دودھ اور گوشت کی قیمت مقرر کرنے کا حکومتی اختیار ختم کرنے کی پالیسی تیار

لاہور: (دنیا نیوز) وفاقی حکومت نے دودھ، گائے اور بکر ے کے گوشت کی قیمت مقرر کرنے کا حکومتی اختیار ختم کرنے کی پالیسی تیار کر لی۔

وفاقی حکومت کی جانب سے دودھ، گائے اور بکرے کے گوشت کی قیمت مقرر کرنے کا اختیار کسان کو دینے کا فیصلہ کیا گیا ہے، وزارت برائے غذائی تحفظ نے نرخ مقرر کرنے کا حکومتی اختیار ختم کرنے کی پالیسی تیار کر لی۔

تینوں اہم اشیائے ضروریہ کی قیمت کا تعین نجی شعبہ کو دینے سے متعلق پالیسی حکومتِ پنجاب کو بھجوا دی گئی، فیصلہ صوبائی حکومتوں کے فیصلے سے مشروط ہے۔

پالیسی متن کے مطابق دودھ، گائے اور بکرے کے گوشت کی قیمت مقرر کرنے کا اختیار نجی شعبے کو ملنے سے تینوں اشیائے ضروریہ کی قیمت کم اور پیداوار میں اضافہ ہوگا، مقابلے کے لئے سازگار فضا بھی جنم لے گی۔

متن میں مزید لکھا گیا کہ قیمت مقرر کرنے کا حکومتی اختیار نجی سرمایہ کاروں کی حوصلہ شکنی کا باعث ہے، تینوں اشیاء کی قیمت کم کرنا ملاوٹ کے رجحان کو بھی جنم دیتا ہے، مویشی پالنے والے نوے فیصد لوگ غریب ہیں، قیمتیں مقرر کرنے کا اختیار انہیں دینا پورے معاشرے کو سبسڈی فراہم کرنا ہے۔

واضح رہے کہ مرغی اور مچھلی کی قیمت مقرر نہ ہونے کی وجہ سے وہ بکرے اور گائے کے گوشت سے سستی ہیں۔

 

Advertisement
روزنامہ دنیا ایپ انسٹال کریں