18 سڑکوں کی گنجائش کم، ٹریفک روانی سست روی کا شکار

18 سڑکوں کی گنجائش کم، ٹریفک روانی سست روی کا شکار

لاہور(شیخ زین العابدین، اپنے سٹی رپورٹر سے)نگران وزیراعلیٰ نے شہر کے 39 چوکوں میں ٹریفک روانی بہتر بنانے کا حکم دیدیا۔

 ٹیپا نے 3 چوراہوں پر روانی بہتر بنانے کیلئے فرضی مشق کی، 2 میں کامیابی جبکہ ایک میں روانی مزید خراب ہو گئی۔تفصیل کے مطابق ٹریفک کی گنجائش کے حوالے سے لاہور کی18سڑکوں کی گنجائش کم پڑ گئی، سڑکوں کے موجودہ انفراسٹرکچر کی صلاحیت گاڑیوں کی تعداد سے کم ہے ۔ ٹیپا نے ایل ڈی اے سے 18سڑکوں کو جیومیٹریکل اپ گریڈ کرنے کی استدعا کی، ٹریفک بہاؤ کو بہتر بنانے اور ٹریفک جام رہنے کے مسائل حل کرنے کا پلان بنا لیا گیا۔ ٹریفک جام والے 6 چوکوں کو اپ گریڈ کرنے کا منصوبہ تیار کر لیا گیا تاہم اس منصوبے پر عمل درآمد میں ٹیپا کو مسائل کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے ۔ 6چوکوں میں سے 3 کو سگنل فری کر دیا گیا۔ٹریفک روانی میں بہتری کی فرضی مشق قادر توپاش چوک، نشتر ٹاؤن اور گجومتہ میں کی گئی۔

ٹیپا نے نشتر ٹاؤن فیروز پور روڈ اور گجومتہ چوک میں کنکریٹ بیریئر لگا کر سگنل فری راستہ دیا جس کے باعث ٹریفک روانی بہتر ہوئی،البتہ قادر توپاش چوک خیابان جناح میں ٹیپا کو سبکی کا سامنا کرنا پڑا،ٹیپا نے قادر توپاش چوک گول چکر کے قریب یوٹرن دیا جس سے ٹریفک روانی مزیدسست روی کا شکار ہو گئی،اب ٹیپا نے نئے بننے والے یوٹرن کو دوبارہ بند کرنے کا فیصلہ کر لیا،پائن ایونیو سے آنے والی ٹریفک کو قادر توپاش چوک سے ایک کلومیٹر دور ہی یوٹرن استعمال کرنا ہوگا۔رائیونڈ روڈ سے آنے والی ٹریفک کو بھی ٹرن لینے کے لیے لمبا راستہ لینا پڑے گا۔ ٹیپا نے 3 چوکوں کی رپورٹ کمشنر اور ٹریفک پولیس کو پیش کر دی۔علاوہ ازیں کمشنر محمد علی رندھاوا کی زیر صدارت شہر میں ٹریفک کی روانی بہتر بنانے بارے اجلاس ہوا، شہر کے مصروف ترین پوائنٹس پر مجوزہ یوٹرنز بارے بریفنگ دی گئی۔ اجلاس میں گارڈن ٹاؤن برکت مارکیٹ، گڑھی شاہو، کریم بلاک اور کھاڑک سٹاپ سمیت دیگر پوائنٹس کی ری ماڈلنگ کا بھی جائزہ لیا گیا۔

Advertisement
روزنامہ دنیا ایپ انسٹال کریں