نیوز الرٹ
  • بریکنگ :- کوروناوائرس سےمتعلق چین پرالزامات کی مذمت کرتےہیں،وزیرخارجہ
  • بریکنگ :- دنیاجان لےپاکستان اورچین آہنی بھائی ہیں اوررہیں گے،شاہ محمودقریشی
  • بریکنگ :- کوئی ہمارےدرمیان دراڑنہیں ڈال سکتا،وزیرخارجہ شاہ محمودقریشی
  • بریکنگ :- پاکستان اورچین افغانستان کےحوالےسےایک پیج پرہیں،شاہ محمودقریشی
  • بریکنگ :- پاکستان اورچین کےخطےمیں یکساں مقاصدہیں،وزیرخارجہ شاہ محمودقریشی
  • بریکنگ :- افغانستان میں پائیدارامن کیلئےدونوں ممالک کایکساں موقف ہے،وزیرخارجہ
  • بریکنگ :- داسومیں دشمن کےبزدلانہ دہشتگردحملےکی مذمت کرتےہیں،شاہ محمودقریشی
  • بریکنگ :- داسوحملےمیں چینی باشندوں کےجانی نقصان پردکھ ہوا،شاہ محمودقریشی
  • بریکنگ :- چین کانقصان پاکستان کانقصان ہے،وزیرخارجہ شاہ محمودقریشی
  • بریکنگ :- چین اورپاکستان ایک تھےاورایک رہیں گے،وزیرخارجہ شاہ محمودقریشی
  • بریکنگ :- چین میں حالیہ سیلاب سےجانی نقصان پرافسوس ہے،شاہ محمودقریشی
  • بریکنگ :- چین کاافغانستان سمیت خطےمیں انتہائی اہم کردارہے،شاہ محمودقریشی
  • بریکنگ :- افغانستان میں تشددکی مذمت کرتےہیں،وزیرخارجہ شاہ محمودقریشی
  • بریکنگ :- افغانستان میں پائیدارامن واستحکام کےحامی ہیں،شاہ محمودقریشی
  • بریکنگ :- افغانستان میں ایسانظام چاہتےہیں جس میں تمام افغان گروپ شامل ہوں،وزیرخارجہ
  • بریکنگ :- مقبوضہ کشمیرکےعوام کئی دہائیوں سےبھارتی مظالم کاشکارہیں،وزیرخارجہ
  • بریکنگ :- کشمیری 5اگست کےبھارتی اقدام کاخاتمہ اورحق خودارادیت چاہتےہیں،وزیرخارجہ
  • بریکنگ :- مسئلہ کشمیرپرچین کےبھرپورتعاون کےشکرگزارہیں،شاہ محمودقریشی
Coronavirus Updates

ایل ٹی سی بسیں 2سال سے بند،شہری خوار

ایل ٹی سی بسیں 2سال سے بند،شہری خوار

دنیا اخبار

حکومتی سفری سہولیات کے دعوے دھرے رہ گئے ،19 روٹس بند، 400بسیں ناکارہ ،مسافر رکشوں پر سفر پرمجبور5 سال قبل ان بسوں پر روزانہ دو لاکھ تک مسافر سفر کرتے تھے ، متبادل ٹرانسپورٹ دینے پر کام شروع:عون صادق

لاہور(شبیر حیدر ظفر)صوبائی دارالحکومت میں ایل ٹی سی کے روٹس بند ہوئے دو سال گزر گئے ، تاحال مسافروں کیلئے کوئی متبادل ٹرانسپورٹ کے انتظامات نہ کئے جا سکے ۔ غریب عوام رکشہ اور پرائیویٹ گاڑیوں پر سفر کرنے پر مجبور ہوئے ، حکومت پنجاب کے تمام سفری سہولیات کے دعوے دھرے رہ گئے ۔تفصیلات کے مطابق ایل ٹی سی کے مجموعی طور پر 19 روٹس بند ، 400 مسافر بسیں ناکارہ ہوئے دو سال گزر گئے ۔تاہم چند برس قبل تک ان روٹس پر بسوں کی تعداد400 تھی ۔ذرائع کے مطابق پانچ سال قبل ان بسوں پر روزانہ ڈیڑھ لاکھ سے دو لاکھ مسافر سفر کرتے تھے جبکہ اب تمام مسافر رکشوں اور پرائیویٹ پبلک ٹرانسپورٹ پر سفر کرنے پر مجبور ہیں۔ شہری تحسین احمدنے روزنامہ دنیاسے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ابھی تک حکومت عوام کو ریلیف دینے کی بجائے مشکلات بڑھانے والے اقدامات پر عمل کرتی ہوئی نظر آرہی ہے ۔ممبر بورڈ آف ڈائریکٹر عون صادق نے کہا کہ اب نیا بورڈ بنا ہے اور نئے سی ای او تعینات ہوئے ہیں لاہوریوں کیلئے متبادل ٹرانسپورٹ دینے کیلے کام شروع کر دیا گیا ہے اب بہت جلد شہریوں کو سفری سہولیات دینگے ۔

Advertisement
روزنامہ دنیا ایپ انسٹال کریں