مسائل اور ان کا حل

تحریر : مفتی محمد زبیر


مہر کے بدلے خلع یا طلاق دینا سوال : میری بیوی بلاوجہ میکے چلی گئی اور مہرکے طورپر5 تولہ سوناجومیں نے دیاتھاوہ بھی ساتھ لے گئی۔ میںنے وکیل کے ذریعے یہ پیغام بھجوایاکہ آپ سونے سمیت گھرواپس آجاؤتووہ مکان تبدیل کرکے نامعلوم مقام پرچلے گئے۔ اب اس نے تنسیخ نکاح کامقدمہ دائرکر دیا ہے۔وہ یہ چاہتے ہیں کہ میں اسے طلاق دے کر فارغ کروں۔

میں یہ پوچھنا چاہتا ہوں کہ اگرمیں اسے طلاق یاخلع دوں اور اس سے5 تولہ سونے کامطالبہ کروں تو کیا میرے لئے یہ مطالبہ کرنا جائز ہے؟۔ میری طرف سے کوئی حق تلفی ہے نہ کوئی جھگڑا بلکہ اس کی طرف سے یہ نافرمانی تھی کہ8 سال تک مجھ سے الگ رہی( بمعرفت جہانزیب، رشید آباد کراچی) 

جواب :نکاح کے بعد بیوی کو مہر ادا کرنا شرعاً لازم ہے تاہم اگرواقعتاًسوال میں ذکرکی گئی تفصیل درست ہے توا یسی صورت میںآپ مہر کے عوض میںخلع یا طلاق دے سکتے ہیں۔ ایسی صورت میں آپ کیلئے خلع یاطلاق کے عوض، حق مہرمیں دیاگیاسونا واپس لینا شرعاًجا ئز ہے۔ (وفی الدرالمختار،453/3)۔

لڑکی کا اپنے لئے مناسب رشتہ 

کی دعا کرنا جائز ہے؟

سوال: میرے گھر والے میرا رشتہ خاندان میں کرناچاہتے ہیں، جس کیلئے میں راضی نہیں، میری عمر22سال ہے اورمیں کسی اور کو پسند کرتی ہوں۔وہ پنجابی ہیں ،غیرقوم کی وجہ سے میرے گھروالے کبھی راضی نہیں ہوںگے۔ میں نے پڑھاہے کہ لڑکی کے رشتہ کیلئے سب سے بہترین وصف یہ دیکھو کہ لڑکا دین کا پابند ہے یا نہیں؟۔ میں جس لڑکے سے رشتہ کرنا چاہتی ہوں وہ بااخلاق اور دین دار ہے جبکہ جس سے والدین رشتہ کرناچاہتے ہیں وہ نماز کابھی پابندنہیں ہے۔ بہت پریشان ہوں،براہ کرم میری رہنمائی فرمائیں اورپڑھنے کیلئے وظائف وغیرہ بتا دیں کہ میری پریشانی دورہو۔نیزاگرکوئی خواہش کرے کہ میرا نکاح فلاں سے ہو جائے تویہ نا جائز خواہش ہے یاجائز؟ میں یہ دعا مانگ کر گناہ تو نہیں کر رہی؟ (بمعرفت: قاری محمد ناصر)

جواب:کئی احادیث میں نبی کریمﷺ نے رشتہ کے انتخاب میں دینداری کو ترجیح دینے کی ترغیب عطا فرمائی ہے۔آپ کے والدین کو چاہئے کہ آپ کا رشتہ طے کرنے میں دینداری کوترجیح دیں اوردینداری کے لحاظ سے جو رشتہ زیادہ موزوں ہو اسی کا انتخاب کرنا چاہئے۔ نیز اگر آپ والدین کی بتائی ہوئی جگہ رشتہ نہ کرنا چاہیں تو والدین کو حکمت کے ساتھ بتا دینا چاہئے نیز کسی کا یہ خواہش کرنا کہ میرا نکاح فلاں سے ہوجائے شرعاً جائز ہے ،اس میں کوئی حرج نہیں اور مناسب اور نیک رشتہ کیلئے دعا کرنا بھی شرعاًجائز بلکہ مستحسن ہے ۔

مجنون اور پاگل شخص کی نماز جنازہ

 میں کونسی دعا پڑھی جائے گی 

سوال:جو پیدائشی پاگل ہواوراسی حالت میں بالغ ہو کر مر جائے، اس کے نمازجنازہ میں کونسی دعاپڑھی جائے؟

جواب:شرعاًایساشخص نابالغوں کے زمرے میں شمارہوتاہے اس کے جنازے میں وہی دعاپڑھی جائے گی جونابالغ بچوں کیلئے پڑھی جاتی ہے ۔( ردالمحتار655/1)

مال حرام سے حج یا عمرہ کرنا

سوال:زیدعرصہ درازتک بکر کے مال پر ناحق قابض رہا اور اس کے مال سے فائدہ اٹھاتارہا۔اب زیدحج وعمرہ پرجاناچاہتاہے، آیا زیدکاحج وعمرہ کیساہے جبکہ اس کے مال میں بکرکاکھایاہواناحق مال بھی شامل ہے، برائے مہربانی وضاحت فرما دیں(محبوب الٰہی جہلم)۔

جواب: کسی کے مال پرناحق قبضہ کرنا شرعاً ناجائز و حرام ہے، اس سے احترازلازم ہے اورجس کامال ناحق لیاہے اس کی ادائیگی فوری لازم ہے ، نیز غصب کئے ہوئے مال سے حج و عمرہ کرنا بھی جائز نہیں ۔ اگراس کے پاس اکثر رقم ذاتی( حلال ) ہوتواس سے حج وعمرہ کیا جا سکتا ہے مگر مال حرام ستعمال کرنے کا گناہ ہو گا۔ (فتاوی محمودیہ،315/10)،(وفی ردالمحتار،456/2)

سودی رقم ذاتی استعمال میں لانا 

سوال :کوئی بڑی رقم بینک میں رکھ کر منافع حاصل کرنا اور اس منافع کو اپنے اوپراور اپنی روزمرہ زندگی کے مختلف کاموں میں خرچ کرنا کیسا ہے ، رہنمائی فرما دیں کیا یہ حرام ہے؟ (میاں عظیم )

جواب :اگر سودی بینک میں رکھوایا تو منافع کے نام سے حاصل ہونے والی رقم سود ہے،جس کا لین ودین حرام ہے اور اسے اپنے کسی بھی کام میں خرچ کرنا حرام ہے ۔

عشاء کی نماز رات کوکب تک

 پڑھی جاسکتی ہے ؟

سوال:نمازعشاء رات کوکس وقت تک ہوتی ہے اورکس وقت قضاپڑھی جائے گی ؟

جواب:عشاء کی نماز آدھی رات تک بغیر کراہت کے اورآدھی رات سے صبح صادق تک کراہت کے ساتھ ادا ہوگی۔صبح صادق ہونے پرعشاء کی نمازقضاء ہوجائے گی۔ 

قرآن کریم میں ’’ح‘‘

 کو ’’خ‘‘ پڑھنا

سوال :قرآن پاک میں بعض لوگ اکثر لفظ ’’ح‘‘کو ’’خ‘‘پڑھتے ہیں کیوں؟ (عبداللہ، ہری پور)

جواب:حاء کوخاء سے بدل کرپڑھنا شرعاً غلط ہے، اس غلطی کو تجوید کی اصطلاح میں ’’لحن جلی‘‘ کہتے ہیں اورقرآن کریم اس طرح پڑھنا ناجائز ہے لہٰذاجلدازجلداس کی تصحیح کرنا لازم ہے (جمال القرآن و حاشیہ امداد السائلین، 150/2)۔

رجب کے روزے سے متعلق

 ایک حدیث کی تحقیق 

سوال:میں نے سناہے کہ حدیث شریف میں ہے کہ ’’جنت میں ایک نہرکانام رجب ہے جودودھ سے زیادہ سفیداورشہدسے زیادہ میٹھی ہے جوشخص رجب کاروزہ رکھے اللہ تعالیٰ اسے اسی نہرسے پلائے گا‘‘۔آپ سے عرض ہے کہ اس کے بارے میں بتائیں یہ حدیث شریف ہے یانہیں؟(عنایت اللہ، ٹوبہ ٹیک سنگھ)

جواب:یہ حدیث ضعیف ہے بلکہ علامہ ابن جوزیؒ اس حدیث کے بارے میںفرماتے ہیں کہ اس کی کوئی اصل نہیںاورعلامہ ذہبی ؒفرماتے ہیں یہ حدیث باطل ہے۔ (مزیدتفصیل کیلئے دیکھئے :السنن والمبتدعات،142/1)۔

 

 

روزنامہ دنیا ایپ انسٹال کریں
Advertisement

علامہ محمداقبالؒ کا فکروفلسفہ :شاعر مشرق کے فکر اور فلسفے کو عالمی شہرت ملی، مسلمانوں کو بے حد متاثر کیا

ڈاکٹر سر علامہ محمد اقبالؒ بیسویں صدی کی نابغہ روز گار شخصیت تھی۔ وہ ایک معروف شاعر، مفکر، فلسفی،مصنف، قانون دان، سیاستدان اور تحریک پاکستان کے اہم رہنما تھے۔اپنے فکر و فلسفہ اور سیاسی نظریات سے اقبالؒ نے برصغیر کے مسلمانوں کو بے حد متاثر کیا۔ ان کے فکر اور فلسفے کو عالمی شہرت ملی۔

جاوید منزل :حضرت علامہ اقبال ؒ نے ذاتی گھر کب اور کیسے بنایا؟

لاہور ایک طلسمی شہر ہے ۔اس کی کشش لوگوں کو ُدور ُدور سے کھینچ کر یہاں لےآ تی ہے۔یہاں بڑے بڑے عظیم لوگوں نے اپنا کریئر کا آغاز کیا اور اوجِ کمال کوپہنچے۔ انہی شخصیات میں حضرت علامہ اقبال ؒ بھی ہیں۔جو ایک بار لاہور آئے پھر لاہور سے جدا نہ ہوئے یہاں تک کہ ان کی آخری آرام گاہ بھی یہاں بادشاہی مسجد کے باہر بنی، جہاںکسی زمانے میں درختوں کے نیچے چارپائی ڈال کر گرمیوں میں آرام کیا کرتے تھے۔

چمگاڈر کی کہانی

یہ کہانی ایک چمگادڑ کی ہے۔ دراصل ایک مرتبہ باز، شیر کا شکار کیا ہوا گوشت لے اڑتا ہے۔ بس اسی بات پر پرند اور چرند کے درمیان جنگ شروع ہوجاتی ہے اور جنگ کے دوران چالاک چمگادڑ اس گروہ میں شامل ہوجاتی جو جیت رہا ہوتا ہے۔ آخر میں چمگادڑ کا کیا حال ہوتا ہے آئیں آپ کو بتاتے ہیں۔

عادل حکمران

پیارے بچو! ایران کا ایک منصف مزاج بادشاہ نوشیرواں گزرا ہے۔ اس نے ایک محل بنوانا چاہا۔ جس کیلئے زمین کی ضرورت تھی اور اس زمین پر ایک غریب بڑھیا کی جھونپڑی بنی ہوئی تھی۔

ذرامسکرائیے

پپو روزانہ اپنے میتھ کے ٹیچر کو فون کرتا ٹیچر کی بیوی: تمہیں کتنی دفعہ کہا ہے کہ انہوں نے سکول چھوڑ دیا ہے تم پھر بھی روزانہ فون کرتے ہو۔پپو: یہ بار بار سن کر اچھا لگتا ہے۔٭٭٭

خر بوزے

گول مٹول سے ہیں خربوزے شہد سے میٹھے ہیں خربوزے کتنے اچھے ہیں خربوزےبڑے مزے کے ہیں خربوزےبچو! پیارے ہیں خربوزے