نیوز الرٹ
  • بریکنگ :- شمالی وزیرستان کےعلاقےدتہ خیل میں دہشتگردوں کاچیک پوسٹ پرحملہ
  • بریکنگ :- فائرنگ کےتبادلےمیں 2سپاہی شہید،آئی ایس پی آر
  • بریکنگ :- شہدامیں نائیک رحمان اورلانس نائیک عارف شامل،آئی ایس پی آر
  • بریکنگ :- دہشتگردوں کی تلاش کیلئےسرچ آپریشن جاری،آئی ایس پی آر
Coronavirus Updates

ایک معروف ہدایتکار نے 'نازیبا آڈیشن' کا مطالبہ کیا:ماڈل حرا خان

تفریح

لاہور:(ویب ڈیسک)جنسی ہراسانی ایک ایسی اٹل حقیقت ہے جس سے نہ صرف خواتین ،بچے بلکہ مرد بھی متاثر ہوتے ہیں،ہراسانی کے خلاف قانون ہوتے ہوئے بھی دفاتر ،سکول ، یونیورسٹی ،ہسپتال، مارکیٹ غرض ہر جگہ خواتین کے ساتھ ہراسانی کے واقعات پیش آتے رہتے ہیں جن کے خلاف صرف چند خواتین ہی آواز اٹھاتی ہیں۔اسی طرح کا ایک اور واقعہ پیش آیا ہے، اداکارہ و ماڈل حرا خان نے بڑا انکشاف کرتے ہوئے الزام عائد کیا ہے کہ ایک معروف ہدایت کار نے ڈرامے کی کہانی اور کردار بتائے بغیر 'نازیبا آڈیشن' کا مطالبہ کیا۔

حراخان نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ انسٹاگرام پر ایک تفصیلی پیغام جاری کیا جس میں انہوں نے مبینہ طور پر ایک ہدایت کار سے کی گئی واٹس ایپ چیٹ کے سکرین شاٹس شئیر کئے۔

اداکارہ کے مطابق انہوں نے ایک ساتھی اداکارہ جن کو انڈسٹری میں 10 سال ہوگئے ہیں، ان کے کہنے پر کسی ڈائریکٹر سے رابطہ کیا، انہوں نے ہی انہیں اس ڈائریکٹر کا نمبر دیا تھا کیونکہ انہوں نے کہا تھا کہ انہوں نے ان سے اگلے پراجیکٹ میں کام کیلئے حرا سے بات کی ہے۔

ماڈل حرا خان نے اپنے پیغام میں کہا کہ جب ان کا مذکورہ ڈائریکٹر سے رابطہ ہوا تو وہ ان سے 20 منٹ تک فون پر گفتگو کرنے کے باوجود یہ سمجھ نہیں پائیں کہ وہ کیا کہنا چاہتے ہیں، کیوں کہ ڈائریکٹر ان سے نجی جگہ پر قابل اعتراض لباس و انداز میں ڈانس اور کیٹ واک کرنے کا مطالبہ کرتے رہے تھے۔ ان کے لئے ڈائریکٹر کی جانب سے ڈانس اور کیٹ واک کا مطالبہ حیران کن تھا، کیونکہ وہ ایک اچھے ڈائریکٹر تھے، انہیں ان سے ایسی کوئی توقع نہیں تھی۔

اس موقع پر اداکارہ حرا خان نے دعویٰ کیا کہ ڈائریکٹر نے انہیں یقین دلایا تھا کہ ان کے ڈانس اور کیٹ واک کے ’آڈیشن‘ کی ویڈیوز کسی کو نہیں دکھائی جائیں گی، وہ صرف پروڈیوسر اور کاسٹنگ کی ٹیم تک ہی محدود رہیں گی۔

حرا خان نے مزید لکھا کہ انہوں نے ڈائریکٹر سے فون پر بات کرنے کے بعد ثبوت کے طور پر ان سے مسیجنگ میں چیٹ کی تاکہ وہ دنیا کو کچھ ثبوت دکھا سکیں۔ اگرچہ عام طور پر ایسی باتوں پر یقین نہیں کیا جاتا اور یہ بھی سچ ہے کہ ان کے پاس کوئی ثبوت نہیں تھا کہ ڈائریکٹر نے ان سے نامناسب مطالبہ کیا ہے، اس لیے انہوں نے ہدایت کار سے مسیجنگ چیٹ کی۔

ماڈل نے ڈائریکٹر کے ساتھ مبینہ مسیجنگ میں کی گئی چیٹ کے سکرین شاٹ بھی شیئر کئے جن سے معلوم ہوتا ہے کہ ہدایت کار کی جانب سے ماڈل سے کسی نامناسب ’آڈیشن‘ کا مطالبہ کیا گیا ہے۔ اس میں حرا خان ہدایت کار سے کہتی نظر آئیں کہ انہوں نے فون پر نیم عریاں لباس میں آڈیشن کا مطالبہ کیا، جو وہ پورا کرنے کو تیار نہیں ہیں۔

اس دوران سکرین شاٹ میں پڑھا دیکھا جاسکتا ہے کہ ماڈل حرا خان ہدایت کار کو بتا رہی ہیں کہ آپ نے فون پر مختصر لباس میں نجی طور پر ’آڈیشن‘ کا مطالبہ کیا اور اب دوسری بات کر رہے ہیں۔

سکرین شاٹس میں یہ بھی پڑھا جا سکتا ہے کہ ہدایت کار اداکارہ سے نارمل “آڈیشن” کا بھی پوچھ رہے ہیں اور ساتھ ہی کہہ رہے ہیں کہ اگر ماڈل نارمل انداز میں بھی “آڈیشن” نہیں دینا چاہتیں تو پھر ان کی مرضی ہے۔

واضح رہے ماڈل واداکارہ حرا خان کی جانب سے شئیر کردہ سکرین شاٹس میں مبینہ ہدایتکار کا نمبر صاف دیکھا جاسکتا ہے، البتہ اداکارہ کی جانب سے نہ تو ڈائریکٹر کا نام بتایا گیا ہے اور نہ ان اداکارہ کا نام بتایا گیا ہے جنہوں نے ان سے رابطہ کرایا تھا۔

یاد رہے کہ پاکستان شوبز انڈسٹری میں ہراسانی کے کیس کا یہ کوئی پہلا واقعہ نہیں ہے، اس سے قبل بھی ایسے واقعات رپورٹ ہو چکے ہیں۔
 

Advertisement
روزنامہ دنیا ایپ انسٹال کریں