ذرامسکرائیے

تحریر : روزنامہ دنیا


پپو روزانہ اپنے میتھ کے ٹیچر کو فون کرتا ٹیچر کی بیوی: تمہیں کتنی دفعہ کہا ہے کہ انہوں نے سکول چھوڑ دیا ہے تم پھر بھی روزانہ فون کرتے ہو۔پپو: یہ بار بار سن کر اچھا لگتا ہے۔٭٭٭

ایک دن ملا نصیر الدین نے سوچا کہ اخروٹ توڑ کر کھائیں ۔انہوں نے اخروٹ پر پتھر مارا تو وہ اچھل کر غائب ہو گیا۔

مُلا مسکرا کر بولے: ہر چیز موت سے بھاگتی ہے۔

٭٭٭

استاد(شاگرد سے)وہ کونسی چیز ہے جسے سونگھ کر آدمی بے ہوش ہو جاتا ہے۔

شاگرد: سر میرے بڑے بھائی کے موزے۔

٭٭٭

ایک صاحب نے پہلوان سے پوچھا:تم ایک وقت میں کتنے آدمی اٹھا سکتے ہو؟

کم سے کم دس آدمی،پہلوان نے فخریہ جواب دیا۔

بس؟ تم سے اچھا تو ہمارا مرغا ہے جو صبح صبح پورے محلے کو اٹھا دیتا ہے۔

٭٭٭

آدمی(بھکاری سے) گھر گھر جا کر تمہیں بھیک مانگتے ہوئے شرم نہیں آتی؟

بھکاری:کیا کروں میرے گھر آ کر کوئی بھیک دیتا ہی نہیں۔

٭٭٭

مالک(نوکر سے) : جائو بازار سے سبزی اور پھل لے آئو اور دیکھو دیر نہ لگانا بجلی کی طرح جانا اور بجلی کی طرح آنا۔

نوکر(معصومیت سے) :لیکن بجلی تو جا کر کئی کئی گھنٹے واپس نہیں آتی۔

٭٭٭

ایک مکھی کسی گنجے کے سر پر بیٹھی تو دوسری مکھی بولی: تم نے اتنا بڑا گھر بنا لیا ہے۔

پہلی مکھی نے جواب دیا:ابھی گھر کہاں بنایا ہے،ابھی تو صرف پلاٹ خریدا ہے۔

 

روزنامہ دنیا ایپ انسٹال کریں

T-20 کرکٹ کا سنسنی خیز فارمیٹ

آئی سی سی ٹی 20 ورلڈکپ 2024ء کے آغاز میں 6 روز باقی رہ گئے،انٹرنیشنل کرکٹ کونسل یکم جون2024ء سے کیریبین اور ریاست ہائے متحدہ امریکہ میں مردوں کے ٹی 20 ورلڈ کپ کے نویں ایڈیشن کی میزبانی کر رہی ہے۔ٹی 20، کرکٹ کا سب سے دلچسپ اور سنسنی خیز فارمیٹ ہے، قارئین کیلئے ٹی 20ورلڈکپ کی مختصر تاریخ پیش خدمت ہے۔

بھیڑ اور بھیڑیا

بھیڑیا اپنے گھر میں بیٹھا آرام کر رہا تھا جب اسے باہر سے اونچی ،اونچی آوازیں آئیں۔پہلے تو وہ آنکھیں موندے لیٹا رہا لیکن جب شور مسلسل بڑھنے لگا تو اس نے سوچا باہر نکل کر دیکھناتو چاہیے کہ آخر ہو کیا رہا ہے۔گھر سے باہر جا کر دیکھا تو سامنے 2 بھیڑیں کھڑی آپس میں لڑ رہی تھیں۔

سچی توبہ

خالد بہت شرارتی بچہ تھا۔ سکول اور محلے کا ہر چھوٹا بڑا اس کی شرارتوں سے تنگ تھا۔ وہ جانوروں کو بھی تنگ کرتا رہتا ، امی ابو اسے سمجھاتے مگر خالد باز نہ آتا۔

ذرامسکرائیے

اُستاد(شاگرد سے) انڈے اور ڈنڈے میں کیا فرق ہے؟ شاگرد: ’’کوئی فرق نہیں‘‘۔ اُستاد: ’’وہ کیسے‘‘؟شاگرد: ’’دونوں ہی کھانے کی چیزیں ہیں‘‘۔٭٭٭٭

پہیلیاں

مٹی سے نکلی اک گوری سر پر لیے پتوں کی بوری جواب :مولی٭٭٭٭

ادائیگی حقوق پڑوسی ایمان کا حصہ

اسلام کی تعلیمات کا خلاصہ دو باتیں ہیں۔اللہ تعالیٰ کی اطاعت و بندگی اور اللہ تعالیٰ کے بندوں کے ساتھ حسن سلوک۔ اسی لیے جیسے شریعت میں ہمیں اللہ تعالیٰ کے حقوق ملتے ہیں، اسی طرح ایک انسان کے دوسرے انسان پر بھی حقوق رکھے گئے ہیں۔