دودھ مہنگا فروخت کرنے والوں کا چالان تو ہوگا، ہائیکورٹ

دودھ مہنگا فروخت کرنے والوں کا چالان تو ہوگا، ہائیکورٹ

کراچی(اسٹاف رپورٹر) سندھ ہائیکورٹ نے دودھ کی دکانوں پر بھاری جرمانے عائد کرنے کیخلاف درخواست پر وفاق و سندھ حکومت سے جواب طلب کرلیا۔ چیف جسٹس سندھ ہائیکورٹ جسٹس عقیل احمد عباسی کی سربراہی میں دو رکنی بینچ کے روبرو درخواست کی سماعت ہوئی۔

درخواست گزار کے وکیل نے موقف اختیار کیاکہ ہمیں چالان کیا جاتا ہے ، جرمانے لگائے جاتے ہیں۔ ہم چاہتے ہیں کمشنر کراچی تمام اسٹیک ہولڈرز کی مشاورت سے دودھ کی قیمت کا تعین کریں۔ ہمیں بلاجواز چالان کیا جاتا ہے ۔ ملک شاپس والوں کو 2، 2لاکھ کا چالان دیکر دکانیں بند کر رہے ہیں۔ چیف جسٹس عقیل احمد عباسی نے ریمارکس دیئے کہ جب دودھ مہنگا فروخت کرو گے تو چالان تو ہوگا۔ کیا آپ نہیں چاہتے کہ لوگوں کو دودھ سستا ملے ؟ دودھ کی قیمتوں کا تعین تو کمشنر کرتا ہے ۔ سرکاری وکیل نے موقف دیا کہ 18ویں ترمیم کے بعد صوبائی حکومت چالان کرتی ہے ۔ چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ ہم نے پہلے دودھ کی قیمت طے کی تھی، دو سال تک چلی۔ علاوہ ازیں سابق باؤلنگ چیمپئن احمر عباس سندیراانصاف کیلئے سندھ ہائیکورٹ پہنچ گیا۔ عرفان صدیقی ایڈووکیٹ کے توسط سے دائردرخواست میں موقف اختیارکیاکہ دس سال پاکستان کا نمبرون کھلاڑی بھی رہاہوں ، ممبرشپ معطل کرکے غیرقانونی اقدام اٹھایاگیا۔

 

Advertisement
روزنامہ دنیا ایپ انسٹال کریں