نیوز الرٹ
  • بریکنگ :- افغانستان کو تجارت اور اقتصادی امور میں ہمسایہ ممالک کی ضرورت ہے،ترجمان
  • بریکنگ :- توقع ہے ہمسایہ ممالک اپنا مثبت کردار جاری رکھیں گے،ترجمان طالبان
  • بریکنگ :- پنج شیر میں لڑائی ختم ہوچکی ہے،ترجمان طالبان ذبیح اللہ مجاہد
  • بریکنگ :- بیشترمقامی عمائدین ،علمائے کرام اور مجاہدین ہمارے ساتھ ہیں،ترجمان طالبان
  • بریکنگ :- کشمیری،میانمار اور فلسطینی بھائیوں کی سیاسی وسفارتی حمایت کریں گے،ترجمان طالبان
  • بریکنگ :- کئی ممالک نے امریکا اور عالمی برادری کے سامنے ہمارے حق میں آواز اٹھائی،ترجمان
  • بریکنگ :- 6روز قبل چین اور روس نے بھی ہماری حکومت کے حق میں بات کی،ذبیح اللہ مجاہد
  • بریکنگ :- قطر،ازبکستان اور دیگر ممالک نے بھی مثبت موقف اپنایا،ترجمان طالبان
  • بریکنگ :- پاکستان ہمارا ہمسایہ ملک ہے،ان کا موقف قابل تحسین ہے،ذبیح اللہ مجاہد
  • بریکنگ :- افغانستان کے ساتھ عالمی برادری کے روابط ضروری ہیں،ذبیح اللہ مجاہد
  • بریکنگ :- ہم کسی کے ساتھ جنگ نہیں چاہتے،ترجمان طالبان ذبیح اللہ مجاہد
  • بریکنگ :- پوری دنیا کے ساتھ بہتر تعلقات چاہتےہیں،ترجمان طالبان ذبیح اللہ مجاہد
  • بریکنگ :- اگر کوئی لڑائی یا حملے کی خواہش رکھتاہے تو سخت جواب دیاجائےگا،ترجمان طالبان
  • بریکنگ :- افغانستان میں امن کے بعد ہماری ترجیح ہے کہ تجارت فروغ پائے،ذبیح اللہ مجاہد
  • بریکنگ :- افغانستان کو پشاور اور پاکستان کے دیگر علاقوں سے منسلک کیاجائےگا،ترجمان طالبان
  • بریکنگ :- سی پیک منصوبہ اہم ہے،تھوڑی تحقیق کی ضرورت ہے،ترجمان طالبان
  • بریکنگ :- چاہتے ہیں سی پیک میں شامل ہوں،ترجمان طالبان ذبیح اللہ مجاہد
  • بریکنگ :- پاکستان ہمارا پڑوسی ملک اور افغانوں کا دوسرا گھر ہے،ترجمان طالبان
  • بریکنگ :- لاکھوں افغان مہاجرین اب بھی پاکستان میں رہائش پذیر ہیں،ترجمان طالبان
  • بریکنگ :- ہماری زبان ،مذہب مشترکہ اور رسم ورواج بھی ایک جیسے ہیں،ترجمان طالبان
  • بریکنگ :- دورہ پاکستان کی دعوت ملی توقیادت معاملےپر غورکرےگی،ترجمان طالبان
  • بریکنگ :- افغان سرزمین کسی ملک کیخلاف استعمال نہیں ہونے دیں گے،ترجمان طالبان
  • بریکنگ :- ہم ایک اسلامی ریاست قائم کرناچاہتےہیں،ترجمان طالبان
  • بریکنگ :- کشمیری ہمارے بھائی ہیں،ترجمان طالبان ذبیح اللہ مجاہد
  • بریکنگ :- عالمی برادری مقبوضہ کشمیر میں جاری بھارتی مظالم بند کرائے،ترجمان طالبان
Coronavirus Updates

قندھار:بے دخلی کے حکم پر شہریوں کا طالبان کیخلاف احتجاج

قندھار:بے دخلی کے حکم پر شہریوں کا طالبان کیخلاف احتجاج

دنیا اخبار

3ہزار خاندانوں کو آرمی کالونی چھوڑنے کا کہنے پر مظاہرین نے روڈ بلاک کردی

کابل(مانیٹرنگ ڈیسک)ہزاروں افغان شہریوں نے افغانستان کے جنوبی شہر قندھار میں طالبان کے خلاف احتجاج کیا، رائٹرز نے ایک سابق حکومتی عہدیدار اور مقامی ٹیلی ویژن کے حوالے سے بتایا ہے کہ یہ احتجاج اس وقت شروع ہوا جب رہائشیوں کو آرمی کالونی خالی کرنے کا کہا گیا،ایک سابق حکومتی عہدیدار کے مطابق قندھار میں گورنر ہاؤس کے سامنے مظاہرین اس وقت جمع ہوئے جب تقریباً 3 ہزار خاندانوں کو کالونی چھوڑنے کا کہا گیا،مقامی میڈیا کی فوٹیج میں دکھایا گیا کہ لوگوں کا ہجوم شہر میں سڑک بلاک کر رہا ہے ۔خیال رہے کہ اس علاقے میں بنیادی طور پر ریٹائرڈ آرمی جنرلوں کے خاندان اور افغان سکیورٹی فورسز کے دیگر ارکان رہائش پذیر ہیں،عہدیدار نے بتایا کہ یہاں بعض خاندان 30 برس سے زائد عرصہ سے مقیم ہیں، انہیں یہ علاقہ خالی کرنے کیلئے تین دن کا وقت دیا گیا تھا۔دوسری جانب طالبان ترجمان نے شہریوں کی بے دخلی پر تبصرہ کرنے کی درخواست کا جواب نہیں دیا،ایک ماہ قبل کابل پر قبضہ کر کے افغانستان کا اقتدار سنبھالنے والے طالبان کے خلاف وقتاً فوقتاً مظاہرے ہوتے رہے ہیں جن میں سے بعض مہلک جھڑپوں کے بعد ختم ہو گئے لیکن منگل کو ہونے والے اس مظاہرے میں تشدد کی کوئی مصدقہ اطلاعات نہیں ہیں،طالبان رہنماؤں نے شہریوں سے بدسلوکی کے واقعات کی تحقیقات کے عزم کے ساتھ مظاہرین کو احتجاج کرنے سے پہلے اجازت لینے کا حکم بھی دیا ہے ۔

روزنامہ دنیا ایپ انسٹال کریں
Advertisement