نیوز الرٹ
  • بریکنگ :- پٹرولیم مصنوعات پر سیلز ٹیکس کا نوٹیفکیشن جاری
  • بریکنگ :- پٹرول پرسیلزٹیکس 2.5 فیصد ہے، نوٹیفکیشن
  • بریکنگ :- ڈیزل پرسیلزٹیکس 5.44 فیصدکیاگیاہے، نوٹیفکیشن
  • بریکنگ :- مٹی کے تیل پر سیلز ٹیکس 8.3 فیصدہے، نوٹیفکیشن
  • بریکنگ :- لائٹ ڈیزل پر سیلز ٹیکس 2.7فیصد کردیاگیا،نوٹیفکیشن
  • بریکنگ :- سیلزٹیکس نوٹیفکیشن کےتحت قیمتیں 31جنوری تک مستحکم رہیں گی
Coronavirus Updates

یوگا کی عادت اپنائیں گرتے بالوں کو بچائیں ، بالایم یوگا سے گنج پن یا ہلکے بالوں سے نجات ممکن

تحریر : شمشاد یوگی


بالوں کا گرنا، خشکی، وقت سے پہلے سفید ہو جانا اور سر کی جلد کا کسی بیماری کا شکار ہو جانا یہ ایسے مسائل ہیں جن کاسامنا تقریباً ہر دوسرے شخص کو رہتا ہے جس کیلئے خواتین ادویات کے علاوہ شیمپوز بدلتی رہتی ہیں۔ بالوں کے مسائل کی بنیادی وجوہات میں غیر متوازن ہار مونز، بدہضمی، کھانے پینے اور سونے میں بے اعتدالی، ڈپریشن، ٹینشن اور طویل مدت تک کسی دوا کو استعمال کرتے رہنے سے ہونے والا ردعمل بھی ہے۔ اگر ان وجوہ کو دور کئے بغیر صرف شیمپو بدلتے رہیں تو خاطر خواہ نتائج برآمد نہیں ہو سکتے۔

یوگا صحت کے نظام کی درستگی کیلئے بے حد معاون ثابت ہو سکتی ہے۔ چند ماہ میں ہی آپ بالوں کو پہلے سے زیادہ گھنے، چمکدار اور لمبے محسوس کریں گی۔ گنج پن یا ہلکے بالوں سے نجات مل سکتی ہے۔ یوگا کی اس خاص ورزش کو Balayam Yagaکہتے ہیں۔

طریقہ کار:اپنے ہاتھوں کی انگلیوں کو اندر کی طرف موڑ لیں اور دونوں ہاتھوں کے ناخن ایک دوسرے کے ساتھ جوڑ کر آپس میں رگڑنا شروع کر یں۔ اس ورزش کو ایک سے دومنٹ تک مسلسل کریں اور دن میں جتنی بار کر سکیں کھڑے ہو کر یا بیٹھ کر کرتی رہیں۔ مسلسل ایک ماہ تک یہ آسان سی ورزش بالوں کی صحت بحال کر سکتی ہے۔ بالوں کی افزائش بڑھ جائے گی۔

 سوال یہ پیدا ہوتا ہے کہ ہاتھوں کے رگڑنے سے بالوں کی نشوونما پر کیسے فرق پڑ سکتا ہے؟

اس کے پس پردہ بہت دلچسپ حقائق موجود ہیں، دراصل انسانی جسم کے زہریلے مادوں کا تعلق ہمارے ناخنوں سے ہے۔ عام طور پر جسم کے زہریلے مادے ناخنوں میں جمع ہوتے ہیں اور بڑھے ہوئے ناخنوں کو کاٹنے میں بھی یہی راز پنہاں ہے جس سے ہم زہریلے مادے جسم سے علیحدہ کرتے ہیں۔ لہٰذا ناخنوں کو رگڑنے سے جسم زہریلی کثافتوں سے پاک ہوتا ہے اور نتیجتاً جلد، ناخن اور بالوں کو صحت یاب ہونے میں مدد ملتی ہے۔

سرونگ آسن:بالوں کے مسائل دور کرنے کیلئے ایک دوسری ورزش آسن ہے۔ اس کا طریقہ یہ ہے کہ سیدھے لیٹ جائیں اور ٹانگوں کو کولہوں سمیت سیدھا اوپر اٹھالیں اور ہاتھوں سے کولہوں کو تھام لیں۔ اس پوزیشن میں خون کا ایک زبردست ریلا فوری طور پر سر کی طرف جائے گا اور سر کو سیراب کرکے بالوں کی نشوونما کو فی الفور بہتر بناتا ہے۔ تاہم سرونگ آسن کی مشق کسی ماہر یوگا تھراپسٹ کی نگرانی ہی میں کرنا چاہئے۔ اگر آپ صرف لیٹ کر ٹانگیں سیدھی اوپر کر لیں تو بھی یہ نتائج حاصل کر سکتے ہیں۔

ایک سے دو منٹ دو زانوں بیٹھنے سے بھی بالوں کی نشوونما کو بہتر بنایا جا سکتا ہے۔ اس کا طریقہ یہ ہے کہ یوگا میٹ پر دو زانوں ہو کر بیٹھ جائیں، کمر اور گردن کو ایک سیدھ میں کر لیں اور ایک سے دو منٹ بیٹھے رہیں۔ یہ یوگا کا واحد آسن ہے جو کھانے کے فوراً بعد بھی کیا جا سکتا ہے۔ اس آسن کا فائدہ یہ ہے کہ ٹانگیں مڑی ہونے کی وجہ سے جسم کے نچلے حصے میں خون کا دبائو کم اور اوپری حصے میں زیادہ ہو جاتا ہے اور اس طرح یہ آسن نہ صرف نظام ہضم کو بہتر بناتا ہے بلکہ سر، چہرے اور بالوں کو بھی سیراب کرتا ہے۔

احتیاطی تدابیر:یوگا کے ساتھ اپنی خوراک کا بھی خیال رکھیں، پوری نیند لیں، ٹینشن سے دور رہیں، بالوں پر بے تحاشہ کیمیکل استعمال نہ کئے جائیں، کم از کم ہفتے میں ایک بار تیل سے مساج کریں۔

شمشاد یوگی پاکستان کے مقبول یوگا ایکسپرٹ ہیں

 

روزنامہ دنیا ایپ انسٹال کریں
Advertisement

جورہی سو بےخبری رہی : سراج اورنگ آبادی : 18ویں صدی کے شاعر کا کلام آج بھی مقبول

ان کے اشعار ابہام، تکلف و بناوٹ سے عاری، اظہار میں متوازن ہیں، جو مشرقی تہزیب کا خاصہ ہےسراج انسانی کیفیات و احساسات کو خوبصورتی اور نزاکت سے بیان کرنے کی زبردست صلاحیت رکھتے ہیں

یادرفتگان : ’’کون ہے یہ گستاخ‘‘ سعادت حسن منٹو

تقسیم ہند کے ظلم و ستم کو بھی منٹو نے اپنے مخصوص اسلوب نگارش کے ذریعے قلمبند کیایہ منٹو کا کمال ہے کہ انہوں نے سماجی و معاشرتی حقیقت نگاری کو اردو افسانے کے ماتھے کا جھومر بنایا

چار ملکی کرکٹ سیریز کی پاکستانی تجویز، ایشیا کپ اور چمئینز ٹرافی کا میزبان پاکستان، بھارت پریشان

کیا مودی حکومت میں پاک بھارت کرکٹ ممکن ہے؟،آئی سی سی کے آئندہ اجلاس میں پی سی بی پاکستان ، بھارت ، آسٹریلیا اور انگلینڈ کے درمیان سیریز کی تجویز پیش کرے گا

73ویں پنجاب گیمز:نئے ٹیلنٹ کی تلاش

منتخب کھلاڑی لاہور میں ہونیوالے کھیلوں میں حصہ لیں گے،سپورٹس ڈیپارٹمنٹ اور ایسوسی ایشنز شفاف ٹرائلز کے ذریعے کھلاڑیوں اور ٹیموں کاانتخاب کرنے میں مصروف

پیاز کی کہانی ڈاکٹر بینگن کی زبانی

دورکسی جگہ ایک سر سبز اور زرخیز میدان میں مختلف سبزیوں کی حکمرانی تھی یہاں کسی انسان کا گزر نہیں تھا۔ وہ آزادی سے کھیلتی کودتی تھیں۔ سب میں بڑا اتحاد تھا صرف ایک پیاز ہی تھی جس سے سب دور رہتے تھے۔

اور اعتبار ٹوٹ گیا

اسد علی کو اللہ تعالیٰ نے دولت، جائیداد، اولاد، صحت غرض سب نعمتیں عطا کی ہوئی تھیں۔ وہ بہت خوش حال زندگی گزار رہے تھے۔ گائوں کا نمبردار وڈیرہ ہونے کے باوجود اس میں غرور و تکبر نام کی کوئی چیز نہ تھی۔