فالسہ سے بنائیں مزیدارپکوان

تحریر : منیرا کرن


فالسہ موسم گرم کا خاص تحفہ ہے۔ یہ پھل تھوڑے عرصے کیلئے دستیاب ہوتا ہے۔ فالسے میں نشاستہ، لحمیات، فولاد، پوٹاشیم، کیرٹین، آیوڈین اور چونے کے اجزاء پائے جاتے ہیں۔

 اس میں وٹامن اے، بی اور سی بھی موجود ہیں۔ ایک پائو فالسے میں ایک روٹی کے برابر غذائیت ہوتی ہے۔ اس کا مزاج سرد اور تر ہے جنہیں  جگر کی گرمی اورآنتوں کی خشکی کی وجہ سے دائمی قبض رہتی ہو، وہ صبح کے وقت فالسے چوس چوس کر گٹھلیوں سمیت کھائیں۔ یہ چڑچڑاپن بھی دور کرتا ہے اور پیاس کی شدت میں کمی کرتا ہے۔ ذیابیطس کے مریضوں کیلئے فالسے بہت مفید ہیں۔ اسے کھانے سے جلد کی چمک اور تازگی میں اضافہ ہوتا ہے۔گرمی کے تیز بخار میں ایک چھٹانک فالسہ آدھا کلو ٹھنڈے پانی میں مدھانی سے رگڑ کر اس میں چینی ملا کر گھونٹ گھونٹ پلاتے رہنے سے بخار، بے چینی اور اضطراب کم ہوجاتا ہے۔

فالسے کا سکوائش

اجزاء: فالسہ آدھا کلو، گلاب کی پتیاں ایک پائو، چینی تین پائو، پانی بارہ گلاس۔

 ترکیب: فالسے کو پانی میں ڈال کر رات بھر کیلئے رکھ دیں۔ صبح اسے پانی ہی میں مسل لیں اور گٹھلیاں الگ کر لیں۔ اب اسے چھان لیں اور فالسے کے پانی میں گلاب کی پتیاں اور چینی ڈال کر پکائیں۔ جب وہ گاڑھا ہوجائے تو ٹھنڈا کرکے بوتلوں میں بھرلیں۔ گرمیوں میں یہ اسکوائش بہترین ثابت ہوتا ہے، فرحت بخش ہونے کے ساتھ شفا بخش بھی ہے۔ فالسے بھگوتے وقت اگر مٹی کا برتن استعمال کیا جائے تو زیادہ مناسب ہوگا۔

فالسے کا اچار

 اچار ڈالنے کیلئے کچاپکا فالسہ استعمال کیا جاتا ہے۔ یہ الگ سے بھی ڈالا جاتا ہے اور دیگر سبزیوں مثلاً لسوڑھے وغیرہ کے ساتھ ملا کر بھی تیار کیا جاسکتا ہے۔

 اجزاء:  فالسے آدھ پکے آدھا کلو، نمک حسب منشاء، مرچ حسب منشاء، کلونجی آدھا چمچ، رائی ایک چمچ، میتھرا ایک چمچ، سونف ایک چمچ، تیل حسب ضرورت۔

ترکیب: تمام مصالحے چن کر صاف کریں اور کوٹ کر یکجان کرکے فالسوں میں شامل کردیں۔ تھوڑا سا تیل ڈال دیں تاکہ مصالحہ فالسوں سے چپک جائے۔ اب اسے گلنے کیلئے چھوڑ دیں۔ دو تین دن بعد مصالحہ رچ جائے اور فالسے کچھ نرم ہوجائیں تو اس میں تیل شامل کردیں۔ اسے ایک دو دن دھوپ لگوائیں اور بوتلوں میں بھرلیں ۔ تیل کی جگہ اچار میں سرکہ بھی ڈالا جاسکتا ہے۔

فالسے کی چٹنی

آم،آلوبخارے اور املی کی چٹنی کی طرح فالسے کی چٹنی بھی بہت خوش ذائقہ ہوتی ہے۔ 

 اجزاء:فالسے آدھا کلو،چینی تین پائو، نمک حسب ذائقہ، سرکہ دوکھانے کے چمچ، پانی چھ گلاس۔ 

ترکیب: دیگچی میں پانی اور فالسے ڈال کر اسے پکنے کیلئے رکھ دیں۔ جب فالسے گلنے لگیں اور پانی آدھا رہ جائے تو اس میں چینی ڈال دیں۔ تھوڑا سا نمک شامل کریں اور گاڑھا ہونے تک پکائیں۔ اس میں سرکہ بھی ڈال دیں۔ یہ دیکھنے میںسوکھے آلوبخارے کی چٹنی جیسی لگتی ہے۔

 

 

روزنامہ دنیا ایپ انسٹال کریں

بھیڑ اور بھیڑیا

بھیڑیا اپنے گھر میں بیٹھا آرام کر رہا تھا جب اسے باہر سے اونچی ،اونچی آوازیں آئیں۔پہلے تو وہ آنکھیں موندے لیٹا رہا لیکن جب شور مسلسل بڑھنے لگا تو اس نے سوچا باہر نکل کر دیکھناتو چاہیے کہ آخر ہو کیا رہا ہے۔گھر سے باہر جا کر دیکھا تو سامنے 2 بھیڑیں کھڑی آپس میں لڑ رہی تھیں۔

سچی توبہ

خالد بہت شرارتی بچہ تھا۔ سکول اور محلے کا ہر چھوٹا بڑا اس کی شرارتوں سے تنگ تھا۔ وہ جانوروں کو بھی تنگ کرتا رہتا ، امی ابو اسے سمجھاتے مگر خالد باز نہ آتا۔

ذرامسکرائیے

اُستاد(شاگرد سے) انڈے اور ڈنڈے میں کیا فرق ہے؟ شاگرد: ’’کوئی فرق نہیں‘‘۔ اُستاد: ’’وہ کیسے‘‘؟شاگرد: ’’دونوں ہی کھانے کی چیزیں ہیں‘‘۔٭٭٭٭

پہیلیاں

مٹی سے نکلی اک گوری سر پر لیے پتوں کی بوری جواب :مولی٭٭٭٭

ادائیگی حقوق پڑوسی ایمان کا حصہ

اسلام کی تعلیمات کا خلاصہ دو باتیں ہیں۔اللہ تعالیٰ کی اطاعت و بندگی اور اللہ تعالیٰ کے بندوں کے ساتھ حسن سلوک۔ اسی لیے جیسے شریعت میں ہمیں اللہ تعالیٰ کے حقوق ملتے ہیں، اسی طرح ایک انسان کے دوسرے انسان پر بھی حقوق رکھے گئے ہیں۔

اسلام کی عالم گیرترویج میں سفراءنبی ﷺکا کردار

حضور اکرم ﷺ نے اسلام کے آفاقی پیغام کو دنیا بھر تک پہنچانے کیلئے مختلف قوموں اورمذاہب کے سرکردگان کی طرف مراسلات و مکتوبات روانہ فرمائے۔ اِن مراسلات و مکتوبات کے اندر ہر ایک کو واضح انداز میں اسلام کا پیغام پہنچاتے ہوئے لکھا کہ اسلام قبول کرنے سے انکار کرنے کا وبال نہ صرف اس لیے پڑے گا کہ تم نے اپنی ذات کیلئے انکار کر دیا بلکہ تمہارے انکار کی وجہ سے تمہاری قوم بھی ہدایت سے دور رہے گی، جس کی ضلالت و گمراہی کا وبال بھی تم پر ہی پڑے گا۔