پنجاب لینڈ ریکارڈز اتھارٹی نے رواں مالی سال 25 ارب کی ریکارڈ کولیکشن کی

لاہور: (دنیا نیوز) پنجاب لینڈ ریکارڈز اتھارٹی نے مالی سال 2023-2024ء کے دوران جولائی تا نومبر 25 ارب کی ریکارڈ کولیکشن کی۔

اس دوران پنجاب لینڈ ریکارڈز اتھارٹی نے 16 لاکھ افراد کو فردات اور انتقالات کی خدمات فراہم کیں، خدمات کے عوض صوبائی گورنمنٹ کو 6 ارب جبکہ پلرا کو سروس چارجز کی مد میں 1.5 ارب کی آمدن ہوئی، پلرا نے اپنے اصلاحاتی اقدامات کے تحت لوکل گورنمنٹ کے ٹیکس (TTIP) کی مد میں قریباً 2 ارب جبکہ وفاقی حکومت (FBR) کے لئے 15 ارب روپے کی کولیکشن کی۔

یہ بھی پڑھیں: آئی ایم ایف کا اجلاس آئندہ ماہ ہوگا، پاکستان کیلئے مزید قرض کی منظوری متوقع

رواں مالی سال 2023-2024 ء کے دوران جولائی تا نومبر ساڑھے چار لاکھ صارفین کو انتقالات اور 11.5 لاکھ کو فردات کی خدمات فراہم کی گئیں، انتقالات کی مد میں 60 کروڑ جبکہ فردات کی مد میں 70 کروڑ کی آمدن ہوئی۔

پنجاب لینڈ ریکارڈز اتھارٹی کی جانب سے عوامی سہولت کے پیش نظر دیگر اصلاحاتی اقدامات جیسے رجسٹری بذریعہ ای رجسٹریشن کے ذریعے صارفین کے لیے رجسٹری کا طریقہ کار مزید آسان بنایا گیا ہے۔

یہ بھی پڑھیں: ہفتہ وار مہنگائی کی شرح میں 1.16 فیصد اضافہ ہو گیا: ادارہ شماریات

شہری اراضی کے ریکارڈ کی کمپیوٹرائزیشن اور ISO سرٹیفکیشن پر بھی پیش رفت جاری ہے تاکہ شہریوں کے لیے اراضی ریکارڈ کی بہترین اور معیاری سروسز کو یقینی بنایا جا سکے۔

ڈائریکٹر جنرل پنجاب لینڈ ریکارڈز اتھارٹی سائرہ عمر کا کہنا ہے کہ پلرا میں ماڈرن ٹیکنالوجی اور جدید سافٹ ویئر کو استعمال کرتے ہوئے لینڈ ریکارڈ سروسز کا حصول خود کار طریقے سے ممکن بنایا جا رہا ہے جس کی بدولت عوام کے لئے ریکارڈ کی رسائی کے تمام مراحل کو آسان اور محفوظ بنایا جائے گا۔

Advertisement
روزنامہ دنیا ایپ انسٹال کریں