مرتضیٰ بھٹو قتل، 4ملزموں کے قابلِ ضمانت وارنٹ گرفتاری

مرتضیٰ بھٹو قتل، 4ملزموں کے قابلِ ضمانت وارنٹ گرفتاری

کراچی(صباح نیوز) سندھ ہائی کورٹ نے میر مرتضیٰ بھٹو قتل کیس کے ملزموں کی بریت کے خلاف اپیلوں پر سماعت کے دوران ملزموں غلام مصطفی، گلزار احمد، ظفر احمد اور اصغر میمن کے 25 ہزار روپے کے قابلِ ضمانت وارنٹِ گرفتاری جاری کر دئیے ۔

سندھ ہائی کورٹ نے عدم پیشی پر چاروں ملزموں کے قابلِ ضمانت وارنٹ گرفتاری جاری کیے ہیں۔عدالت نے سابق پولیس افسر واجد درانی و دیگر کو حاضری سے استثنیٰ دینے سے انکار کر دیا۔دوسر ی جانب سابق پولیس چیف شاہد حیات مرحوم کے بھائی نے اپیل کی پیروی کے لیے عدالت سے رجوع کر لیا۔عدالت نے شاہد حیات مرحوم کے بھائی کی درخواست منظور کر لی۔ وکلا نے دلائل دیتے ہوئے عدالت کو بتایا کہ کیس میں نامزد شاہد حیات، شبیر احمد قائم خانی، آغا محمد جمیل اور مسعود شریف کا انتقال ہو چکا ہے ۔ عدالت نے متعلقہ ایس ایچ اوز کو ملزموں کے انتقال کی تصدیقی رپورٹ پیش کرنے کا حکم دیا۔ وکیل نے عدالت کو بتایا کہ سابق پولیس افسر شعیب سڈل کو سپریم کورٹ سے الیکشن کمیشن کا اسائنمنٹ ملا ہے اس لیے وہ پیش نہیں ہوئے ۔ مقدمے میں نامزد چیئرمین نیکٹا رائے طاہر اور دیگر ملزم عدالت میں پیش ہو گئے ۔ عدالتِ عالیہ کے جسٹس نعمت اللہ پھلپوٹو نے کہا کہ اپیلیں 2010 سے زیرِ سماعت ہیں، جنہیں جلد نمٹانا چاہتے ہیں۔ عدالت نے آئندہ سماعت پر پیش رفت رپورٹ طلب کرتے ہوئے سماعت 22 اپریل تک ملتوی کر دی۔ 

Advertisement
روزنامہ دنیا ایپ انسٹال کریں