نیوز الرٹ
  • بریکنگ :- فیصل آباد:موجودہ حکمران کشمیرفروش ہیں،مولانا فضل الرحمان
  • بریکنگ :- ہم اقتدارمیں تھےتوکشمیرکا سودا نہیں ہوا،مولانا فضل الرحمان
  • بریکنگ :- ایک کروڑنوکریوں کا نعرہ لگاکرقوم کوبیوقوف بنایا گیا،مولانافضل الرحمان
  • بریکنگ :- نوکریاں دینے کے بجائے 30لاکھ ملازمین کوفارغ کردیا،فضل الرحمان
  • بریکنگ :- احتساب کا ڈرامہ اب ختم ہوچکا ہے،مولانا فضل الرحمان
  • بریکنگ :- پی ڈی ایم نے آپ کااحتساب کرکےکیفرکردارتک پہنچانا ہے،مولانافضل الرحمان
  • بریکنگ :- غریب عوام پرمہنگائی کے پہاڑتوڑدیئے ہیں،مولانا فضل الرحمان
  • بریکنگ :- روزانہ کی بنیاد پرقیمتوں میں اضافہ ہوتاہے،مولانا فضل الرحمان
  • بریکنگ :- معاشی صورتحال خراب ہوتوریاست اپناوجودبرقرارنہیں رکھ سکتی،فضل الرحمان
  • بریکنگ :- دنیامیں ایک بارپھرمعیشت کی جنگ شروع ہوچکی ہے،مولانا فضل الرحمان
  • بریکنگ :- فیصل آباد:اداروں کومضبوط دیکھنا چاہتے ہیں،مولانا فضل الرحمان
  • بریکنگ :- ہرایک کواپنے دائرےمیں رہ کرکام کرنا ہوگا،مولانا فضل الرحمان
  • بریکنگ :- فیصل آباد:ملکی معیشت کوتباہ کردیا گیا،مولانا فضل الرحمان
  • بریکنگ :- پی ڈی ایم کا پلیٹ فارم اقتدارکےحصول کیلئےنہیں بنایا گیا، فضل الرحمان
  • بریکنگ :- چین نے پاکستان میں 70ارب ڈالرکی سرمایہ کی،مولانا فضل الرحمان
  • بریکنگ :- موجودہ حکمرانوں نےچین کوبھی ناراض کردیا،مولانا فضل الرحمان
Coronavirus Updates

فیصل آباد کے علاقے منصور آباد بازار کی گرین بیلٹ پر قبضہ مافیا کا راج قائم

پاکستان

فیصل آباد: (دنیا نیوز) فیصل آباد کے علاقے منصورآباد بازار میں گرین بیلٹ انتظامی غفلت کی وجہ سے مستقل مارکیٹ میں تبدیل ہوگئی۔ گرین بیلٹ میں پودوں اور گھاس کی جگہ ریڑھیاں اور مستقل دکانیں قائم ہونے سے علاقے کی خوبصورتی بھی ماند پڑ رہی ہے۔

گزشتہ کئی سالوں سے 15 فُٹ چوڑی گرین بیلٹ پر قبضہ جماتے ہوئے بااثر افراد کی جانب سے مستقل دکانیں اور مارکیٹیں قائم کر لی گئی ہیں۔ اہل علاقہ کا کہنا ہے کہ متعلقہ اداروں کے افسران اور ملازمین قبضہ ختم کروانے کیلئے آتے تو ہیں لیکن کاروائیوں کی بجائے مبینہ طور پر نذرانے وصول کر کے بغیر کاروائی کئے ہی واپس لوٹ جاتے ہیں۔

معاملے پر ترجمان پی ایچ اے کا کہنا ہے کہ گرین بیلٹ سے مستقل بنیادوں پر قبضہ ختم کرواتے ہوئے پورے علاقے کو سرسبزوشاداب بنانے کیلئے اقدامات اٹھائے جائیں گے۔ اہل علاقہ نے کہا ہے کہ قبضے کے خاتمے کیلئے اس سے قبل بھی متعدد بار احکامات جاری ہوئے لیکن تمام احکامات ردی کی ٹوکری کی نذر ہوگئے۔
 

Advertisement
روزنامہ دنیا ایپ انسٹال کریں