پی ایس ایل 9، طارق کے باؤلنگ ایکشن پر انگلیاں اٹھنے لگیں،پروفیسرحفیظ دفاع میں بول اٹھے

لاہور: (ویب ڈیسک) پاکستان سپر لیگ کے نویں ایڈیشن میں کوئٹہ گلیڈی ایٹرز کے گیند باز عثمان طارق کے باؤلنگ ایکشن پر متعدد شائقین کرکٹ نے سوال اٹھادیا۔

پی ایس ایل میں کوئٹہ گلیڈی ایٹرز کی نمائندگی کرنے والے عثمان طارق کے باؤلنگ ایکشن پر کچھ فینز نے سوال اٹھایا کہ وہ باؤلنگ کروانے سے قبل تھوڑا رُک جاتے ہیں کیا یہ ایکشن لیگل ہے؟ جس پر سابق کرکٹر محمد حفیظ نے وضاحت پیش کرتے ہوئے بتایا کہ انکا باؤلنگ ایکشن آئی سی سی کے قانون 42.2 کے مطابق قانونی ہے۔

اس قانون میں بتایا گیا ہے کہ باؤلر بال کروانے سے قبل رُک سکتا ہے اگر وہ اسکے باؤلنگ ایکشن کا حصہ ہو تو لیکن اگر امپائر کو لگے کہ وہ بیٹر کو دھوکہ دینے کیلئے یہ کررہا ہے تو وہ اس گیند کو ڈیڈ بال قرار دیتا ہے، حفیظ کا مزید کہنا تھا کہ سپنر اپنا ہاتھ 15 ڈگری تک بینڈ کرسکتا ہے لیکن عثمان کا ہاتھ محض 12 ڈگری تک جاتا ہے۔

دوسری جانب عثمان طارق کو تجزیہ کاروں کی جانب سے آئی سی سی ٹی20 ورلڈکپ سے قبل ٹیم میں شامل کرنے کا مطالبہ کیا جارہا ہے، انکا کہنا ہے کہ وہ میگا ایونٹ میں بطور مسٹری سپنر پاکستان کی جیت میں اہم کردار ادا کرسکتے ہیں۔

 

Advertisement
روزنامہ دنیا ایپ انسٹال کریں