے بات چیت کر رہے تھے۔
حکمرانوں کا یوم حساب قریب ہے: سراج الحق
امیر جماعت اسلامی سینیٹر سراج الحق نے کہا ہے کہ ''حکمرانوں کا یوم حساب قریب ہے‘‘ جس کی پیش گوئی ہم عرصہ دراز سے کر رہے ہیں لیکن یہ مدت ختم ہونے میں نہیں آ رہی اور ایسا لگتا ہے کہ حکمرانوں کے یوم حساب سے پہلے ہر دن کئی سال کا ہوگایا پھر ہمارے حساب لگانے میں کوئی گڑ بڑ ہو رہی ہے کیونکہ ہم بھی بندے بشر اور خطا کے پتلے ہیں اور غلطی ہم سے بھی ہو سکتی ہے چنانچہ اس کے ازالے کے لیے دوبارہ حساب لگانے کی کوشش کی جا رہی ہے کہ حکمرانوں کے یوم حساب میں اصلاً ابھی کتنی مدت پڑی ہے اور ہمیں انتظار کی اس صعوبت سے کب تک گزرتے رہنا ہوگا۔ آپ اگلے روز کراچی میں مہنگائی اور پٹرولیم کی قیمتوں میں اضافے کے خلاف ایک مظاہرے میں شریک تھے۔
احتساب کا عمل جاری و ساری رہے گا: فرخ حبیب
وزیر مملکت برائے اطلاعات و نشریات فرخ حبیب نے کہا ہے کہ ''احتساب کا عمل جاری و ساری رہے گا‘‘ بیشک اس کا کوئی نتیجہ نہ نکلے کیونکہ ہمیں اس عمل سے غرض ہے اس کے نتیجے سے نہیں کیونکہ نتیجہ نکالنا ہمارا کام نہیں ہے اور ہم اس کے لیے دعا ہی کر سکتے ہیں لیکن اپنی تمام تر نیکو کاریوں کے باوجود ہماری دعائیں قبول نہیں ہو رہیں اور یہی حال اپوزیشن کا بھی ہے کیونکہ ان کی دعاؤں اور بددعائوں کا حشر بھی ہمارے جیسا ہی ہو رہا ہے اور قدرت اس سلسلے میں باقاعدہ مساوات سے کام لے رہی ہے اور ہم اسی لیے بڑے آرام سے ہیں کہ اپوزیشن کی بھی قدرت کی طرف سے کوئی شنوائی نہیں ہو رہی۔ آپ اگلے روز ایک ٹی وی چینل کے ایک پروگرام میں اظہار خیال کررہے تھے۔
کرپشن پر حکومتی ممبران بھی پریشان : شازیہ عطا مری
پیپلز پارٹی کی مرکزی رہنما شازیہ عطا مری نے کہا ہے کہ ''کرپشن پر حکومتی ممبران بھی پریشان ہیں‘‘ کیونکہ ہماری پریشانی تو سمجھ میں آتی ہے کہ زرِ کثیر واپس کرنے کے بعد بھی ادارے ابھی تک ہمارا پیچھا کر رہے ہیں، حالانکہ انہیں ن لیگ والوں کا تعاقب کرنا چاہیے، نیز حکومتی ممبران کی پریشانی یہ ہے کہ ابھی تک ساری کی ساری اپوزیشن اندر کیوں نہیں ہوئی اور باہر کیوں چل پھر رہی ہے جبکہ حکمران ممبران خود کچھ کرنے جوگے نہیں ہیں اور کسی اور کو کھاتے بھی نہیں دیکھ سکتے۔ پریشانی کی اس سے بڑی وجہ اور کیا ہو سکتی ہے۔ آپ اگلے روز اسلام آباد میں صحافیوں سے بات چیت کر رہی تھیں۔
کیا کورونا کچھ نہیں؟
یہ محمد طاہر اشتیاق کا ناول ہے جسے لاہور سے شائع کیا گیا ہے۔ انتساب اس طرح سے ہے'' میں دل کی اتھاہ گہرائیوں سے یہ ناول اپنی مرحومہ بہن راحیلہ اشتیاق کے نام کرتا ہوں جنہوں نے بچپن سے ہی مجھے کہانیاں سنا سنا کر میرے اندر لٹریچر کے ذوق کو ابھارا اور انہی کی بدولت آج میں اس قابل ہوا کہ یہ ناول لکھ سکوں‘‘۔ پس سرورق مصنف کی تصویر اور تعارف درج ہے۔ پیش لفظ مصنف کا قلمی ہے۔ آغاز میں انتباہ کے عنوان سے یہ بھی درج ہے کہ اس ناول میں پیش کیے جانے والے تمام کردار حالات، واقعات اور مقامات فرضی ہیں، جن کا حقیقت سے کوئی تعلق نہیں ہے۔ ان کی کسی بھی شخص، جگہ سے مماثلت اتفاقیہ ہو سکتی ہے۔ اندرونِ سرورق اشاعتی ادارے کی طرف سے شائع ہونے والی متعدد کتابوں کے ٹائٹل شائع کیے گئے ہیں، صفحات کی کل تعداد 148 ہے۔
اور، اب آخر میں ابرار احمد کی نظم:
بارش
تُو آفاق سے قطرہ قطرہ گرتی ہے
سناٹے کے زینے سے
اس دھرتی کے سینے میں
تُو تاریخ کے ایوانوں میں در آتی ہے
اور بہا لے جاتی ہے
جذبوں اور ایمانوں کو
میلے دستر خوانوں کو
تُو جب بنجر دھرتی کے ماتھے کو
بوسہ دیتی ہے
کتنی سوئی آنکھیں کروٹ لیتی ہیں
توُآتی ہے
اور تری آمد کے نم سے
پیاسے برتن بھر جاتے ہیں
تیرے ہاتھ بڑھے آتے ہیں
گدلی نیندیں لے جاتے ہیں
تری لمبی پوروں سے
دلوں کی گرہیں کھل جاتی ہیں
کالی راتیں دُھل جاتی ہیں
توُآتی ہے
پاگل آوازوں کے کیچڑ
سڑکوں پر اڑنے لگتے ہیں
تُو آتی ہے اور اڑا لے جاتی ہے
خاموشی کے خیموں کو
اور ہونٹوں کی شاخوں پر
موتی ڈولنے لگتے ہیں
پنچھی بولنے لگتے ہیں
توُجب بند کواڑوں اور دلوں پر
دستک دیتی ہے
ساری باتیں کہہ جانے کو دل کرتا ہے
تیرے ساتھ ہی بہہ جانے کو جی کرتا ہے
آج کا مقطع
سحر ہوئی تو ظفرؔ دیر تک دکھائی دیا
غروب ہوتی ہوئی رات کا کنارا مجھے

Advertisement
روزنامہ دنیا ایپ انسٹال کریں